Kud Kalami by Journalist Imran Rasheed Khan

پاکستان اور افغانستان کی صورتحال کا حل عوامی نیشنل پارٹی کی نظر میں

Spread the love

عوامی نیشنل پارٹی

عوامی نیشنل پارٹی کے اسلام آباد میں منعقدہ مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس

میں موجودہ ملکی، صوبائی، علاقائی اور عالمی صورتحال پر تفصیلی غور و

غوض، بحث مباحثہ اور تبادلہ خیال کے بعد متفقہ طور پر منظور کردہ قرار

دادوں میں کئی مطالبات کئے گئے جن میں سب سے پہلے ملک بھر بالخصوص

خیبرپختونخوا اور بلوچستان میں جاری بدامنی و ٹارگٹ کلنگ کے واقعات پر

شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا گیا کہ نیشنل ایکشن پلان کے تمام

نکات پر من و عن عملدرآمد کر کے عوام کی جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنایا

جائے، دہشتگرد دوبارہ کارروائیوں میں تیزی لا رہے ہیں، حکومت کو حالات کا

ادراک ہونا چاہیے۔ خاموش رہنے سے عوام کے جان و مال کا تحفظ یقینی نہیں

بنایا جا سکتا۔ عوام کے جان و مال کو تحفظ فراہم کرنا ریاست کی آئینی ذمہ داری

ہے۔ مجلس عاملہ نے حکومتی وزراء کی جانب سے الیکشن کمیشن کو دھمکیاں

دینے اور الزامات لگانے کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کہا الیکشن کمیشن پر

اعتراضات اور بالخصوص 2018ء کے انتخابات پر تحفظات کے باوجود الیکشن

کمیشن ایک آئینی ادارہ ہے، الیکشن کمیشن کی اپنی ذمہ داریوں میں غفلت و

کوتاہی اپنی جگہ تاہم بحیثیت ادارے کا احترام سب پر لازم ہے۔ وفاقی وزراء

کیخلاف سخت سے سخت قانونی کارروائی کی جائے-

=-،-= متفقہ انتخابی اصلاحات کیلئے واحد پلیٹ فام پارلیمنٹ

قرار داد میں کہا گیا کہ عوامی نیشنل پارٹی کی مجلس عاملہ الیکٹرانک ووٹنگ

مشین کو مسترد کرتی ہے اور اسے دھاندلی کا نیا اور ماڈرن طریقہ تصور کرتی

ہے۔ 2018ء کے انتخابات میں آر ٹی ایس کا تجربہ ناکام ہو چکا ہے۔ مشینوں کے

ذریعے ووٹنگ کا عمل کروانا بظاہر کسی ایک سیاسی جماعت کیلئے لابنگ نظر

آ رہی ہے۔ انتخابی اصلاحات کیلئے اپوزیشن سمیت تمام سٹیک ہولڈرز کیساتھ بیٹھ

کر مشترکہ اصلاحات کی جائیں جس کیلئے پارلیمنٹ واحد راستہ ہے۔ کوئی بھی

آرڈینینس یا ایک خاص جماعت کی ایماء پر انتخابی اصلاحات کو عوامی نیشنل

کسی صورت تسلیم نہیں کرے گی-

=-،-= پی ایم ڈی اے خلاف قانون، ہم صحافی برادری کیساتھ

عوامی نیشنل پارٹی کی مجلس عاملہ نے حکومت کی جانب سے میڈیا کو

زنجیریں باندھنے کیلئے پاکستان میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے قانون کو بھی یکسر

مسترد کرتے ہوئے کہا اسے اظہار رائے پر مزید پابندی قرار دیا۔ قرار داد میں

کہا گیا کہ قانون سازی کے عمل کو پارلیمانی اصولوں و روایات کے مطابق بنانا

چاہیے، قوانین بننے سے پہلے قائمہ کمیٹیوں، تمام سٹیک ہولڈرز کی مشاورت

اور پارلیمان میں تفصیلی بحث کے بعد اتفاق رائے سے بننے کیلئے کوششیں

کرنی چاہیے، بند کمروں کے قوانین مخصوص مفادات کی ترجمان ہو سکتی ہیں،

کروڑوں عوام کی نہیں، اس قانون کیخلاف جدوجہد میں عوامی نیشنل پارٹی

صحافتی برادری کیساتھ کھڑی ہے۔

=-،-= ملک میں مہنگائی و بیروزگاری اغیار کا ایجنڈا

مرکزی مجلس عاملہ نے ملک میں جاری بدترین مہنگائی، پٹرولیم مصنوعات کی

قیمتوں میں بار بار اضافے، مہنگی بجلی اور دیگر اشیائے ضروریہ کی قیمتیں

بڑھنے اضافے پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت وقت کو متنبہ کیا

