0

سپیکر سندھ اسمبلی سراج درانی گرفتار

Spread the love

نیب نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو گرفتار کرلیا۔بدھ کو نیب کی جانب سے جاری بیان میں تصدیق کی گئی کہ قومی احتساب بیورو کراچی نے نیب راولپنڈی اور نیب ہیڈ کوارٹرز کے انٹیلی جنس ونگ کی معاونت سے سپیکر سندھ اسمبلی آغا سر اج درانی کو گرفتار کرلیا ۔ ملزم پر آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے ۔ آغا سراج درانی کو وفاقی دارالحکومت کے ایک نجی ہوٹل سے گرفتار کیا گیا نیب کافی عرصے سے آغا سراج درانی کے خلاف تحقیقات کررہا تھا اب اہم پیشرفت سامنے آئی ہے جس کی بنیاد پر نیب نے پیپلزپارٹی کے رہنما اور اسپیکر سندھ اسمبلی کی گرفتاری کا فیصلہ کیا،نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ آغا سراج درانی کی کراچی، حیدرآباد، شکارپور اور سکھر میں جائیدادیں ہیں، ساری جائیدادیں ملزم اور ان کے گھر کے 11 افراد کے نام ہیں، آغا سراج درانی نیب کو اپنی جائیدادوں کے ذرائع آمدن سے متعلق مطمئن نہیں کرسکے۔ذرائع کے مطابق نیب نے سیکیورٹی اینڈ ایکسچینج کمیشن پاکستان(ایس ای سی پی) سے آغا سراج درانی اور ان کے اہلخانہ کی کمپنیوں کا ریکارڈ بھی لے لیا۔ذرائع نے بتایا کہ اس حوالے سے نیب ہیڈ کوارٹر اسلام آباد میں اہم اجلاس ہوا جس میں نیب کراچی کے حکام بھی موجود تھے ۔دوسری جانب نیب حکام نے آغا سراج درانی کو اسلام آباد کی احتساب عدالت میں جج محمد بشیر کے روبرو پیش کیا۔نیب نے عدالت کو بتایا کہ مجاز اتھارٹی نے آغا سراج درانی کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے، نیب حکام نے عدالت سے ملزم کے 7 روز کے راہداری ریمانڈ کی استدعا کی جس پر عدالت نے استفسار کیا کہ اتنے روز کیوں مانگے جارہے ہیں؟ ملزم کو جلد از جلد متعلقہ عدالت میں پیش کریں۔نیب نے مؤقف اپنایا کہ موسم کی خرابی کے باعث 7 روز کے ریمانڈ کی استدعا کی گئی ہے۔اس موقع پر آغا سراج درانی نے عدالت کو بتایا کہ ان کی بدھ کی شام 7 بجے کراچی واپسی کی فلائٹ تھی جس پر نیب حکام نے عدالت سے کہا کہ کوشش کی جائے گی کہ ملزم کو آج ہی کراچی واپس بھیج دیا جائے۔عدالت نے نیب کی جانب سے 7 روز کے راہداری ریمانڈ کی استدعا مسترد کرتے ہوئے تین روز کا راہداری ریمانڈ منظور کرلیا اور ملزم کا طبی معائنے کرانے کا بھی حکم دیا۔احتساب عدالت نے ملزم کو تین روز میں کراچی کی متعلقہ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔اسپیکر سندھ اسمبلی سراج درانی نے غیر رسمی گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ جو بھی کہنا ہوگا اب کورٹ میں کہیں گے۔آغا سراج درانی نے کہا کہ مجھے گرفتاری کے بارے میں کوئی اطلاع نہیں دی۔ آغا سراج درانی نے کہا کہ نیب کی طرف سے طلب کیا گیا نہ کوئی اطلاع دی گئی۔نیب نے ایک پروفارما دیا تھا جسے پر کر دیا تھا۔

Leave a Reply