عرفان صدیقی ضمانت پر رہا، دہشتگردوں جیسا سلوک کیا گیا، سینئر صحافی

Spread the love

اسلام آباد،راولپنڈی (جے ٹی این آن لائن سٹاف رپورٹرز)

سابق وزیراعظم نواز شریف کے معاون خصوصی عرفان صدیقی کی اسلام آباد

کی مقامی عدالت نے ضمانت منظور کرنے کے بعد انہیں اڈیالہ جیل سے رہا کردیا

گیا۔ تفصیلات کے مطابق اسسٹنٹ کمشنر مہرین بلوچ نے ہفتہ کو عرفان صدیقی کا

14 روزہ عدالتی ریمانڈ منظور کیا تھا اور انہوں نے ہی اتوار کو ان کی ضمانت

منظور کرتے ہوئے 30 ہزار روپے کے مچلکے جمع کروانے کی ہدایت کی۔

یہ بھی پڑھیں: قائد مسلم لیگ (ن) نواز شریف کی ضمانت میں توسیع

عدالت کی جانب سے ضمانت کی منظوری کے بعد عرفان صدیقی کی وکلا ٹیم

رہائی کی روبکار لے کر اڈیالہ جیل پہنچی، پھر قانونی کارروائی پوری ہونے کے

بعد عرفان صدیقی کو اڈیالہ جیل سے رہا کر دیا گیا۔ رہائی کے بعد میڈیا سے بات

چیت کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نواز شریف کے معاون خصوصی اور سینئر

کالم نگار عرفان صدیقی نے کہا انہیں گھسیٹ کر گاڑی میں ڈال کر دہشت گردوں

جیسا سلوک کیا گیا۔ جس جمہوری حکومت میں انصاف ہو اور جمہوری اقدار کی

پاسداری ہو وہاں یہ عمل نہیں ہوسکتا۔ انکا کہنا تھا جمعہ کی رات کو گھر کی

گھنٹی بجی تو وہ اس وقت بھی کچھ لکھ رہے تھے، جب باہر آئے تو درجنوں

پولیس اہلکاروں نے انہیں گھسیٹ کر گاڑی میں ڈالا لیا اور دہشت گردوں جیسا

سلوک کیا گیا۔ وہ اپنے ساتھ پیش آنے والے اس واقعہ پر بھی ضرور لکھیں گے۔

مزید پڑھیں: سعد رفیق کیخلاف وعدہ معاف گواہ ملزم قیصر امین ضمانت پر رہا

جیل کے اندر کی کیفیت سنا نہیں سکتا، بیان کرنا تھوڑا مشکل ہے، توہین آمیز

رویہ تھا۔ میں ایک پاکستانی ہوں یہ آئین مجھے آزادی اظہار رائے دیتا ہے۔ میں

نے جج صاحبہ سے بھی کہا کتنے کیسز آئے ہیں کہ کرایہ نامہ جمع نہیں کرایا،

یہ اس پاکستان کی بڑی ہی افسوس ناک کہانی ہے۔ بعد ازاں سینئر کالم نگار کا

گھر پہنچنے پر فیملی کی جانب سے شاندار استقبال کیا گیا اس موقع پر بچے اور

بوڑھے آبدیدہ ہوگئے جبکہ ان کے بیٹے والد کے ساتھ لپٹ گئے۔

عرفان صدیقی معاملہ، سپیکر اسد قیصر نے آئی جی اسلام آباد کو طلب کر لیا

Speaker Pakistan Parliament  Asad Qaiser Khan talking with interior minister ijaz shah .

دوسری جانب سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے آئی جی اسلام آباد کو آج

رپورٹ سمیت پارلیمنٹ طلب کر لیا ہے۔ سپیکر نے وفاقی وزیر داخلہ اعجاز

شاہ سے ٹیلیفون پر رابطہ کیا اور عرفان صدیقی کی اسلام آباد پولیس کی جانب

سے گرفتاری اور ہتھکڑیاں لگانے پر تشویش کا اظہار کیا ۔ اسد قیصر نے کہا

کہ عرفان صدیقی ایک بزرگ استاد اور سینئر صحافی ہیں۔ ہمیں قلم کے تقدس

جانیئے: نہیں معلوم شیخ رشید کا کیا مسئلہ، مگر ڈکٹیشن نہیں لونگا، اسد قیصر

اور آزادی اظہار رائے کا احترام کرنا ہوگا۔ قانون کرایہ داری کی خلاف ورزی

کے الزام میں گرفتار کرکے ہتھکڑی لگانا قابل مذمت ہے۔ وفاقی وزیر داخلہ سے

ٹیلیفونک گفتگو کرتے ہوئے انکا مزید کہنا تھا کسی سطح پر بھی کسی کیساتھ

ناانصافی برداشت نہیں کر سکتا۔ قوموں کی ترقی و عروج کے حوالے سے علم

بنیادی حیثیت رکھتا ہے۔ مذہب معاشروں میں استاد کا احترام لازم ہوتا ہے، معاملے

کی مکمل تحقیقات ہونی چاہیے۔

Leave a Reply