شہید مقبول بٹ کی آج 35ویں برسی، مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال

Spread the love

مقبوضہ کشمیر میں ممتاز آزادی پسند رہنما محمد مقبول بٹ کی شہادت کی برسی پر آج پیر کو مکمل ہڑتال ہے ۔

بھارت نے محمد مقبول بٹ کو 11فروری1984کو جدوجہدآزادی میں انکے کردار کی پاداش میں نئی دلی کی بدنام زمانہ تہاڑ جیل میں پھانسی دیکر انکی میت کو جیل کے احاطے میںہی دفن کر دیا تھا۔

کشمیر میڈیاسروس کے مطابق سرینگر میں لالچوک کی طرف مارچ اور ہڑتال کی کال سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دی ہے۔

ہڑتال اور مارچ کا مقصد شہید رہنما کی برسی پر انہیں یاد کرنا اور ان کی میت کو اسلامی اقدار کے مطابق تدفین کیلئے نئی دلی کی تہاڑ جیل سے مقبوضہ کشمیر منتقل کرنے کے کشمیریوں کے مطالبے پر زور دیناہے۔

مقبوضہ وادی کی مساجد میں خصوصی دعائیہ مجالس کا انعقاد بھی کیا جار ہا ہے۔

کٹھ پتلی ریاستی انتظامیہ نے حریت رہنمائوں سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق، محمد اشرف صحرائی ، محمد یاسین ملک، ہلال احمد وار، جاوید احمد میر، مختار احمد وازہ ، ، ظفر اکبر بٹ ، نور محمد کلوال ،شوکت بخشی ،محمد اشرف لایا، امتیاز حید ر اور محمد سلیم ننھاجی کو شہید رہنماء کی برسی پر بھارت مخالف مظاہروں کی قیادت سے روکنے کیلئے گھروں اور تھانوں میں نظر بند کر دیا ہے ۔

یاد رہے گزشتہ روز قابض بھارتی فورسز نے ظلم و وحشت کا مظاہرہ کرتے ہوئے نام نہاد تلاشی آپریشن کے دوران پانچ کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا تھا جس کی وجہ سے وادی بھر میں غم و غصہ کی جاری لہر میں مزید شدت آگئی ہے .
خدشہ ہے کہ آج مقبول بٹ کی برسی کے موقع پر لال چوک کی جانب مارچ اور شہید نوجوانوں کی نماز جنازہ کے موقع پر بھارتی فورسز ایک مرتبہ پھر ریاستی دہشتگردی کا مظاہرہ کریں گی .

Leave a Reply