طلبہ کا تعلیمی سال بچانے کیلئے ایجوکیشن بورڈز کا انقلابی فیصلہ

طلبہ کا تعلیمی سال بچانے کیلئے ایجوکیشن بورڈز کا انقلابی فیصلہ

Spread the love

لاہور (جے ٹی این آن لائن ایجوکیشن نیوز) طلبہ کا تعلیمی سال

طلبہ کا تعلیمی سال ضائع ہونے سے بچانے کیلئے ایک سال میں دو مرتبہ امتحانات

لئے جانے امکان ہے اور اس ضمن میں ملک بھر کے تعلیمی بورڈز نے امتحانات

میں انقلابی اصلاحات کا فیصلہ کر لیا ہے جس کے تحت میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے

ضمنی امتحانات ختم کرنے کے لیے ورکنگ پیپرز تیار کر لیا گیا ہے۔ اس حوالے

سے پیش کی جانیوالی تجاویز کے مطابق ایک سال میں دو مرتبہ سالانہ امتحانات

کا انعقاد کیا جائیگا۔ سال اول کے طلبہ کو فیل ہونیوالے مضامین کا امتحان دینے

کیلئے آئندہ سالانہ امتحان کا انتظار نہیں کرنا پڑیگا۔ طلبہ اگر ضمنی امتحانات میں

شامل ہو کر اپنے پرچے پاس کر لیں تو اس کی مارک شیٹ پر سپلیمنٹری امتحان

درج ہوتا ہے لیکن اب میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کی سند پر لفظ ” ضمنی امتحانات ” کو

ختم کر کے اس کی جگہ ” سالانہ امتحانات ” لکھا جائیگا۔

=–= تعلیم سے متعلق مزید ایسی خبریں (=–= پڑھیں =–= )

میڈیا رپورٹ کے مطابق امتحانات کا ایک سیشن اپریل، مئی جبکہ دوسرا سیشن

نومبر، دسمبر میں ہو گا۔ طلبہ دونوں سیشنز میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنے

کے مجاز ہوں گے۔ انٹر بورڈز کمیٹی چئیرمینز کے فورم میں چاروں صوبوں کے

تعلیمی بورڈز نے نئے سسٹم پر آمادگی کا اظہار کر دیا ہے۔ آئی بی سی سی کے

آئندہ اجلاس میں ورکنگ پیپر کی حتمی منظوری ہو گی۔ میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے

امتحانات میں اصلاحات کی سفارشات وزراء تعلیم کو ارسال ہوں گی جس کے بعد

ان تجاویز اور سفارشات پر حتمی فیصلہ کیا جائیگا۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

دوسری جانب سکول سربراہان نے پیک کے سوالیہ پرچے استعمال کرنے سے

انکار کر دیا جس کے بعد پرائمری اور مڈل سکولوں میں زیر تعلیم 81 لاکھ طلبہ کا

مستقبل داؤ پر لگ گیا ہے۔ اساتذہ کا ماننا ہے کہ جب طلبہ نے مکمل سلیبس پڑھا

ہے نہیں تو مکمل سلیبس کا امتحان کیسے دیں گے؟ سکولوں میں پیک کے فراہم

کردہ سوالیہ پیپرز میں سے بچوں کا امتحان لینا مشکل ہے کیونکہ طلبہ کو پورا

سال چھٹیاں تھیں۔ بچوں نے چھٹیوں کے دوران آدھا سلیبس بھی نہیں پڑھا۔

طلبہ کا تعلیمی سال

Leave a Reply