299

عبدا لعلیم خان 9 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

Spread the love

احتساب عدالت نے پی ٹی آئی کے رہنما اورسابق سینئرصوبائی وزیرعبدا لعلیم خان کو 9 روزہ جسمانی ریمانڈ

پر نیب کی تحویل میں دے دیا۔نیب حکام نے آف شور کمپنی اور آمدنی سے زائد اثاثوں کے الزام میں گرفتار

علیم خان کو سخت سکیورٹی میں احتساب عدالت میں پیش کیا۔ نیب حکام انہیں لے کرعدالت پہنچے توعدالت

کے باہر پی ٹی آئی کارکنان کی بڑی تعداد موجود تھی، دورانِ سماعت نیب پراسیکیورٹر وارث جنجوعہ نے

اپنے دلائل میں علیم خان کا 2002ءمیں 190 لاکھ روپے کا پرائنزبانڈ نکلا، 10کروڑ 90 لاکھ روپے علیم خان

کے والد کو باہرسے رقم آئی مگر بھیجنے والا کا پتہ نہیں کون ہے، اے اینڈ اے سے والدہ کو 198 ملین روپے

2012ء میں آمدنی ہوئی علیم خان باہر سے آئی آمدنی تسلیم نہیں کرتے لیکن پرائزبانڈ تسلیم کرتے ہیں۔ علیم خان

نے 2018ء میں 871 ملین روپے کے اثاثے ظاہر کئے،وہ آمدنی سے مطابقت نہیں رکھتے جبکہ ملزم اثاثوں

اور آمدنی سے متعلق نیب کومطمئن نہیں کر سکے۔علیم خان کے وکیل نے موقف اپنایا ان کے موکل کے تمام

اثاثے قانونی ہیں جس کی دستاویزات ہم نے خود دیں، نیب نے آج تک آف شور اثاثوں سے متعلق ایک ثبوت بھی

پیش نہیں کیا، نیب جن دستاویزات کی بات کر رہی ہے وہ ہم نے خود فراہم کیں،عدالت نے نیب پراسیکیوٹر اور

علیم خان کے وکیل کے دلائل سننے کے بعد نیب کی جانب سے ملزم کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا منظور کر

لی اورانہیں 15 فروری کو دوبارہ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

Leave a Reply