کہ وہ عوام کو ریلیف دینے کیلئے فوری سنجیدہ اقدامات اٹھائے، عوام کی قوت

خرید جواب دے گئی ہے، معاشی پالیسیاں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہیں، ایک

طرف وزیراعظم مہنگائی کی اجازت دے رہے ہیں تو دوسری جانب صدر مملکت

آرڈینینس پر دستخط کرکے ایسا تاثر دیے رہے ہیں کہ یہ ملک کے حکمران نہیں

بلکہ اغیار کی کٹھ پتلیاں ہیں جو آنکھیں بند کر کے عوام کو مہنگائی اور بے

روزگاری میں جکڑ کر من پسند نتائج کا حصول چاہتے ہیں لیکن حکمران یاد

رکھیں اگر عوام ان کیخلاف نکلے تو انہیں سر چھپانے کی جگہ نہیں ملے گی۔

=-،-= این ایف سی ایوارڈ میں تاخیر، تعلیم و صحت کی نجکاری نامنظور

این ایف سی ایوارڈ کے جلد از جلد اجراء کا مطالبہ کرتے ہوئے عوامی نیشنل

پارٹی کی مرکزی مجلس عاملہ نے کہا مرکز اپنے ذمے صوبوں کی واجب الادا

رقم بھی فوری طور پر ادا کرے، اٹھارہویں آئینی ترمیم پر عملدرآمد نہ کرنا

ماورائے آئین اقدام ہے جس نے ملک و قوم کو گوناگوں مسائل سے دو چار کردیا

ہے۔ عوامی نیشنل پارٹی نے تعلیمی اداروں اور نظام صحت کی نجکاری کو بھی

یکسر مسترد کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ تعلیمی نظام کو کاروبار بنانے سے گریز

کیا جائے، تعلیم بنیادی حق ہے اور اس حق سے کسی کو بھی محروم نہیں کیا جا

سکتا، ملک بھر بالخصوص خیبرپختونخوا میں تعلیمی بحران گذشتہ کئی سالوں

سے جاری ہے لیکن حکومتی اقدامات نہ ہونے کے برابر ہیں، جس سے تعلیمی

نظام رو بہ زوال ہو چکا ہے۔ اسی طرح علاج معالجے کی سہولیات فراہم کرنا

حکومت وقت اور ریاست کی ذمہ داری ہے، اس سلسلے میں عوام پر بوجھ ڈالنا

اور صحت کے نظام کو کاروبار بنانا کسی بھی صورت برداشت نہیں کیا جائیگا۔

علاج معالجے کی سہولیات اور دوائیوں کی خرید غریب عوام کی دسترس سے

باہر ہو چکی ہے۔

=-،-= افغانستان آزاد ملک، عالمی برادری اپنی ذمہ داریاں بنھائے

اے این پی کی مرکزی مجلس عاملہ نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ افغانستان ایک خود

مختار اور آزاد ریاست ہے، دنیا اور بالخصوص خطے میں ہر ریاست کو دوسری

ریاست کی خودمختاری کا احترام کرنا چاہیے تاکہ خطے اور دنیا میں امن کا قیام

یقینی ہو، افغانستان میں مستقل امن کے قیام کیلئے سنجیدہ اقدامات کی ضرورت

ہے، انسانی حقوق کی پامالی کی ہر سطح پر حوصلہ شکنی ہونی چاہیے۔ انسانی

حقوق کی تنظیمیں افغانستان میں کروڑوں عوام کے بنیادی انسانی حقوق کے

تحفظ کیلئے اپنی ذمہ داریاں نبھائیں۔ افغانستان میں تعلیمی ماحول جاری رکھنے

اور بالخصوص طالبات کی تعلیم پر خصوصی توجہ دی جائے، خوراک اور

ادویات کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے عالمی برادری اور بالخصوص پڑوسی

ممالک انسانی بنیادوں پر فوری اور ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائیں، حکومت

سازی کے عمل میں عوام کی رائے کا احترام کیا جائے تاکہ افغانستان کے ہر

حصے کے عوام حکومت سازی میں اپنے آپ کو نظر انداز نہ سمجھیں، آبادی

کے تناسب کو دیکھتے ہوئے خواتین کی نمائندگی بھی یقینی بنائی جائے۔

=-،-= شہید ملک عبید اللہ کے مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے

مجلس عاملہ نے پارٹی کی مرکزی کمیٹی کے رکن ملک عبید اللہ کاسی کے واقعہ

شہادت میں ملوث کرداروں کو تفتیش و شواہد کے نتیجے میں عبرتناک اورقرار

واقعی سزا دینے کا بھی مطالبہ کیا۔

عوامی نیشنل پارٹی ، عوامی نیشنل پارٹی ، عوامی نیشنل پارٹی

عوامی نیشنل پارٹی ، عوامی نیشنل پارٹی ، عوامی نیشنل پارٹی

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

Leave a Reply