غذر میں غدر، پرائیوٹ سکولز مالکان، تاجروں کی من مانیاں، سڑکیں کھنڈر

غذر میں غدر، پرائیوٹ سکولز مالکان، تاجروں کی من مانیاں، سڑکیں کھنڈر

Spread the love

غذر (جے ٹی این آن لائن گلگت بلتستان نیوز) غذر میں غدر

غذر میں بعض پرائیوٹ سکولوں کی طرف سے فیسوں میں اضافے سے سخت

پریشان والدین ہیں وہیں محکمہ ایجوکشن کے ذمہ داران صرف دفتروں تک محدود

ہو کر رہ گئے، پرائیوٹ سکولوں کے مالکان کو کوئی پوچھنے والا ہی نہیں اور وہ

من مرضی کر رہے ہیں- دوسری طرف روز روز نئے سکول کھولنے والے افراد

کے پاس این او سی ہے یا نہیں کسی کو کچھ پتہ ہی نہیں-

==-== یہ بھی پڑھیں : وادی ہنزہ میں شسپرگلیشیئر سرکنے کا عمل مزید تیز

مہنگائی کے مارے عوام کا بھی کوئی پرسان حال نہیں گوپس اورتحصیل پھنڈر میں

پرائس کنٹرول کمیٹی کا وجود ختم ہو کر رہ گیا ہے، غذر کے بالائی علاقوں میں

ایک طرف اشیاء خوردنی کی قیمتوں کو پر لگ گئے ہیں اور متعلقہ حکام صرف

دفتروں تک محدود ہیں، جبکہ دکاندار مرضی کا مالک بنے ہوئے ہیں- دوسری

طرف زائد المیاد اشیاء کی فروخت کا سلسلہ بھی جاری ہے، لوٹ مار کرنیوالوں کو

کوئی لگام دینے والا نہیں، غذر کی دونوں تحصیلوں گوپس اور پھنڈرکے درجنوں

دکانوں میں پٹرولیم مصنوعات کی فروخت پر پابندی کے باوجود دکاندار اشیاء

خوردنی کیساتھ ساتھ پڑول اور ڈیزل بھی کھلے عام فروخت کر رہے ہیں- بالائی

علاقوں میں گیس اب بھی دو سو دس روپے کلو کے حساب سے فروخت کی جا

رہی ہے-

==-== غذر میں سڑکیں بنی کھنڈرات، سیاحت کی صنعت کو شدید نقصان

غذر کی چاروں تحصیلوں کی سڑکیں کھنڈرات میں تبدیل ہو چکی ہیں، ہر حکومت

نے غذر کے عوام کو سڑکوں کی بہتری کے حوالے سے صرف تسلیاں دیتی رہی،

سابق وزیراعلی گلگت بلتستان کا گلگت سے گاہکوچ تک ایکسپریس وے تعمیر

کرنے کا اعلان بھی ہوائی ثابت ہوا، گاہکوچ سے گوپس تک کی سڑ ک آثار قدیمہ

کا منظر پیش کر رہی ہے اور عوام کو آمد ورفت کے سلسلے میں سخت مشکلات

کا سامنا ہے، گاہکوچ سے گوپس اور گوپس سے پھنڈر تک کی سڑکیں تباہی کے

دہانے پر پہنچ گئی ہیں-

=قارئین=:کاوش اچھی لگے تو شیئر، فالو کریں اپڈیٹ رہیں

دوسری طرف پھنڈر سے شندور تک پکی سڑک کی تعمیر نہ ہونے کی وجہ سے

غذر کے راستے چترال جانے اور غذر آنیوالے مسافروں کو شدید دشواریوں کا

سامنا ہے- حکمرانوں کی عدم دلچسپی کی وجہ سے سیاحت بھی بری طرح متاثر

ہو رہی ہے- پھنڈر سے شندور تک پکی سڑک منظوری کے باوجود تعمیر نہیں ہو

سکی- حالانکہ سڑک کی تعمیر سے شاہراہ قراقرم کے متبادل کے طور پر استعمال

کیا جاسکتا ہے-

غذر میں غدر

Leave a Reply