Facebook logo 81

فیس بُک کا سری لنکا میں نفرت بڑھانے میں مدد کرنے کا اعتراف

کولمبو(جے ٹی این آن لائن ٹیکنالوجی نیوز) فیس بُک اعتراف

سماجی رابطوں کی مقبول ترین ویب سائٹ فیس بُک نے اعتراف کیا ہے کہ 2018ء

میں سری لنکا میں ہونے والے پر تشدد واقعات کے دوران فیس بک کے پلیٹ فارم

نے نفرت بڑھانے میں مدد کی۔

——————————————————————————–
یہ بھی پڑھیں : عالمگیرکرونا وائرس وباء کیخلاف جنگ میں فیس بک پیش پیش
——————————————————————————–

فیس بُک کمپنی نے اس ضمن میں اپنی تحقیقات کی مختصر رپورٹ جاری کی ہے،

جس کے مطابق سری لنکا میں فیس بک کے غلط استعمال کو کمپنی نے سنجیدگی

سے نہیں لیا، جس کی وجہ سے سری لنکا میں پر تشدد واقعات کو ہوا ملی۔

کمپنی کا پلیٹ فارم کے غلط استعمال پر افسوس اور معذرت

اپنی جاری کردہ مختصر تحقیقاتی رپورٹ پر اپنا ردعمل دیتے ہوئے کمپنی کا کہنا

ہے کہ ہمارے پلیٹ فارم کے غلط استعمال پر افسوس ہے، ہم اس سے ہونے والے

اثرات کو جانتے ہیں، اوراس پر معذرت خواہ ہیں۔

مسائل کے حل کیلئے اقدامات کی بھی نشاندہی کردی گئی

فیس بک نے ان مسائل کو حل کرنے کیلئے کیےگئے اقدامات کی بھی نشاندہی کی،

جن میں مقامی زبان کی مہارت سے مواد کے ماڈریٹرز کی خدمات حاصل کرنا،

ایسی ٹیکنالوجی پر عملدرآمد جو نفرت انگیز تقریر کے آثار کا خود بخود پتہ لگاتا

ہے، اور نفرت انگیز مواد کو پھیلنے سے روکتا ہے، اور مقامی سول سوسائٹی

گروپوں کیساتھ تعلقات کو گہرا کرنے کی کوشش شامل ہے۔

2018ء میں جھوٹی ویڈیو وائرل ہوئی جو فسادات کی وجہ بنی

خیال رہے کہ 2018 میں سری لنکا میں فسادات ایک جھوٹی ویڈیو وائرل ہونے

کے بعد ہوئے تھے، اس جھوٹی ویڈیو میں ایک مسلمان کو سنہالی بدھ مردوں کے

کھانے میہں نس بندی کی دوا شامل کرنے کا اعتراف کرتے دکھا یا گیا تھا۔

——————————————————————————
دوستو : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر کریں، فالو کریں اپڈیٹ رہیں
——————————————————————————

فیس بُک اعتراف

Leave a Reply