ویکسین منگوانا چاہتے ہیں 0

عمران حکومت کا اب صرف یہی کام رہ گیا ’’اس کو ماردو، اس کو پکڑ لو‘‘،وزیراعلی سندھ

Spread the love

وزیراعلی سندھ سیدمراد علی شاہ نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی حکومت میں ملک کو ڈوبتے دیکھ رہا ہوں،کراچی سرکلر ریلوے اور سی پیک سے متعلق منصوبوں پر بات کی،چینی کمپنیوں کو بینک گارنٹی دینے کیلئے وزیراعظم اور وفاقی حکومت کو متعدد خطوط لکھے ہیں لیکن ان کے جواب نہیں دیئے جارہے، اس سے اندازہ لگا لیں کہ ان کی کراچی میں کتنی دلچسپی ہے، ہفتہ بھر پہلے بھی وزیراعظم کو کے سی آر سے متعلق خط لکھا ہے، میں اس لیے خط لکھتا رہتا ہوں کہ شاید کبھی تو اثر ہوگا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو سندھ اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔وزیراعلیٰ سندھ نے الزام لگایا کہ ان کا نام چین جانے کی وجہ سے ای سی ایل میں ڈالا گیا ہے اور وفاقی حکومت کو میرے دورہ چین پر اعتراض تھا۔ انہوں نے کہا کہ کراچی سرکلر ریلوے منصوبہ وفاق کے تعاون کے بغیر بننا ممکن نہیں ہے، ریلوے سے الگ ہماری لڑائی چل رہی ہے، ہمارے پاس پیسے نہیں ہیں لیکن ہم قرض لیکر اس منصوبے کیلئے 15فیصد پیسے دینے کیلئے تیار ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہم نے مطالبہ کیا تھا لاہور کی اورنج ٹرین طرز پر کراچی سرکلر ریلوے پیکیج دیا جائے، چین نے ہماری محنت کے باعث بلوچستان اور پختونخوامیں ماس ٹرانزٹ منظور کیا۔انہوں نے کہا کہ چین نے ہماری محنت کے باعث بلوچستان اور پختونخواہ میں ماس ٹرانزٹ منظور کیا، 4 خطوط لکھنے کے بعد 18 جنوری 2018 کو وزارت اطلاعات سے خط نکلتا ہے، ن لیگ دور میں دو چار خط لکھنے کے بعد جواب آتا تھا۔وزیر اعلی نے کہاکہ 3 اکتوبر کو میں نے وزیر اعظم عمران خان کو خط لکھا تھا، آج 22 جنوری ہے کسی خط کا جواب نہیں آیا۔ سازشوں کے باوجود میرا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ سے نکل گیا۔انہوں نے کہا کہ گیس بحران پر وزیر اعظم کو سی سی آئی اجلاس کے لیے لکھا، اس صوبے کے لوگوں کو ہم حساب دینے کے لیے تیار ہیں، سندھ حکومت وفاق سے کام کروائے گی۔
وزیراعلی سندھ

Leave a Reply