فضول جنگیں امریکی معیشت کیلئے تباہ کن ، ٹرمپ

Spread the love

امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے کہاہے نئی کانگریس کیساتھ مل کرکام کرنے کیلئے تیارہوں کیونکہ کا میا بی کسی جماعت نہیں ملک کی جیت کا نام ہے۔بدھ کو بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے اسٹیٹ آ ف دی یونین سے خطاب کرتے ہوئے کہا ملک کیلئے دو پارٹیوں نہیں ایک قوم کی طرح کام کرنا،انتقامی سیاست کومستردکرنا ہوگا، امریکی قوم کی نظریں کانگریس پرہیں، ہم اس وقت لاکھوں افراد کو دیکھ رہے ہیں۔دنیا میں امریکیوں کا ہم پلہ کوئی ایک بھی نہیں، امریکا کی ترقی کا کوئی ملک مقابلہ نہیں کرسکتا، دنیا کی تیزی سے فروغ پاتی معیشت کا بھی ہم سے مقابلہ نہیں، ہمیں بیرونی دشمنوں کوشکست دینے کیلئے متحد ہونا ہوگا ، امریکی فوج دنیا کی طاقتورترین عسکری قوت ہے، امریکا ہرجگہ، ہرروزکامیابی حاصل کررہا ہے، امریکی معاشی ترقی کوفضول کی جنگیں روک سکتی ہیں، میکسیکوکے راستے امریکا داخل ہونیوالے پناہ گزین کو روکنا ہوگا، میکسیکوکی سرحد پرہرصورت باڑلگائیں گے، اس کے راستے منشیا ت فروش، جرائم پیشہ افراد امریکا آتے ہیں، جرائم پیشہ افراد کو امریکا میں داخلے سے روکنے کیلئے مل کرقانون سازی کرنا ہوگی،ہم اس قابل بھی ہوگئے ہیں کہ افغان مسئلے کا سیاسی حل تلاش کرسکیں، وہاں امن کیلئے کوشاں ہیں تاہم نہیں جانتا مذاکرات کے نتیجے میں کوئی معاہدہ ہوگا یا نہیں، امریکی افواج کی شام سے واپسی کا وقت بھی آگیا،چاہتا ہوں امریکا بڑی تعداد میں لوگ آئیں لیکن قانونی طریقے سے،وینزو یلا کے لوگ آزادی چاہتے ہیں امریکا ان کیساتھ ہے۔ ادویات کی قیمتیں اورہیلتھ کیئرکوسستا کرنا چاہتے ہیں، امسال امریکی ماہرین پھرخلا میں جائیں گے۔ شام اور افغانستان میں جاری لڑائی میں امریکہ مداخلت کے خاتمے کے منصوبوں پر کام جاری رکھیں گے، عظیم قومیں نہ ختم ہونیوالی جنگیں نہیں لڑتیں۔ افغانستان میں 7000 امریکی فوجیوں نے جانیں دیں جبکہ مشرق وسطیٰ میں دو دہائیوں سے جاری جنگ پر سا ت کھرب امریکی ڈالر خرچ ہوئے، ہماری فوج نے بے مثال شجاعت کیساتھ لڑائی کی، ہم ان کی بہادری کیلئے ان کے شکر گزار ہیں۔ان ہی کی وجہ سے ہی ہم اس طویل اور خونی مسئلہ کے سیاسی حل کی طرف بڑھے ہیں۔ ہم شام میں لڑنے والے اپنے بہادر جنگجوؤں کو بھی واپس گھر میں خوش آمدید کہیں گے،ایران ،اسرائیل کو دھمکانے کا سلسلہ بند کرے ،ایسی حکومت سے صرف نظر نہیں کریں گے جو امریکہ کیلئے موت کے نعرے لگائے اور یہودیوں کے قتلِ عام کی دھمکی دے، اس بات کو یقینی بنا نے کیلئے کہ بدعنوان ایرانی حکومت کبھی جوہری ہتھیار نہ بنا سکے میں نے تباہ کن ایرانی جوہری معاہدے سے علیحدگی اختیار کی اور ایران کیخلا ف سخت ترین پابندیاں عائد کیں۔میری انتظامیہ نے 50 لاکھ ملازمتیں تخلیق کیں اور معیشت کو ترقی ملی،تجارت کے حوالے سے چین کیساتھ ایک نئے معاہدے پر کام کر رہے ہیں جس کے تحت امریکی خسارے کو کم کیا جا سکے، ملازمتیں محفوظ رہیں اور نامناسب تجارتی طر یقے ختم کیے جائیں۔ چین پر واضح کر رہے ہیں امریکی ملازمتوں اور انٹیلیکچوئل پراپرٹی کی چوری ختم ہونی چاہیے، شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان سے 27 اور 28 فروری کو ویتنام میں ملوںگا، اگر میں امریکہ کا صدر منتخب نہ ہوا ہوتا تو ہم اس وقت شمالی کوریا کیساتھ ایک بڑی جنگ لڑ رہے ہوتے۔

Leave a Reply