شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت کیخلاف درخواست دائر

Spread the love

شہباز بیرون ملک اجازت

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن نیوز) وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ شہباز شریف کا نام ای

سی ایل میں شامل کرلیا گیاہے، تمام اداروں کو فیصلے سے آگاہ کر دیا، اپوزیشن لیڈر کے باہر جانے

سے کیس متاثر ہوتا، جانے کی اجازت دی گئی تو یہ سلطانی گواہوں پر اثر انداز ہوسکتے ہیں، نواز

شریف واپس نہیں آئے تو چھوٹے بھائی نے کہاں آنا تھا، انصا ف کا تقاضا ہے سب ملزموں سے ایک

جیسا سلوک ہو۔ شیخ رشید نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف کے بیرون ملک

جانے سے کیس متاثر ہوتا ہے، لیگی رہنما کو اگر اجازت دی گئی تو واپس لانا مشکل ہوگا، شریف

خاندان کے 5 افراد پہلے سے مفرور اور لندن میں بیٹھے ہیں، شہباز شریف نے نواز شریف کو لانے

کے بجائے خود بھاگنے کی کوشش کی۔شیخ رشید کا کہنا تھا کہ شہباز شریف نے ضمانت دی تھی کہ

نواز شریف کو واپس لائیں گے، اپوزیشن لیڈر نے حکومت کو کوئی میڈیکل دستاویز جمع نہیں کرائیں،

جس روز عدالتی فیصلہ آیا شہباز شریف نے اسی دن ٹکٹ بک کرایا، شہباز شریف کیخلاف کیس میں

4 افراد وعدہ معاف گواہ بن گئے ہیں، اپوزیشن لیڈر چاہیں تو 15 دن میں درخواست دائر کرسکتے ہیں،

ڈیل سے متعلق میرے پاس کوئی اطلاع نہیں، آرمی چیف نے واضح کہا ہے کہ فوج جمہوری حکومت

کے ساتھ ہے۔دوسری جانب وفاقی حکومت نے شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینے

کے لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف درخواست سپریم کورٹ میں جمع کروا دی ہے۔سپریم کورٹ

میں لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف دائر درخواست میں شہباز شریف کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ شہباز شریف کا نام پی این آئی ایل میں تھا۔ لاہور ہائیکورٹ نے نوٹس

جاری کیے بغیر حتمی ریلیف فراہم کیا۔ نوٹس کے بغیر لاہور ہائیکورٹ کا بیرون ملک اجازت دینے کا

جواز نہیں تھا۔درخواست میں یہ بھی کہا گیا کہ شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینے

کی درخواست پر اسی روز فیصلہ سنا دیا گیا۔ لاہور ہائیکورٹ نے قانونی اصولوں کے برعکس فیصلہ

سنایا، لاہور ہائی کورٹ کا حکم قانون کی نظر میں برقرار نہیں رکھا جا سکتا۔درخواست میں کہا گیا

ہے کہ لاہور ہائی کورٹ نے متعلقہ حکام سے جواب مانگا نہ کوئی رپورٹ مانگی گئی، بیرون ملک

جانے کی اجازت دینے کا یکطرفہ فیصلہ نہیں دیا جا سکتا، شہباز شریف کے واپس آنے کی کوئی

گارنٹی نہیں ہے، شہباز شریف نوازشریف کی واپسی کے ضامن ہیں جبکہ شہباز شریف کی اہلیہ، بیٹا،

بیٹی اور داماد پہلے ہی مفرور ہیں۔

توہین عدالت کی درخواست لاہور ہائی کورٹ کے رجسٹرارآفس نے اعتراض لگا کر واپس کردی

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں شہباز شریف کی جانب سے دائرتوہین عدالت کی درخواست

لاہور ہائی کورٹ کے رجسٹرارآفس نے اعتراض لگا کر واپس کردی جبکہ عدالتی حکم پر عمل در

آمد کروانے کی دائرمتفرق درخواست پربھی اعتراض عائدکردیاہے کہ اس بابت متعلقہ فورم سے

رجوع کیا جائے تاہم مسٹر جسٹس علی باقر نجفی آج متفرق درخواست کی اعتراض کیس کے طور پر

سماعت کریں گے ،اعتراض کے جواب میں شہباز شریف کے وکلاء کا کہنا ہے کہ متعلقہ فورم توہین

عدالت کی کارروائی ہے جبکہ سردست لاہورہائی کورٹ میں توہین عدالت کی درخواستیں قبول نہیں

کی جارہی ہیں ،اس لئے عدالت کے 7مئی کے حکم پر عمل درآمد کیلئے متفرق درخواست دائر کی

گئی ہے درخواست میں وفاقی حکومت، ڈی جی ایف آئی اے واجد ضیا ،وفاق حکومت سمیت دیگر کو

فریق بنایا ہے، شہباز شریف کے وکلاء امجد پرویزاور اعظم نذیرتارڑ دائر درخواست میں موقف

اختیار کیا گیا ہے کہ عدالت عالیہ نے شہباز شریف کو علاج کیلئے بیرون جانے کی اجازت دی

،عدالتی حکم کے باوجود محمد شہباز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت نہیں دی گئی،عدالتی

احکامات پر عمل در آمد نہ کرنے پر متعلقہ افسران کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی

جائے،رجسٹرار آفس نے درخواست اعتراض لگا کر واپس کرتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا ایس او

پیزکے تحت توہین عدالت کی کوئی نئی درخواست وصول نہیں کی جا رہی، جس کا نوٹیفکیشن بھی

جاری کیا جا چکا ہے اس متفرق درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ لاء افسروں اور ایف آئی

اے حکام کی موجودگی میں حکم سنایا گیااور یہ حکم نامہ ،واٹس ایپ ،ای میل اور ٹیلی فون کے

ذریعے متعلقہ حکام کو بھجوایاگیاجبکہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے ڈپٹی سیکرٹری کی جانب سے ایف

آئی اے میں حکم نامہ کی کاپی بھی موصول کروائی گئی،ایف آئی اے شہباز شریف کو باہر جانے سے

روکنے کے لیے عذر تلاش کرتارہا، اس عمل سے ثابت ہو گیا کہ سرکاری اداروں کو سیاسی

انجینئرنگ کے لئے استعمال کیا جا رہاہے،اب یہ تمام دنیا جان چکی ہے کہ عدالتی احکامات کی توہین

آمیز طریقے سے خلاف ورزی کی گئی،عدالتی حکم پر عمل درآمد نہ کرنا عدالتی احکامات کی توہین

ہے،عدالت عدالتی احکامات پر عمل در آمد نہ کرنے پر متعلقہ افسروں کے خلاف توہین عدالت کی

کارروائی کی جائے اور7مئی کو جاری کئے گئے عدالتی فیصلے پر بھی عمل درآمد کا حکم دیاجائے۔

شہباز بیرون ملک اجازت

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply