سندھ میں مکمل لاک ڈاون ، خیبر پختونخوا کی جزوی بندش کا فیصلہ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لاہور، کراچی ، پشاور، اسلام آباد(سٹاف ،جنرل رپورٹرز،مانیٹرنگ ڈیسک )کرونا وائرس کے سبب

سندھ میں 14روز اور خیبر پختونخوا میں تین دن کیلئے لاک ڈاؤن کرنے کا فیصلے کرلئے گئے جن

کا اعلان آج کسی بھی وقت متوقع ہے ، جبکہ پنجاب حکومت نے صوبہ بھر میں آج سے دو روز

کیلئے شاپنگ مالز اور سیاحتی مقامات مکمل طور پر بند کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے اس کا اطلاق

بھی شروع کر ا دیا۔ وفاقی دارالحکومت میں بھی کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے آج سے 15روز

تک دفعہ 144نافذ کر دیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت نے کرونا وائرس کے سبب

صوبے بھر میں لاک ڈاؤن کرنے کا اصولی فیصلہ کرلیا، لاک ڈاؤن کا اطلاق آج 22 ما رچ کی رات

12 سے ہوگا۔اس حوالے سے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیر صدارت ایک اہم اجلاس منعقد ہوا

جس میں اس با ت کا فیصلہ کیا گیا۔ فیصلے کے مطابق صوبے بھر میں تمام صنعتیں، ادارے، دکانیں

بند رہیں گی ،تاہم اشیائے ضروریہ پر اس کا اطلاق نہیں ہو گا، سبز ی، پھل، دودھ، بیکری، میڈیکل

اسٹورز، راشن کی دکانیں کھلی رہیں گی۔ذرائع کے مطابق اس لاک ڈاؤن کا اطلا ق 14 روز تک ہو

سکتا ہے ، یہ فیصلہ صوبے کے عوام کو محفوظ رکھنے کیلئے کیا گیا جس کا مقصد کرونا وائرس

مزید پھیلنے سے روکنا ہے، وزیراعلیٰ سندھ سیّد مراد علی شاہ نے قانون نافذ کرنیوالے حکام کو

اعتماد میں لے لیا۔ شہریوں کے بلاضرورت گھروں سے نکلنے پرپابندی ہوگی۔دوسری طرف کرونا

وائرس کی صورتحال کے پیش نظر گورنر ہاؤس سندھ کو 2 ہفتوں کیلئے بند کرنے کا اعلان کر دیا

گیا، گورنر ہاؤس کے عملے کو بھی چھٹی پر بھیج دیا گیا، صرف انتہائی ضروری افسران وعملہ

گورنر ہاوس میں ڈیوٹی دیگا ۔ گورنر سندھ عمران اسماعیل کا کہنا تھاآج اتوار تک لاک ڈاؤن سے

متعلق فیصلہ کرلیا جائیگا۔ سندھ حکومت کے اقدامات کو سنجیدہ نہیں لیا گیا ، ایک گھر سے ایک آدمی

کو نکلنے کی اجازت دی جائیگی۔ لاک ڈاؤن کے دوران کریانہ، میڈیکل سٹورکھلے رہیں گے، ابھی

تک ڈیٹیل پلان تیارنہیں ہوا، لوگوں کوبارباراپیل کی جارہی ہے گھروں میں رہیں، کوشش کی جائیگی

لوگوں کو کم سے کم تکلیف ہو۔ لاک ڈاؤن کے حوا لے سے سندھ حکومت جوبھی فیصلہ کرے

گی،ساتھ دیں گے، لوگ اس معاملے کو سیریس نہیں لے رہے۔ادھر ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ

وہاب نے بھی سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا مشکل فیصلے کرنے کی

گھڑی آگئی ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ کی گورنر، کور کمانڈر، ڈی جی رینجرز اور آئی جی سندھ سے

لوگوں کو گھروں میں رکھنے کے حکم پرعملدرآمد سے متعلق بات چیت کی گئی ہے۔ سندھ حکومت

یقینی بنائے گی کہ گروسری اورمیڈیکل سٹورکھلے رہیں۔لاک ڈائون کے فیصلے کا اعلان آج کیا

