اردو ادب کے قادر الکلام شاعرجوش ملیح آبادی کو بچھڑے 39 برس بیت گئے

اردو ادب کے قادر الکلام شاعرجوش ملیح آبادی کو بچھڑے 39 برس بیت گئے

Spread the love

لاہور(جے ٹی این آن لائن شوبز نیوز) شاعرجوش ملیح آبادی

اردو ادب کے قادر الکلام شاعرجوش ملیح آبادی کی39 ویں برسی آج 22 فروری

بروز پیر انتہائی عقیدت و احترام سے منائی جارہی ہے، اس سلسلے میں ادبی

حلقوں میں مختلف تقریبات کے انعقاد ما اہتمام کیا گیا ہے جس میں جوش ملیح آبادی

کی ادبی خدمات کو خراج عقیدت پیش کرنے سمیت ان کی روح کے ایصال ثواب

کیلئے قران و فاتحہ خوانی کیساتھ ساتھ خصوصی دعائیں بھی مانگی جا رہی ہیں

کہ اللہ تعالیٰ ان کے درجات مزید بلند کرے۔

==-== جوش ملیح آبادی کے بارے میں مزید جاننے کیلئے ( وزٹ ) کریں

جوش ملیح آبادی دسمبر1898ء کو ایک علمی و ادبی گھرانے میں پیدا ہوئے، ان کا

اصل نام شبیر حسن خان جبکہ جوش قلمی نام تھا وہ ملیح آباد کے رہنے والے

تھے، اس لیے اسے اپنے نام کا حصہ بنا لیا۔ تقسیم ہند کے بعد وہ ترک سکونت

کرکے کراچی قیام پذیر ہو گئے۔ جوش ملیح آبادی قادر الکلام شاعر تھے، انہوں

نے پہلا شعر محض نو برس کی عمر میں کہا تھا، انہیں اردو، ہندی، فارسی، عربی

اور انگریزی زبانوں پر عبور حاصل تھا۔ انہیں بلاشبہ الفاظ کا سمندر کہا جاتا تھا،

وہ شاعری کی کثیر کتب کے مصنف تھے، ان کی معرکة الآرا تصانیف میں ” شعلہ

و شبنم، جنون و حکمت، فکر و نشاط، عروس ادب، حرف و حکایت، روح ادب،

آوارہ حق، سنبل و سلاسل“ اور ان کی خود نوشت سوانح یادوں کی برات “ قابل

ذکر ہیں۔ اردو ادب کا یہ عظیم سرمایہ الفاظ کا سمندر جوش ملیح آبادی 22 فروری

1982ء کو انتقال کر گئے اور خالق حقیقی سے جا ملے۔ حق مغفرت فرمائے، الہٰی

آمین

=—–= قارئین =-:کاوش پسند آئی ہو گی، فالو کریں، اپ ڈیٹ رہیں

شاعرجوش ملیح آبادی

=—–=ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )

Leave a Reply