Episode 21 agent 909

عالم ہو یا جوگی، موڈ کے بغیر مرد نامکمل، عورت بس چیلنج

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

عالم ہو یا جوگی

دونوں کے درمیان تھوڑا ہی فاصلہ رہ گیا تھا، رابعہ نے اچانک بیگ زمین پر رکھے اور بازو پھیلائے اس کے قریب آنے لگی، 909 اس اچانک انداز محبت پر حیران رہ گیا، رابعہ اس کے بہت قریب آ چکی تھی، لیکن گلے لگنے کی بجائے بازﺅں کے نیچے سے ہوتی ہوئی، آگے کوگزر گئی اور بولی ”سامان اٹھا کر گاڑی میں رکھو۔۔۔ فول“

یہ بھی پڑھیں : افغان سہولت کار، “را” ایجنٹ سشما، امریکہ کی طفل تسلی، پاکستان کا صبر

رابعہ کے بازو کھولنے کا وہ انداز کہ اس دوران 909 نے یہ طے کر لیا تھا، یہی اس کی پہلی اور آخری محبت ہے، کوئی اس سے اتنا پیار کرتا ہے؟، مگرجیسے ہی رابعہ نے اسے ڈاچ کیا، وہ اپنی اصل زندگی میں لوٹ آیا، یہ چند لمحوں کا سفر تھا،
اگر رابعہ گلے لگ جاتی تو شاید 909 واقعی اس کیساتھ تمام زندگی گزارنے کا فیصلہ کر لیتا، وہ انہی سوچوں میں گم کھڑا تھا کہ رابعہ نے گاڑی کا ہارن بجایا اور بولی، ” ناراض مت ہو، اب تمہیں خالص جھپی کی ضرورت ہے، بہکی اور شرابی جھپیاں جلد چھن جاتی ہیں“۔

پرانی یادیں اس کے دماغ میں عود آئیں

rabia and 909

909 اس کی گہری بات سن کر چونک اٹھا، بیگ اٹھا کر گاڑی میں رکھے اور ڈرائیونگ سیٹ پر آ کربیٹھ گیا، خاموشی سے گاڑی سٹارٹ کی اور لندن کی جانب روانہ ہو گیا۔ رابعہ مسلسل اسے گھور رہی تھی، وہ مسلسل سامنے دیکھتا ہوا گاڑی چلا رہا تھا اور سوچ رہا تھا کہ اس لڑکی کی قسمت میں محبت کیوں نہیں لکھی گئی؟ اب شاید چاہتے ہوئے بھی وہ رابعہ کے اتنے قریب نہ آ سکے، اسے واقعی رابعہ سے چند لمحوں کی محبت ہوئی تھی، وہ دل میں رابعہ کو کوس رہا تھا، کیوں محبت اس کی تقدیر میں نہیں-

مزید پڑھیں : سب فراڈ، صرف اولاد اپنی، رابعہ کا نیا انداز

وہ اسے جلدی چھوڑدینا چاہتا تھا، ہر لمحہ اس کا دکھ بڑھ رہا تھا، یہاں تک کہ اس کے گلے میں ٹیس پڑنے لگی، ایسا بچپن میں ہوتا تھا، اسے اچانک یاد آیا، جب وہ چھوٹا تھا، معصوم تھا اورکسی دکھ یا صدمے سے رونانہیں چاہتا تھا کہ اس طرح بڑوں کے سامنے بے عزتی ہو گی، اس لمحے گلے میں ایسی ٹیس اٹھتی تھی-
کتنی پرانی یادیں اس کے دماغ میں عود آئی تھیں،
لیکن آج اسے خود پر غصہ آ رہا تھا، آخر کیوں بغیر کسی وجہ کے اسے رابعہ سے محبت ہو گئی، اور وہ بھی لمحہ بھر کی، اگر رابعہ گلے لگ جاتی، تو شاید اس کی زندگی کے تمام فیصلے ہی بدل جاتے، لیکن ایسا کچھ نہ ہوا، تقدیرمیں کچھ اور ہی لکھا تھا۔ رابعہ بھی تھک ہار کر گردن نیچے کئے کچھ سوچتی جا رہی تھی، اس نے 909 کو گھورنا بھی چھوڑ دیا۔

21episode agent 909

ڈیڑھ گھنٹہ مسلسل خاموشی سے 909 نے ڈرائیونگ کی، اچانک ایک جانب ریستوران دکھائی دینا شروع ہو گئے، یہاں مسافر کوچز کھڑی تھیں، تھکن سے چُور لوگ گھاس پر تیز ہوا اور دھوپ کا لطف اٹھا رہے تھے، 909 کو منظر بہت پسند آیا، اس نے گاڑی پارکنگ میں کھڑی کی اور باہر نکل آیا۔ تھوڑی دور ٹیبل اورکرسیاں ترتیب سے لگی تھیں، 909 ایک ٹیبل پر جا کر بیٹھ گیا، اس نے دور سے رابعہ کو اپنی جانب آتے دیکھا ان دیکھا کیا،
کرسی کیساتھ ٹیک لگائی اور آنکھیں بند کر لیں، رابعہ اس کے قریب آئی، اس کا بازو کھینچتے ہوئے اپنے ساتھ چند گز کے فاصلے پر واقع سرسبز ٹیلے پر لے گئی، 909 کو گھاس پر دھکا دیا، پھر خود بھی ساتھ لیٹ گئی اور اپنی آنکھوں پر رومال رکھ لیا، 909 آنکھیں پھاڑے سب کچھ ہوتا دیکھ رہا تھا۔ عالم ہو یا جوگی

موڈ کے بغیر مرد نامکمل، عورت بس چیلنج

رابعہ نے جان بوجھ کر ہوا کو اس طرح سے راہ فراہم کی کہ اس نے اس کے بلاﺅز کو اڑا دیا، رابعہ کا پیٹ عیاں ہونے لگا، وہ بڑبڑائی ” کیا مزیدار دھوپ ہے، پھر اس نے فوراً ہی اپنی شرٹ نیچے کر لی، اور 909 کی طرف کروٹ لیتے ہوئے بولی-
”میں لڑکی ہوں، مرد کے ہر نئے انداز کو نیا چیلنج سمجھ کر مقابلہ کرتی ہوں،
موڈ، موڈ اور موڈ، یہ ہے انسان کی ٹریجڈی، جب مرضی خوش، جب مرضی ناراض، وجہ دوسرے ہوتے ہیں اور موڈ اپنا خراب ہوا، میں تھک گئی ہوں اس چیلنج سے لڑتے لڑتے، کہاں خاموش رہنا، کہاں بولنا ہے، کونسی بات کب کہنا مناسب ہے، یہ سب اگلے کے موڈ پر منحصر ہے-
وہ خواہ کوئی عالم ہو یا پھر جوگی، ان کے بھی موڈ ہوتے ہیں۔ تم بتاﺅ کیا موڈ کے بغیر مرد نامکمل ہے؟ “ 909 کو اس کے بات کرنے کے انداز پر رشک آیا اس نے رابعہ سے پوچھا ” تمہارا مطلب ہے عورت کا موڈ نہیں ہوتا “ رابعہ بڑے اعتماد کےساتھ بولی ” بالکل، عورت کا موڈ نہیں ہوتا، وہ بس چیلنج ہے۔ “ 909 کو یوں محسوس ہوا کہ وہ محبت کے جال میں پھس گیا ہے، یہ لڑکی اسے کہاں اٹھا کر مارے گی، وہ اس کےلئے پھرتیار ہو گیا۔

وہ تھوڑا آگے بڑھی اور 909 کے ساتھ لپٹ گئی

21episode agent 909

” مجھ سے شادی کرو گی “ 909 بے اختیار بول اٹھا۔ رابعہ ایک لمحہ توقف کے بعد بولی ” تمہارا دعوت نامہ مل گیا، اسے اچھی طرح پڑھوں گی پھر جواب دوں گی۔ “ 909 ہنس پڑا، وہ تھوڑا آگے بڑھی اور 909 کےساتھ لپٹ گئی-
دونوں 10 منٹ سے زائد اس صورتحال سے دوچار رہے۔ 909 نے آہستگی سے کہا ” بچے ہنس رہے ہیں “ رابعہ آہستہ سے الگ ہو گئی۔ پھر اٹھ گئی اور کہا ” مجھے بھوک لگی ہے، آﺅ کچھ کھانے چلیں “ ۔ دونوں نیچے فلور پر ایک ٹیبل پر جا بیٹھے-
ویجی ٹیرینز کیلئے صرف پیسٹیزدستیاب تھیں یا پھر ” فش فلے “ 909 نے 6 فش فلے برگراور 6 عدد پیاز والی پیسٹی خریدیں، اور لا کر ٹیبل پر رکھ دیں۔ وہ رابعہ کیلئے کولڈ ڈرنک اور اپنے لئے دودھ لے کر آیا تھا۔ رابعہ جانتی تھی کہ اسے دودھ بہت پسند ہے، اس قدر راشن دیکھ کر وہ ہنس پڑی اور کہا ” اتنا سب کچھ کس کےلئے؟ “