جائیگا۔اسی طرح خیبر پختونخوا میں بھی لاک ڈاؤن کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، جو تین روز کیلئے

ہوگا۔ اس فیصلے کے تحت صوبہ بھر میں تمام صنعتیں ،ادارے ، دکانیں ، شاپنگ مالز،سیاحتی مقامات

بند رہیں گے ، عوام کو اس دوران گھروں میں رہنے کی ہدایت کی گئی ہے، جبکہ صوبہ سندھ اور

بلوچستان کے بعد پنجاب حکومت نے صوبے بھر میں آج سے شاپنگ مالز اور سیاحتی مقامات دو

روز کیلئے بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔اس ضمن میں وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد اور

صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم بخت جواں، صوبائی وزیر میاں اسلم اقبال کیساتھ پریس کانفرنس

کرتے ہوئے اعلان کیا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بز د ار کے حکم پر آج رات 9 بجے تا منگل

صبح 9 بجے تک شاپنگ مالز بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس کولاک ڈاؤن نہیں کہا جا سکتا،

سماجی میل جول میں فاصلے ہی وبا سے بچاؤ کا بہترین طریقہ ہے۔ شہری آئندہ 2 روز اپنے گھروں

میں رہیں، میڈ یکل سٹورز، سبزی منڈی، کریانہ سٹورز کھلیں رہیں گے۔ پبلک ٹرانسپورٹ پر کوئی

پابند ی نہیں کی جا رہی۔ بیکریز،دودھ کی دکانیں، پولٹری کی دکانیں کھلی رہیں گی ۔ اقتصادی پیکیج

کے صوبائی وزیر خزانہ مخدوم ہاشم بخت جواں کی سربراہی میں کمیٹی کام کر رہی ہے۔صوبائی

وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا پنجاب میں کرونا مریضوں میں کسی کی حالت تشویشناک

نہیں ، قرنطینہ سینٹرز میں مکمل سہولتیں فراہم کی جا رہی ہیں۔مزید برآں خیبر پختونخوا حکومت نے

بڑا فیصلہ کرتے ہوئے تمام مارکیٹ اور شاپنگ مالز 22 مارچ تا 24 مارچ تک بند رکھنے کا فیصلہ

کیا ہے، مارکیٹ اور شاپنگ مال پیر صبح 9 بجے سے بند ہوں گی۔اعلامیہ کے مطابق ہوٹلوں سے ہوم

ڈلیوری کی سہولت برقرار رہے گی، بیکری، تندور، سبزی منڈی، کریانہ کی دکانیں کھلی رہیں گی،

ورکشاپ، پٹرول پمپس، گوشت کی دکانیں بھی پابندی سے مستثنیٰ ہونگی، پھلوں کی دکانیں اور آٹے

کی چکی بھی کھلی رہیں گی۔دوسری طرف کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے وفاقی

دارالحکومت اسلام آباد میں دفعہ 144 نافذ کردی گئی۔انتظامیہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے

مطابق تمام بازار، شاپنگ مالز اور ریستوران رات 10 بجے تک بند کردیے جائیں گے، میڈیکل

اسٹورز، ڈسپنسریز اور کلینکس ،کریانہ اسٹورز، بیکریز، آٹا چکی، تندور دودھ کی دکانیں، پیٹرول

پمپس اور گوشت کی دکانوں پر پابندی کا اطلاق نہیں ہوگا۔نوٹیفکیشن کے مطابق بیوٹی پارلرز، حجام

کی دکانیں بند رہیں گی ،دفعہ 144 کا نفاذ 15 دن کیلئے ہوگا۔دریں اثناء وفاقی دارالحکومت اسلام آباد

میں دفعہ 144 نافذ کر دی گئی ہے، تمام شاپنگ مالز، مارکیٹس اور ریسٹورنٹس 10 بجے بند کرنا ہو

نگے ۔ڈپٹی کمشنر کا کہنا ہے کہ میڈیکل سٹورز، بیکریز،تنور، ملک شاپس اور پٹرول پمس پابندی سے

مستثنیٰ ہوں گے، خلاف ورزی کرنیوالوں کیخلاف کارروائی ہو گی۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply