عالمی برادری کشمیر کی صورتحال کا نوٹس، برطانوی ویورپی یونین سیاستدان

Spread the love

لندن،برسلز( جے ٹی این آن لائن مانیٹرنگ ڈیسک) عالمی برادری

یورپی یونین اور برطانیہ کے سیاستدانوں نے بھی مظلوم کشمیریوں حق میں آواز

بلند کردی اور کہا کہ بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت

ختم کیے جانے پر انہیں شدید تشویش ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق یورپی

پارلیمنٹ کی ممبران ارونا ون ویز، شفیق محمد، فِل بینن، جوڈتھ بینٹنگ، کرس

ڈیوس، انتھونی ہوک، مارٹن ہاروڈ، لوسی نتھاسنگا اور شیلا رچی نے یورپی

پارلیمنٹ حکام کو ایک خط لکھا ہے جس میں مطالبہ کیا ہے کہ بھارت نے مقبوضہ

کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کیے جانے کے بعد کشمیریوں کو محصور کر

رکھا ہے۔ ممبران کا کہنا تھا کہ آزاد کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر بھی کلسٹر

بمباری کی اطلاعات سامنے آئی ہیں یہ بہت خوفناک اور جنیوا کنونشن کی خلاف
بھی ورزی ہے، بگڑتی صورتحال پر ہم سب کو تشویش ہے،

عالمی برادری اس صورتحال کا فوری نوٹس لے-

پڑھیں: تنازع کشمیر، چین پاکستان کا ہمنوا، موقف کی تائید و حمایت

مقبوضہ وادی میں عالمی اخبارات کی رپورٹس کے مطابق ٹیلیفون، انٹر نیٹ، کیبل

سمیت دیگر ضروریات زندگی کی سہولتیں موجود نہیں۔ ان کا کہنا تھا یورپی یونین

انسانیت پر یقین رکھتی ہے، اسی لیے ہم چاہتے ہیں مقبوضہ کشمیر کے عوام کے

لیے آواز بلند کی جائے ورنہ یہ صورتحال کسی بھی وقت خطرناک ہو سکتی ہے۔

مزید پڑھیں: کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کی جائیں، شیلا جیکسن

برطانوی لیڈز ویسٹ پارلیمنٹ کے ممبر ریچل ریوز بھارت کی طرف سے مقبوضہ

کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کیے جانے کی مذمت کرتے ہیں، یہ اقدام کسی

صورت بھی ناقابل قبول ہے۔ برطانوی پارلیمنٹ کے ایک اور ممبر عمران حسین

کا کہنا ہے مودی سرکار عالمی قوانین کی خلاف ورزی کر رہی ہے، مقبوضہ

وادی سمیت خطے میں حالات کشیدہ ہو سکتے ہیں، برطانوی حکومت اور عالمی

اداروں کو آگے آنا چاہیے اور اپنا کردار ادا کرنا چاہیے جبکہ عالمی برادری کو

فوری طور پر مداخلت کرتے ہوئے بھارت کو غیر قانونی اقدام سے باز رکھنے

کیلئے اقدامات کرنے چاہیں-

Leave a Reply