9 شوگر ملز بلیک لسٹ ،140بنک اکاؤنٹس منجمد،پنجاب کیلئے ڈسٹری بیوشن پلان تیار

Spread the love

شوگر ملز بلیک لسٹ

اسلام آباد،لاہور،کراچی(جے ٹی این آن لائن نیوز) وفاقی حکومت نے شوگر مافیاز کیخلاف کارروائیاں

مزید تیز کرتے ہوئے شوگر ملزبلیک لسٹ کرنا شروع کردیں۔تفصیلات کے مطابق ٹریڈنگ

کارپوریشن آف پاکستان نے26 ارب روپے کے غبن میں ملوث 9شوگر ملزم کو بلیک لسٹ کرتے

ہوئے ان پر مقدمات درج کرلئے ہیں۔بلیک لسٹ قرار دی جانے والی ملوں میں عبداﷲ شوگر ملز،

حبیب وقاص شوگر ملز، ٹنڈو محمد خان شوگر ملز، حق باہو شوگر ملز، سیری شوگر ملز، تاندلیانوالہ

شوگر ملز، مکہ شوگر ملز، عبداﷲ شاہ غازی شوگر ملز شامل ہیں۔اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے

کہ بلیک لسٹ قرار دی گئیں شوگر ملوں نے ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان سے معاہدہ کیا تھا کہ وہ

چینی کی سپلائی جاری رکھیں گی۔ لیکن ان ملوں نے معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے۔ چینی

فراہم نہ کی۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان نے ان ملوں پر ٹی سی پی ٹینڈر

میں شرکت کرنے پر بھی پابندی عائد کردی ہے۔ دوسری جانب وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے نے

چینی سٹہ مافیا کے 40سرکردہ ارکان کے بینک اکاونٹس منجمد کرتے ہوئے خفیہ اثاثوں کی چھان بین

کا آغاز کررکھا ہے۔ابھی تک ایف آئی اے نے چینی سٹہ مافیا کے 40سرکردہ ارکان کے بینک

اکاونٹس منجمد کردیئے ہیں جبکہ 100سے زائد جعلی اوربے نامی اکانٹس کو بھی منجمد کیا ہے۔ایف

آئی اے 37 افراد کے شناختی کارڈز پہلے ہی بلاک کروا چکا ہے۔ایف آئی اے کا کہنا تھا کہ چینی سٹہ

مافیا نے غریب عوام کے ساتھ سنگین ترین مالی فراڈ کیا اور غریب عوام کی جیبوں سے 110 ارب

نکال لیے۔علاوہ ازیں محکمہ خوراک نے صوبہ پنجاب کو چینی کی فراہمی کے لیے ڈسٹری بیوشن

پلان تیار کرلیا، پنجاب کی آبادی 11 کروڑ اور چینی کی طلب 2 لاکھ 80 ہزار میٹرک ٹن ماہانہ ہے۔

پنجاب کی فعال شوگر ملوں کے پاس 25 لاکھ 42 ہزار میٹرک ٹن چینی کا اسٹاک موجود ہے، محکمہ

خوراک کے مطابق پنجاب کی شوگر ملوں کے پاس ضرورت کے مطابق چینی موجود ہے۔ذرائع کا

کہنا ہے کہ 30کلو گرام فی کس کے حساب سے ضروریات 9ہزار 353میٹرک ٹن روزانہ ہے۔ صرف

لاہور کی آبادی 1کروڑ 11لاکھ اور چینی کی ضرورت 33ہزار 378میٹرک ٹن ہے۔حکام کا کہنا ہے کہ

ڈی سی شوگر ملوں اور ڈیلرز کے ذریعے مارکیٹوں میں چینی فراہمی کے پابند ہوں گے، شوگر ڈیلرز

ڈی سی کی موجودگی میں ملوں سے 93 روپے فی کلو چینی خریدیں، شوگر ڈیلرز ریٹیل میں 96

روپے فی کلو فروخت کرنے کے پابند ہوں گے۔حکام کے مطابق شوگر ڈیلرز منافع کی مد میں 3

روپے فی کلو رکھنے کے مجاز ہوں گے۔ادھرضلعی انتظامیہ لاہور نے مارکیٹ میں چینی کی قلت

دور کرنے کے لیے کمر کس لی۔ لاہور میں ایک لاکھ کلو روزانہ چینی کی ضرورت کو پورا کرنے

کے لیے ہنگامی لائحہ عمل بنا لیا۔کمشنر لاہور کی ہدایت پر پتوکی شوگر ملز سے چینی کے ایک ہزار

تھیلے منگوا لیے گئے۔ ڈپٹی کمشنر لاہور مدثر ریاض ملک کا کہنا ہے کہ شوگر ملز سے 93 روپے

فی کلو چینی خریدی گئی، 50 ہزار کلو چینی شہر کے 100 ہول سیلرز کو پہنچا دی، مزید 50 ہزار

کلو چینی بھی آج پہنچ جائے گی، ذخیرہ اندوزوں کو 3 سال کے لیے ڈائریکٹ جیل بھجوائیں گے۔ڈی

سی لاہور نے کہا کہ پنجاب فوڈ کنٹرول ایکٹ 1958پر من و عن عملدرآمد کروایا جائے گا۔مزیدبرآں

چینی سٹہ مافیا کے خلاف کارروائی کیلئے ایف آئی لاہور نے ایف آئی اے کراچی کو ایک خط ارسال

کیا ہے خط کے متن میں ایف آئی اے لاہور نے ایف آئی اے کراچی کو شہرمیں 23چینی سٹہ کرنے

والوں کی تفصیل بھی دی ہے، اس فہرست میں چینی مافیا کے ان لوگوں کے نام شامل ہیں جو چینی

کی قیمت میں اضافے کے ذمہ دار ہیں۔ایف آئی اے کی فہرست میں جو نام شامل ہیں ان میں دانش،

فرقان بابا، کھیم چند دینانی، دیوی داس حیدرآباد، جیکمار، جاوید تھارا، حاجی ضمیر، ہریش کمار،

مہیش کمار، ویشال کلارا، روہت چنی لالہ، ستیاپال کلارا، سنتوش کمار ہیں۔اس کے علاوہ راجہ چنی

لال، جوتی پرکاش، پون سبلانی، دیال داس، پریم کمار، دلیپ دیونانی، دیوداس، روی کوریجانانک رام

دینانی، روشن لال، منگارام عرف جگل کشور کا نام بھی شامل ہے۔ ایف آئی اے لاہور کی جانب سے

کراچی آفس کو جاری کی گئی مذکورہ فہرست میں جن 23افراد کے نام شامل ہیں ان کا تعلق پاکستان

شوگرگروپ، شوگر مرچنٹس اور شوگر ٹریڈرز گروپ سے ہے۔

شوگر ملز بلیک لسٹ

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply