صدر ٹرمپ کے سابق ذاتی وکیل مائیکل کوہن کو3 سال کی قید سزا

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

صدر ٹرمپ کے سابق ذاتی وکیل مائیکل کوہن کودو جرائم پر تین سال کی قید سزا سنادی گئی ہے، بدھ کی شام نیویارک میں وفاقی ڈسٹرکٹ جج ولیم پالے نے فیصلے میں بتایا ان کو دو فحش اداکاروں کو منہ بند کرنے کےلئے صدر ٹرمپ کی ہدایت پر پار ٹی فنڈ استعمال کرنے اور کانگریس کے سامنے جھوٹ بولنے پر سزادی گئی ہے قبل ازیں مائیکل کوہن نے اعتراف کرلیا تھا انہوں نے دو فحش اداکا ر و ں کے ٹرمپ کےساتھ ناجائز تعلقات کے الزامات سامنے آنے پر ٹرمپ کی ہدایت پر دو لاکھ اسی ہزار ڈالر ادا کئے تھے یہ رقم ریپبلکن پارٹی کی صدارتی مہم کے فنڈ سے لگالی گئی تھی اس کے علاوہ مسٹرکو ہن نے ماسکو میں ٹرمپ ٹاور کی تعمیر کے سلسلے میں روسی حکام سے رابطوں کے بار ے میں بھی کانگریس کے سامنے جھوٹ بولا تھا۔ مسٹر کوہن کے اعتراف جرم کے بعدان کی سزا میں کمی گئی ہے، انہوں نے عدالت میں انتہا ئی جذباتی انداز میں اپنے جرائم کی معافی مانگی اور تسلیم کیا انہوں نے صدر ٹرمپ کے گندے کارناموں کو چھپانے کےلئے جھوٹ بولا جس پر وہ بہت شرمندہ ہے، 52سالہ مائیکل کوہن نے 12سال تک ڈونلڈ ٹرمپ کےلئے کام کیا اور ایک بار یہ کہا تھا وہ ٹرمپ کےلئے گولی بھی کھا سکتے ہیں لیکن بعد میں حالات دیکھ کر انہوں نے پلٹا کھا لیا جس پر اب صدر ٹرمپ ان سے ناراض تھے مبصرین کا کہنا ہے صدر ٹرمپ کا اب ان جرائم میں معاونت کے الزام سے بچنا بہت مشکل ہے اور کانگریس میں ان کے مواخذے کی تحریک بھی شروع ہوسکتی ہے ۔ استغاثہ کے مطابق ما ئیکل کوہن نے ٹرمپ کی ہدایت پر انتخابی مہم کے مالیاتی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے فحش اداکاروں سٹوری ڈینٹل اور کرن مک ڈو گل کو 2016ءکے صدارتی انتخابات سے کچھ ہی پہلے ادائیگیاں کی تھی تاکہ وہ ناجائز تعلقات کے الزامات پر خاموش رہیں اور انہیں افشاءنہ کریں۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply