148

سٹاک ایکسچینج میں 45 ارب ڈوب گئے، ڈالر 6 ماہ پہلے والی سطح پر آگیا

لاہور (جتن آن لائن اکنامک رپورٹر) سٹاک ایکسچینج ، ڈالر

کاروباری ہفتے کے پہلے روز پاکستان سٹاک مارکیٹ کا آغاز ایک مرتبہ پھر تنزلی سے

ہوا، تفصیلات کے مطابق مندی کے باعث حصص مارکیٹ 40700، 40600، 40500 کی نفسیاتی

حدیں گرگئیں، کاروبار کے اختتام پر پاکستان سٹاک مارکیٹ 289.85 پوائنٹس کی کمی کے بعد

40442.80 پوائنٹس کی سطح پر پہنچ کر بند ہوا، کاروبار میں 0.72 فیصد گراوٹ دیکھی گئی جبکہ

حصص کی مالیت میں 45 ارب روپے سے زائد کی کمی بھی ریکارڈ کی گئی۔ دوسری طرف روپے

کے مقابلے میں ڈالر کی قدر چھ ماہ کی کم ترین سطح پر آگئی، انٹر بینک میں کاروبار کے اختتام پر

ڈالر کی لین دین 10 پیسے کم ہوکر 154 روپے 96 پیسے پر بند ہوئی۔ اس کیساتھ ساتھ اوپن مارکیٹ

میں ڈالر 20 پیسے سستا ہو کر 154 روپے 90 پیسے کا ہوگیا۔ 6 ماہ میں ڈالر کی قیمت میں تقریباً 8

روپے 60 پیسے کی کمی ہوئی ہے۔

یاد رہے پاکستان کی معاشی صورت حال پہلے تشویشناک حد تک غیر مستحکم ہو چکی تھی- گزشتہ ایک ماہ سے

قریباَ تمام عالمی مالیاتی ادارے اس ضمن میں اطمینان بخش رپورٹس جاری کر رہے ہیں کہ پاکستان معاشی

حوالے سے خطرناک صورت حال سے نکل آیا ہے- تاہم ملک میں سیاسی غیر یقینی کی وجہ سے پاکستان

سٹاک ایکس چینج پر اس کے روز مختلف اثرات مرتب ہوتے ہیں گزشتہ روز بھی کچھ ایسی صورت حال

رہی- سٹاک ایکس چینج میں اتار چڑھائو کی وجہ سے ملکی معاشی حالت کو ماپا جانا درست نہیں-

سٹاک ایکسچینج ، ڈالر

اپنا تبصرہ بھیجیں