21episode agent 909

909 مسکرا کر رہ گیا اور بولا ” جو کچھ کھانا ہے اپنا الگ کر لو، مجھے شدید بھوک لگی ہے، شاید اور بھی آرڈر کرنا پڑے گا“ رابعہ بے اختیار بولی ”او مائی گاڈ، کیا ہو گیا ہے آج تمہیں“؟ پھر دونوں کھانا شروع ہو گئے، 909 تیزی سے پانچوں برگر ہڑپ کر گیا-
پھر آہستہ آہستہ پیاز والی پیسٹی کھانا شروع کر دی، یہ وہاں کی معروف ”گریگز“ کی پیاز والی پیسٹی تھی جس کی پورے برطانیہ میں مانگ تھی اور یہ تازہ تازہ بنا کر بیچی جاتی تھی۔

گاڑی کا دروازہ ڈھال بن کر سب کچھ چھپاتا رہا

رابعہ 909 کوغور سے دیکھتی جا رہی تھی اس کا کھانا کب کا ختم ہو چکا تھا، وہ خاصی محظوظ ہو رہی تھی۔ 909 نے سب کچھ ہڑپ کرنے کے بعد ایک ہی گھونٹ میں دودھ کی بوتل اندر چڑھائی اور سپلف نکال کر سلگا لیا۔
رابعہ یک دم تڑپ اٹھی اور چلائی ”یہ نہیں چلے گا۔“ 909 نے سنی ان سنی کر دی اور جلدی سے ٹیلے پر چڑھ گیا۔ اب کم لوگ اطراف میں موجود تھے۔ زیادہ تر 45 منٹ وقفہ گزارکر اپنی اپنی منزل کو چل پڑے تھے۔ 909 کو ٹیلے پرجاتا دیکھ کر رابعہ بھی اس کے پیچھے چلی آئی، دونوں ایک درخت کی اوٹ میں جا کر بیٹھ گئے اور سپلف شیئر کرنے لگے-
بیڑی جیسے ہی ختم ہوئی تو 909 نے دوسری سلگا لی، اسے بھی دونوں نے مل کر ختم کیا، اب رابعہ نے اٹھنے سے ہی انکار کر دیا، اور 909 کو درخواست کی، اسے اٹھا کر گاڑی میں لے جائے۔ 909 نے رابعہ کو کندھے پر اٹھایا اور گھماتا ہوا گاڑی میں لے جاکر بٹھا دیا،
وہ اس دوران ہنستی رہی اور اس کیساتھ چھیڑ خانی کرتی رہی۔ گاڑی کی سیٹ پر ڈھیر ہوتے ہی اس نے 909 کو خود پر گرا لیا، پھر دونوں کافی دیر تک خاموش رہے، گاڑی کا دروازہ کھلا تھا، جو دونوں کیلئے ڈھال بن گیا اور سب کچھ چھپاتا رہا۔

مشکیزہ، لوٹا، موٹی، بھینس، گائے، ناراض مرغی کے القابات

پانچ گھنٹے بعد وہ لندن کی حدود میں داخل ہو چکے تھے، رابعہ نے خود پر وہ لبادہ اوڑھ لیا جواس کی ذات کا حصہ بن چکا تھا، اس نے خود پر ایک دو کپڑے چڑھائے، حجاب لیا اور کپڑے کی ڈھیری بن کر بیٹھ گئی۔
909 نے اسے مشکیزہ، لوٹا، موٹی، بھینس، گائے، ناراض مرغی کے القابات سے نوازا۔ رابعہ کو گھر پہنچنے میں ابھی مزید پندرہ منٹ درکار تھے اس نے ٹشو پیپر سے آنکھوں کو صاف کرنا شروع کر دیا۔ وہ رو نہیں بلکہ سسک رہی تھی۔ 909 نے اسے گھر سے پہلے ایک سٹیشن پر اتارا، اس نے پلٹ کر بھی نہ دیکھا، اور سڑک پار کرتے ہوئے سامنے ٹیوب سٹیشن میں جا گھسی- عالم ہو یا جوگی
وہ کیوں اس طرح گھوم کر جا رہی ہے، 909 جانتا تھا، اسے اپنی عزت پیاری تھی۔ 909 نے ایک ٹھنڈی آہ بھری جیسے اس کو آزادی مل گئی ہو، یہ مجھے قبول نہیں کرے گی، کیونکہ مجھے ایسی خوشی یا راحت مل ہی نہیں سکتی، ایک یقین اس کے اندر امڈ آیا، اور وہ بے پرواہ ہو کر اپنے گھر کو چل پڑا۔ اسے ایبی بینک کے فراڈیوں کو پکڑنا تھا۔ یہ ضروری تھا۔ ( ۔۔ جاری ۔۔ )

Agent 909 Dr,I.S introduction

عالم ہو یا جوگی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply