شانگلہ میں جنگلات کو قومیانے کا مطالبہ زور پکڑنے کا سبب کیا؟

شانگلہ میں جنگلات کو قومیانے کا مطالبہ زور پکڑنے کا سبب کیا؟

Spread the love

پشاور(جتن بیورو چیف عمران رشید خصوصی رپورٹ) شانگلہ میں جنگلات

Journalist Imran Rasheed

شانگلہ میں قومی دولت جنگلات کو ملکیت کے بجائے قومیانے کا مطالبہ زور

پکڑنے لگا، کوہستان، کالام، دیر و دیگر جنگلات کے طرح شانگلہ کے جنگلات

کو بھی قومیا کر ان کا تحفظ یقینی بنایا جا سکتا ہے، ووڈ لاٹ پالیسی کے تحت

شانگلہ سمیت صوبہ بھر میں درختوں کی بے دریغ کٹائی زور و شور سے جاری

ہے، محکمہ جنگلات با آثر لوگوں کیخلاف کاروائی کرے ناکہ غریب کسانوں،

زمینداروں کی مکئی کی کھڑی فصل کو کاٹے۔ شانگلہ کے ضلعی ہیڈ کوارٹر

الپوری کے گرد و نواح کے جنگلوں کو وسعت دینے کیلئے بنجر رقبوں پر گزشتہ

آٹھ سال میں ایک بھی پودا نہیں لگایا گیا جو محکمہ جنگلات کی کارکردگی پر بڑا

سوالیہ نشاں ہے، باآثر شخصیات کے زیر قبضہ جنگل کے بنجررقبوں پر شجر

کاری سے محکمہ جنگلات کیوں کتراتا ہے۔

=-،-= پشاور ریوائیل پلان پر عملدرآمد، وزیراعلیٰ محمود خان کا عدم اطمینان

شانگلہ میں پی ٹی آئی حکومت کی شجر کاری مہموں اور کئی جنگل کا رقبہ

بڑھانے کیلئے گزشتہ آٹھ سال میں اربوں خرچ ہوئے مگر کوئی خاطرخواہ نتائج

سامنے نہ آ سکے جس کی وجہ ملکیتی جنگلات اور ووڈ لاٹ پالیسی کے تحت

کٹائی ہے۔ شانگلہ میں ملکیتی قیمتی درختوں کی کٹائی ووڈلاٹ پالیسی کے تحت

جاری ہے جس سے جنگلات کی تباہی ہو رہی ہے۔ محکمہ جنگلات پالیسی کے

تحت اس عمل کی نگرانی کررہی ہے جبکہ دوسری طرف شجر کاری مہم چلا

رہی ہے ایک پودے کو درخت بنتے کئی سال لگ جاتے ہیں، اور اس کو کاٹنے

میں چند منٹ۔ پی ٹی آئی حکومت نے شانگلہ سمیت صوبے بھر میں بلین ٹری

سونامی ٹریز پلانٹیشن سمیت کئی بڑے بڑے پراجیکٹس شروع کر رکھے ہیں جن

کا مقصد ماحولیاتی تبدیلی کے اثرات، سیلاب، درجہ حرارت کے بڑھنے اور

دیگر خطرات سے بچنا تھا۔ وہاں ووڈ لاٹ پالیسی کے تحت شانگلہ سمیت صوبہ

بھرمیں درختوں کی زور و شور سے جاری کٹائی پی ٹی آئی حکومت کی انتظامی

کارکردگی پر بھی بڑا سوالیہ نشان ہے۔

=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ اس پورے عمل کو مکمل کرنے کیلئے محکمہ

جنگلات ڈیمارکیشن اور ریونیو کی مدد سے کام کر رہا ہے، مگر عوامی حلقوں

کی جانب سے سخت اعتراض اُٹھایا جاتا ہے کہ قومی دولت جنگل کے فوائد اور

ان کے نہ ہونے کے نقصانات سے محکمہ خوب واقف ہونے کے باوجود بھی

ایسی پالیسی کیوں اختیار کئے ہوئے ہے جس سے قیمتی درختوں اور جنگلات کو

کاٹا جارہا ہے اور اسکا فائدہ صرف مالک اور ٹھیکیدار کو ہوتا ہے جبکہ نقصان

پورے ملک و قوم کو اٹھانا پڑ رہا ہے۔ اس حولے سے جامع منصبوبہ بندی کی

جائے اور خیبر پختونخوا کے دیگر علاقوں کی طرح شانگلہ کے جنگلات بھی

قوم کے حوالے کئے جائیں تاکہ ان کا تحفظ یقینی بن سکے۔

=-،-= حکومت باآثر افراد سے جنگلات واگزا کرائے، عوامی حلقے

عوامی حلقوں نے ووڈلاٹ پالیسی کے تحت نایاب درختوں کی کٹائی پر سخت

تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت باآثر شخصیات سے جنگلات کا

رقبہ واگزار کرائے، درختوں کی کٹائی کی جاری پالیسی کو ختم کرنے سمیت

شانگلہ کے جنگلات کو قومیز کرائے اور واگزار ہونے والے بنجر علاقے پر فل

الفور شجر کاری شروع کرائے، عوامی حلقوں نے کہا ہے کہ فوٹو سیشن کے

بجائے شانگلہ میں عملی طور پر شجر کاری مہم چلائی جائے، پودے مفت تقسیم

کئے جائیں اور جنگلات کی نگرانی سخت کی جائے تاکہ حقیقت میں جنگلات کے

رقبے بڑھ سکیں۔

شانگلہ میں جنگلات ، شانگلہ میں جنگلات ، شانگلہ میں جنگلات

شانگلہ میں جنگلات ، شانگلہ میں جنگلات ، شانگلہ میں جنگلات

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply