شرح خواندگی سو فیصد،مفت تعلیم سب کیلئے محض نعرہ، غریب عوام پریشان

Spread the love

پیرمحل(جے ٹی این آن لائن ) حکومت پنجاب نے سوفیصد شرح خواندگی کا نعرہ

لگا کر گورنمنٹ سکولوں کے اساتذہ کے ذریعے تعلیم سب کیلئے کے تحت بچوں

کے داخلہ کی مہم شروع کررکھی ہے لیکن انگلش میڈیم کی چند مخصوص کتابیں

طلبہ کو دے کر سوفیصد تعلیم مفت اورغریب والدین کی بے بسی کا سرعام مذاق

اڑایاجارہا ہے جبکہ اردومیڈیم کی کتابیں امسال طلبہ کودی ہی نہیں گئیں،جو کتابیں

دی گئیں ہیں ان کی جلد بندی بازار میں 80 سے سوروپے فی کتاب کی جارہی ہے

جبکہ اردومیڈیم کتاب اور پرائیویٹ سکولوں کی عام چھوٹی سی کتاب کی قیمت تین

سو سے پانچ سوروپے مقرر ہے. نرسری اور پریپ کلاس کے طلبہ کی صرف

بکس کی قیمت دوہزار سے تین ہزار روپے تک ہے اسی طرح یونیفارم اور شوز

کی قیمتیں بھی غریب تو کجا متوسط طبقہ کے والدین کی پہنچ سے بھی کوسوں

دور ہیں جس کی وجہ سے جہاں حکومت کا مفت تعلیم سب کیلئے کا نعرہ محض

زبانی جع خرچ توغریب عوام کیلئے اپنے بچوں کو تعلیم دلوانا صرف خواب بن کر

رہ گیا ہے ، دوسری طرف نرسری پریپ سے پنجم تک کاپیاں اور دیگر اسٹیشنری

دوہز ارروپے سے کم قیمت کی میسر ہی نہیں،حکومت کی طرف سے چیک اینڈ

بیلنس نہ ہونے پر دکاندار من مانے ریٹس پرکتابیں ،کاپیاں اور دیگر اسٹیشنری

فروخت کررہے ہیں والدین کا کہناہے حکومت پنجاب اگر واقعی سوفیصد شرح

خواندگی کا خواب شرمندہ تعبیر کرنا چاہتی ہے توپہلے مفت کتابیں،کاپیاں،یونیفام

مہیا کرے بصورت دیگر عام بازار میں کتابوں کاپیوں یونیفارم کی معقول قیمت

مقرر کرکے اس پریقینی عملدرآمد کرانے کیلئے چیک اینڈ بیلنس سسٹم قائم کرے

تاکہ عوام حکومت کے انتہائی اہم اقدام میں ہاتھ بٹا کر نئی نسل کو زیور تعلیم سے

آراستہ کرکے معاشرے اور ملک کا بہترین شہری بنا سکیں .

Leave a Reply