شوہر ایشو، صدف کنول کا موقف، خلیل الرحمان قمر، طلاق اور منظر صہبائی

شوہر ایشو، صدف کنول کا موقف، خلیل الرحمان قمر، طلاق اور منظر صہبائی

Spread the love

کراچی، لاہور (جے ٹی این آن لائن شوبز نیوز) شوہر ایشو صدف کنول

شوبز انڈسٹری کے معروف مصنف اور ہدایتکار خلیل الرحمان قمر نے ایک

انٹرویو کے دوران اداکارہ صدف کنول کے حال ہی میں شوہر سے متعلق دئیے

گئے بیانات پر اپنی رائے کا اظہار کیا ہے۔ ایک انٹرویو میں خلیل الرحمان قمر نے

کہا بیوی کا یہ یاد رکھنا کہ یہ میرے شوہر کی شرٹ ہے اور ضرورت پڑنے پر

بیوی وہ شرٹ اپنے شوہر کو لاکر دیتی ہے تو کیا اس سے وہ اپنے شوہر کی

ملازمہ ہوجاتی ہے؟ انہوں نے اپنی شادی شدہ زندگی کی مثال دیتے ہوئے کہا ہر

شوہر جو شادی کر کے بیوی کو گھر لاتا ہے اس کی آرزو ہوتی ہے کہ وہ اپنی

بیوی کو ملکہ کی طرح رکھے۔ ایک زمانہ تھا جب میں نے اپنی بیوی کیساتھ

جھاڑو دی، برتن دھوئے اور آج بھی اکثر میں اپنا ناشتہ خود بناتا ہوں۔ میری بیوی

میرے موزے نکالے گی اور جب ضرورت پڑے گی میں بھی اس کے موزے

نکالوں گا زندگی اس طرح چلتی ہے اور یہ محبت ہے۔

=–= شوبز دنیا سے ایسی ہی مزید دلچسپ خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

خلیل الرحمان قمر نے کہا صدف کنول کے شوہر سے متعلق خیالات جان کر میں

نے بہروز سبزواری کو فون کیا اور ان سے کہا میری طرف سے صدف کنول کو

مبارکباد اور بہت پیار دینا کہ اس کی سوچ اتنی خوبصورت ہے۔ خلیل الرحمان قمر

نے صدف کنول پر تنقید کرنے والے لوگوں کو جواب دیتے ہوئے کہا وہ اپنے

شوہر کے جوتے پالش کرے یا اپنی زندگی میں کچھ بھی کرے آپ کون ہوتے ہیں

اس پر تنقید کرنے والے اگر آپ نہیں کرنا چاہتیں تو آپ نہ کریں۔ صدف کنول کو

پورا حق ہے کہ وہ اپنی زندگی میں جو چاہے کرے کسی کو اس کے خلاف بولنے

کا کوئی حق نہیں۔ خلیل الرحمان قمر نے مزید کہا اللہ تعالی صدف کنول کو عزت

اور آبرو دے اور وہ اپنے ایمان پر قائم رہے۔ صدف کنول اگر اپنا راستہ بدل کر

اس راستے پر آ گئی ہے جو منزل کی طرف جاتا ہے تو کیا اسے بھٹکا کر واپس

لے جانا چاہتے ہیں۔ آج صدف کنول ایک شاندار عورت ہے بھول جائیں اس کا

ماضی کیا تھا کیونکہ ہر آدمی کا ماضی ہوتا ہے۔

=-،-= طلاق کو خواتین کی تعلیم سے منسوب کرنے پر منظر صہبائی برہم

سینئر اداکار منظر صہبائی نے طلاق کو خواتین کی تعلیم سے منسوب کرنے والوں

پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔ منظر صہبائی نے انسٹاگرام سمیت اپنے دیگر سوشل

میڈیا اکاؤنٹس پر ایک پوسٹ کا سکرین شاٹ شیئر کیا تھا جس میں طلاق کو خواتین

کی تعلیم سے منسوب کرتے ہوئے سوال کیا گیا تھا۔ سینئر اداکار نے مذکورہ پوسٹ

شیئر کی اور ساتھ ہی اپنی رائے کا اظہار بھی کیا۔ منظر صہبائی نے سوشل میڈیا

پر گردش کرنے والی پوسٹ کا جو سکرین شاٹ شیئر کیا تھا اس میں لکھا تھا کہ

طلاق یافتہ عورتوں میں 80 فیصد تعلیم یافتہ ہیں، اس میں قصور کس کا ہے تعلیم

کا یا تربیت کا۔ مذکورہ سوال پر کمنٹ کرتے ہوئے منظر صہبائی نے لکھا میری

زندگی میں ایسے مواقع بہت کم آئے ہیں جب مجھے ایسے احمقانہ سوالات کا سامنا

کرنا پڑا ہو۔ اس کے ساتھ ہی منظر صہبائی نے اپنی انسٹاگرام پوسٹ کے کیپشن

میں بھی یہی جملہ دہراتے ہوئے برہمی کا اظہار کیا۔ علاوہ ازیں کئی سوشل میڈیا

صارفین نے بھی منظر صہبائی کے تبصرے کی تائید کی۔ کچھ صارفین نے کہا کہ

تعلیم یافتہ خواتین کو اپنے حقوق معلوم ہوتے ہیں جبکہ دیگر کا کہنا تھا کہ طلاق

یافتہ خواتین کے لیے مختلف پیمانے بنائے جاتے ہیں۔

شوہر ایشو صدف کنول ، شوہر ایشو صدف کنول ، شوہر ایشو صدف کنول

شوہر ایشو صدف کنول ، شوہر ایشو صدف کنول ، شوہر ایشو صدف کنول

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply