پاکستان آنے پر پابندی

عدلیہ شہبازشریف کے کیس روزانہ کی بنیاد پر سنے، فواد چودھری

Spread the love

عدلیہ شہبازشریف کیس

اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری نے کہا ہے کہ

عدلیہ سے اپیل ہے پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کے کیسز کو یومیہ بنیادوں پر سنا

جائے تاکہ دودھ کا دودھ اورپانی کا پانی ہوجائے۔اسلام آباد میں وزیر مملکت برائے اطلاعات و

نشریات فرخ حبیب کے ساتھ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چودھری کا کہنا تھا کہ شہباز

شریف کی طرح ڈیڑھ گھنٹہ تقریرنہیں کرنا چاہتا،پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر کے خلاف پاکستان

میں دوکیس اس وقت چل رہے ہیں،شہباز شریف کیس میں 6 ماہ تک اس عدالت میں جج ہی نہیں تھا،

ان کیخلاف مقدمہ روزانہ کی بنیاد پرنہیں چل رہا، ہمارا مطالبہ ہے کہ شہبازشریف کیس کوروزانہ

کی بنیاد پرسنا جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ العربیہ، رمضان شوگر ملز کو منی لانڈرنگ نیٹ ورک چلا رہا

تھا، العربیہ، رمضان شوگر ملز کے 57 اکاؤنٹس میں مختلف لوگوں نے پیسے جمع کرائے، العربیہ مل

کے چپڑاسی ملک مقصود کے اکاؤنٹ میں پیسے آئے، محمد وارث کے اکاؤنٹ میں 2.5 ارب روپے

منتقل کیے گئے۔ محمد وارث مشتاق چینی والے کا ڈرائیورہے۔اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے

فواد چودھری کا کہنا تھا کہ محمد اسلم چپڑاسی کے اکاؤنٹ میں بھی پیسے آئے۔ مشتاق چینی والے

کے اکاؤنٹ میں بھی اربوں روپے آئے۔ یہ لسٹ دیکھ کرآپ حیران ہوجائیں گے اس ملک کے یہ

حالات اورمہنگائی کیوں ہے، اس ملک کواس طرح لوٹا گیا۔ رمضان شوگر مل کے کلرک غلام شبیر

کے اکاؤنٹ میں 1.57 ارب آیا، قیصرعباس کے اکاؤنٹ ایک اعشاریہ 37ارب آیا، گلزارخان انتقال کر

گئے ہیں اس کے اکاؤنٹ میں 1.28 ارب کے اکاؤنٹ میں آیا۔وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ

شہبازشریف نے کہا اگر سلیمان شہباز بری ہو گئے تو وہ بھی بری ہو جائیں گے، شہباز سے پاکستان

میں ٹی ٹیزکا پوچھا جائے تو کہتے ہیں سلمان شہبازسے پوچھیں، فیک نیوز پر شہزاد اکبر کیس فائل

کر رہے ہیں، لوٹا گیا پیسہ عمران خان کا ذاتی نہیں قوم کا پیسہ ہے، اعلیٰ عدلیہ سے اپیل ہے

شہبازشریف کے خلاف مقدمات کوروزانہ کی بنیاد پرچلایا جائے تاکہ دودھ کا دودھ اورپانی کا پانی

ہوجائے، مریم نواز کیس میں کبھی وکیل کی کمرمیں درد ہو جاتا ہے، اس طرح کے فراڈ عدالتوں کے

ساتھ کیے جا رہے ہیں۔ لیگی نائب صدر کو ہم باہر نہیں جانے دے رہے ہیں اگر اجازت مل جائے تو یہ

فوری طور پر باہر چلے جائیں۔ نوازشریف اور سلیمان شہباز کو پاکستان واپس آنا چاہیے۔ان کا کہنا تھا

کہ ڈی جی نیب شہزاد سلیم ایک کورس کے لیے برطانیہ گئے، برطانوی حکومت کی درخواست پر

ڈی جی نیب شہزاد سلیم برطانیہ گئے، شہزادسلیم کے ساتھ دیگرممالک کے لوگ بھی برطانیہ گئے

تھے۔فواد چودھری کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان، نوازشریف، بلاول بھٹو ساری لوکل جماعتیں

ہیں، پی ٹی آئی کے علاوہ وفاق کی کوئی پارٹی نہیں، الیکشن اصلاحات، اپوزیشن کے ساتھ گفتگو

جاری ہے، ایک سال سے اپوزیشن کے ساتھ بات چیت کرنے میں لگے ہیں، سمجھتے ہیں انتخابی

اصلاحات والا معاملہ زیادہ لمبا نہیں چلنا چاہیے۔

عدلیہ شہبازشریف کیس

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply