فون کالز پر ٹیکس 0

شوکت ترین مشیر خزانہ مقرر،درجہ وفاقی وزیر کے برابر ہوگا

Spread the love

شوکت ترین مشیر خزانہ

نیویارک ، اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) وفاقی حکومت نے شوکت ترین کو مشیر خزانہ

وریونیومقررکر تے ہوئے وفاقی وزیر کا درجہ دیدیا گیا ہے، وزیراعظم عمران خان کی ایڈوائس پر

صدر مملکت عارف علوی نے شوکت ترین کی بطور مشیر خزانہ تعیناتی کردی ہے، اور کابینہ ڈویژ

ن نے اس حوالے سے نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا ہے۔شوکت کی تعیناتی کا نوٹیفکیشن چھٹی کے دن

اتوار17 اکتوبر کو جاری کیا گیا ہے، شوکت کی بطور وفاقی وزیر مدت 16 اکتوبر کو ختم ہوگئی تھی،

شوکت ترین جب تک دوبارہ وفاقی وزیر خزانہ نہیں بنتے اس وقت تک ای سی سی اجلاسوں کی

صدارت نہیں کرسکیں گے اور ہائی کورٹ کے فیصلے کے مطابق مشیر خزانہ شوکت ترین کابینہ کی

دیگر کمیٹیوں کی صدارت بھی نہیں کرسکتے۔ دوسری طرف مشیر برا ئے خزانہ شوکت ترین نے کہا

ہے امریکہ میں مقیم پاکستانی روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹس کی مراعات سے استفادہ کریں، حکومت نے

معاشی بہتری کیلئے وسیع تر اقتصادی اصلاحات کی ہیں، بیرون ملک پاکستانیوں کو روشن ڈیجیٹل

پروگرام سے بہت فائدہ ہوگا۔مشیر خزانہ شوکت ترین کے اعزاز میں قونصلیٹ جنرل نیویارک کی

جانب سے روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹس پروگرام کے موضوع پر تقریب کا اہتمام کیا گیا۔گورنر سٹیٹ بینک

ڈاکٹر رضا باقر اور ایگزیکٹو ڈائریکٹر آئی بی اے ڈاکٹر ایس اکبر زیدی بھی اس موقع پر موجود تھے۔

گورنرسٹیٹ بینک ڈاکٹر رضا باقر نے روشن ڈیجیٹل پاکستان کے بارے میں بریفنگ دی۔حکومت

اقتصادی استحکام اور معاشی ترقی کیلئے کوشاں ہے، امریکہ میں مقیم پاکستانی روشن ڈیجیٹل

اکاؤنٹس کی مراعات سے استفادہ کریں۔مشیر خزانہ نے کہاحکومت نے معاشی بہتری کیلئے وسیع تر

اقتصادی اصلاحات کی ہیں۔ گور نرسٹیٹ بینک نے کہا بیرون ملک پاکستانیوں کو روشن ڈیجیٹل

پروگرام سے بہت فائدہ ہوگا۔ اوورسیز پاکستانیوں کیلئے بینکنگ سیکٹر میں جدت لائی گئی ہے۔ شوکت

ترین نے آئی ایم ایف سے مذاکرات میں ناکامی کے تاثر کو غلط قرار دیتے ہوئے کہاہے مذاکرات کے

سلسلے میں سیکرٹری خزانہ واشنگٹن میں موجود ہیں،معیشت میں بہتری آرہی ہے ، تھوڑا وقت دیں ۔

مشیر خزانہ نے کہا مہنگائی کو جب تک کنٹرول نہیں کیا جاتا تب تک برآمدات میں اضافہ نہیں ہو

سکتا۔ اوورسیز پاکستانیوں نے ریکارڈ فارن ریزرو بھجوائے جو موجودہ حکومت پہ اعتماد کا اظہار

ہے پاکستان میں پاور سیکٹر ڈس فنکشنل ہو چکا ہے۔وزیراعظم نے اپنی مقبولیت کی پرواہ کئے بغیر

سخت فیصلے کئے ۔وزیراعظم نے پاور سیکٹر کے ساتھ معاملات طے کئے جس سے گردشی

قرضوں میں کمی ہو گی ۔ایف بی آر نے پچھلے سال کے مقابلے میں اٹھارہ فیصد زاید ٹیکس اکھٹے

کر لئے ہیں ۔پاکستان میں بدقسمتی سے اشیائے خورد و نوش کی درآمد ہو رہی ہے جو انتہائی بدقسمتی

کی بات ہے ۔ورلڈ بینک نے پاکستان کی گروتھ ریٹ تین اعشاریہ چار فیصد رکھا تھا ۔پاکستان کے

فارن ریزرو انیس ارب ڈالر سے زائد ہو چکے ہیں ۔روشن ڈیجیٹل اکاونٹ کھلوانے سے ان ریزرو میں

اضافہ ہو گا۔حقیقت میں پاکستان میں چھوٹے قرضوں کی واپسی کی شرع اٹھانوے فیصد ہے ۔موجودہ

حکومت چھوٹے قرضوں کے لئے بینک اور دیگر اداروں سے تعاون کر رہی ہے

شوکت ترین مشیر خزانہ

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply