فلسطین بحران، امریکہ سلامتی کونسل پر بھاری، واشنگٹن کو مفادات عزیز، چین

فلسطین بحران، امریکہ سلامتی کونسل پر بھاری، واشنگٹن کو مفادات عزیز، چین

Spread the love

نیویارک، بیجنگ، غزہ (جے ٹی این آن لائن انٹرنیشنل نیوز) فلسطین بحران سلامتی کونسل

فلسطین بحران پر سلامتی کونسل کا چوتھا ہنگامی اجلاس بھی بے نتیجہ ختم ہو گیا،

فرانس نے مصر اور اردن کیساتھ ملکر جنگ بندی کی نئی قرارداد سلامتی کونسل

میں جمع کرا دی۔ چین نے بھی جنگ بندی کی حمایت کرنے کیساتھ ساتھ مشرق

وسطی کے تناؤ میں امریکا کے کردار پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے امریکا نے

فلسطین سے متعلق اجلاس کو ویٹو کرکے سلامتی کونسل کو مفلوج کردیا، دوسری

طرف عالمی ادارہ اطفال نے فلسطین کے جنگ زدہ علاقے غزہ کی صورتحال پر

گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے غزہ میں جنگ بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

=-= دنیا بھر سے مزید تازہ ترین خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

عالمی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق سلامتی کونسل کا اجلاس ایک گھنٹے سے

بھی کم وقت جاری رہا اور کوئی مشترکہ اعلامیہ بھی جاری نہیں کیا گیا، جبکہ

فلسطینی مندوب نے مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا اقوام متحدہ غزہ پٹی میں

فلسطینیوں کیلئے انسانی امداد کی اپیل کرے۔

=-.-= کیا اسی بات کو امریکا اصول پر مبنی عالمی آرڈر کہتا ہے؟، بیجنگ

چین کی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں اسرائیل سے فلسطین کیساتھ

مکمل جنگ بندی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اسرائیل اور فلسطین کے

معاملے پر امریکا کا کردار مایوس کن ہے۔ امریکا نے اس اہم مسئلے پر بلائے

گئے اجلاس کو ویٹو کرکے سلامتی کونسل کو مفلوج کردیا۔ چین کی وزارت

خارجہ کے ترجمان ژاؤ لیجیان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنی ٹوئٹ

میں صارفین سے سوال کیا جب فلسطینی عوام تکلیف میں مبتلا ہیں تو انسانی حقوق

کے علمبردار امریکا اس اقدام پر حق بجانب ہے یا یہ امریکی مفادات کے لئے

اسرائیل کو اپنی خدمات پیش کرنے کا ایک بہانہ ہے؟ اور کیا اسی بات کو امریکا

اصول پر مبنی بین الاقوامی آرڈر کہتا ہے؟-

=-.-= جنگی تباہی سے غزہ خوف کے بھوت میں تبدیل ہو چکا، یونیسف

مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقا کے لیے عالمی ادارہ اطفال یونیسف کی سربراہ

جولیٹ ٹوما نے کہا ہے ان کی تنظیم غزہ کی پٹی میں متاثرین تک امداد نہیں پہنچا

سکی ہے۔ ادھر اقوام متحدہ کی ترجمان کا کہنا ہے کہ غزہ کی پٹی کی صورت حال

انتہائی خوف ناک شکل اختیار چکی ہے اور یونیسف غرب اردن کی کرم ابو سالم

کے راستے غزہ کی پٹی کو امداد فراہم نہیں کر سکی ہے۔ غزہ میں فوری اور دیر

پا امن کا قیام فوری اور ناگزیر ضرورت ہے۔ دریں اثنا ریسکیو چلڈرن کے ترجمان

نے عرب ٹی وی کو بتایا کہ غزہ کی موجودہ انسانی صورتحال ماضی کی نسبت

زیادہ پیچیدہ ہے۔ ہم اسرائیل پر جنگ بندی کے لیے دباؤ ڈال رہے ہیں۔ خیال رہے

غزہ کی پٹی پر جاری اسرائیلی فضائی، زمینی اور سمندری حملے دوسرے ہفتے

میں داخل ہو چکے ہیں۔ اسرائیلی حملوں میں بچوں اور خواتین سمیت اڑھائی سو

سے زائد فلسطینی شہید اور سیکڑوں زخمی ہو چکے ہیں۔

فلسطین بحران سلامتی کونسل

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply