0

صوابی،2200سالہ قبل بادشاہ اشوک موریا کا نقشدہ خروشتی رسم الخط دریافت

Spread the love

صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع صوابی کی تحصیل ٹوپی میں واقع گلو ڈھیر ی کی چوٹی میں دو ہزار دوسو سالہ پرانا بادشاہ اشوک موریا نقشدہ ہاتھی شیربیل گھوڑے کے ساتھ خروشتی رسم الخط دریافت ہوئے ہیں۔

علاقہ بزرگوں کے مطابق شاہ اشوک موریا موریا خاندان کا آخری بادشاہ تھا بدھ مت مذھب کا پرچار پورے ھندوستان سری لنکا اور افعانستان سمیت مشرق وسطیٰ تک پھیلانے میں اس نے کوئی کسر نہ چھوڑی مختلف علاقوں پہاڑوں کے دامن اورچوٹیوں میں بڑے بڑے پھتروں پربدھ مت کی اشاعت کیلئے تحریریں کندہ کیں ، شھباز گڑھی اور مانسہرہ میں اس قسم کے پتھر پہلے سے دریافت ہیں مگر تییسری گمشدہ کڑی صوابی گلو ڈھیری میں دریافت ہوئی ہے۔

جس پر ہاتھی گھوڑے کے نقش تصاویر اورپراکرت زبان خروشتی رسم الخط ہے یاد رہے کہ اشوک بادشاہ نے232قبل مسیح سے268قبل مسیح تک برصغیر پاک وھند پر مشالی حکومت کی تھی یاد رہے کہ بدھ مت میں ھاتھی گھوڑاشیراوربیل کو تقدس کے طور پرماننے والے جانورتھے۔

Leave a Reply