شعیب ملک اور ثانیہ مرزا بھی دبئی کے گولڈن ویزا ہولڈرز بن گئے

شعیب ملک اور ثانیہ مرزا بھی دبئی کے گولڈن ویزا ہولڈرز بن گئے

Spread the love

دبئی، دہلی، حیدر آباد(جے ٹی این آن لائن سپورٹس نیوز) شعیب ثانیہ گولڈن ویزا

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شعیب ملک اور ان کی ٹینس سٹار اہلیہ ثانیہ مرزا

کو دبئی کا گولڈن ویزا مل گیا۔ عرب میڈیا کے مطابق ثانیہ اور شعیب کو گولڈن

ویزا ملنے کے بعد 10 سال تک متحدہ عرب امارات میں رہنے کی اجازت ہو گی۔

ٹوئٹر پر ثانیہ مرزا کی جانب سے گولڈن ویزا ملنے کی خبر مداحوں سے شیئر کی

گئی اور شکریہ بھی ادا کیا گیا۔ بھارتی میڈیا کی ایک رپورٹ کے مطابق ثانیہ مرزا

اداکار سنجے دت اور شاہ رخ خان کے بعد بھارت کی تیسری شخصیت ہیں جنہیں

گولڈن ویزا دیا گیا ہے۔ ثانیہ نے اس اعزاز کے دیے جانے پر شیخ محمد بن راشد،

وفاقی اتھارٹی اور دبئی سپورٹس کی جنرل اتھارٹی کا شکریہ بھی ادا کیا۔ ان کا کہنا

تھا دبئی میرے اور اہلخانہ سے بے حد قریب ہے، یہ میرا دوسرا گھر ہے جہاں میں

زیادہ سے زیادہ وقت گزارنا چاہتی ہوں۔ ثانیہ ان دنوں ٹوکیو میں ہونیوالے چوتھے

اولمپک کی تیاری کررہی ہیں۔

=-،-= پڑھیں، ثانیہ ترک ڈرامہ “ارطغرل غازی” کے ہیرو انگین آلتان کی مداح

ٹوکیو اولمپکس 2020ء میں شرکت سے قبل معروف بھارتی ٹینس سٹار ثانیہ مرزا

اور بھارت کے وزیرِاعظم نریندرمودی کے درمیان ورچوئل گفتگو بھی ہوئی ہے۔

ثانیہ مرزا نے اپنی انسٹا سٹوریز پر نریندرمودی سے گفتگو کی اپنی ویڈیوز شیئر

کیں، جن میں ثانیہ کو ویڈیو کال کے ذریعے بھارتی وزیرِاعظم سے بات کرتے

ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ انہوں نے انسٹا سٹوری اور ٹوئٹ میں نریندر مودی سے

ہونے والی اپنی گفتگو کی مکمل ویڈیو دیکھنے کے لیے ویڈیو کا لنک بھی شیئر

کیا ہے جو کہ ان کے یوٹیوب چینل پر اپلوڈ کی گئی ہے۔ اس ویڈیو میں بھارتی

وزیرِاعظم نریندر مودی نے بھارت کی نمبر ون ٹینس سٹار ثانیہ مرزا کی تعریف

کرتے ہوئے ان سے پوچھا کہ آپ لوگوں کی ہیرو ہیں اور بڑے بڑے کھلاڑیوں

کیساتھ آپ نے کھیلا ہے، آپ کو کیا لگتا ہے کہ ٹینس کا چیمپیئن بننے کے لیے کیا

خوبیاں ہونی چاہییں؟

=–= کھیل اور کھلاڑی سے متعلق ایسی ہی مزید خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

ثانیہ مرزا نے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا ان کا خیال ہے کہ ٹینس ایک ایسا بین

الاقوامی کھیل ہے جس میں 25 سال پہلے جب انہوں نے اپنے کیرئیر کا آغاز کیا

تھا تو اس وقت زیادہ لوگ ٹینس نہیں کھیلتے تھے لیکن آج بہت سارے ایسے بچے

ہیں جو ٹینس ریکٹ اٹھانا چاہتے ہیں اوراسے اپنا پروفیشن بنانا چاہتے ہیں۔ جو اس

بات کا یقین رکھتے ہیں کہ وہ بڑے کھلاڑی بن سکتے ہیں تو اس کے لیے آپ کو

ظاہر سی بات ہے کہ محنت، لگن اور حوصلہ افزائی کی ضرورت ہوتی ہے۔ ثانیہ

کا کہنا ہے کہ ان کے خیال میں محنت کیساتھ قسمت کا بھی کافی اہم کردار ہوتا ہے

لیکن پھر بھی محنت کے بغیر کوئی کچھ نہیں ہو سکتا چاہے وہ ٹینس ہو یا کوئی

بھی کھیل ہو۔

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

نریندر مودی نے ثانیہ سے ان کی اورساتھی کھلاڑی انکیتارائنہ کیساتھ پارٹنرشپ

کی اور اولمپکس کے لیے تیاری کے بارے میں بھی پوچھا، جس پر ثانیہ نے کہا

کہ انکیتا ایک نوجوان کھلاڑی ہے اور بہت اچھا کھیل رہی ہے اور وہ انکیتا کے

ساتھ اولمپکس میں کھیلنے کے لیے بہت پرجوش ہیں۔ بھارتی حکومت کی جانب

سے کھلاڑیوں کی مدد کرنے اورملک میں مختلف کھیلوں کے لیے سہولیات مہیا

کرنے پر حکومت کی تعریف بھی کی۔

شعیب ثانیہ گولڈن ویزا ، شعیب ثانیہ گولڈن ویزا ، شعیب ثانیہ گولڈن ویزا

Leave a Reply