سندھ حکومت کو چھیڑا گیا تو عمران حکومت بھی نہیں رہے گی ، پیپلز پارٹی

Spread the love

پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما سید خورشید شاہ کا کہنا ہے بلاول بھٹو زرداری کی گرفتاری خطرناک کھیل ہوگا اور اگر ایسا کیا گیا تو اس سے ملک افراتفری کا شکار ہوگا۔میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انکا کہنا تھا عمران خان ملک میں بحران اور غیریقنی صورتحال پیدا کر رہے ہیں، انہوں نے سیاستدانوں کی گرفتاری کے علاوہ کچھ نہیں کیا اور ان سے وہ کام کرائے جا رہے ہیں جو کوئی سیاستدان نہ کرتا۔ سندھ میں ان ہاو¿س تبدیلی ممکن نہیں کیونکہ مفروضوں کی بنیاد پر کیسز بنائے گئے ہیں اور سندھ میں گورنر راج لگانا ممکن نہیں، آئین و قانون میں اس کی کوئی گنجائش نہیں، مارشل لاءکے ذریعے آئین ختم کر کے گورنر راج لگایا جاسکتا ہے اور اگر آئین کو چھیڑا گیا تو پاکستان کی سالمیت کو خطرہ لاحق ہوگا۔ ملک میں ون پارٹی سسٹم بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے اور لگتا ہے سویلین مارشل لاء لگانے کی جانب جایا جارہا ہے اور جس طرح کی سیاست آج ہورہی ہے اس سے ایک پارٹی کو مضبوط اور دیگر کو کمزور کیا جارہا ہے۔ عمران خان عوامی مینڈیٹ سے اقتدار میں نہیں آئے بلکہ انہیں لایا گیا اور انہیں جیسے لایا گیا وہ سب جانتے ہیں۔ادھرمشیر اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا پانچ مہینوں کے دوران حکومتی کارکردگی نے ثابت کردیا تحریک انصاف تباہی کا نام ہے، پیپلز پارٹی میں فارورڈ بلاک کی باتیں دس گیارہ سال سے چل رہی ہیں لیکن وقت نے ثابت کیا کوئی ایم پی اے پیپلز پارٹی کی قیادت کو چھوڑ کر نہیں گیا۔ سندھ حکومت ہماری رہے گی،تاہم وفاق میں چار ایم این ایز ادھر ادھر ہوجائیں تو ان کا وزیراعظم بچ نہیں پائے گا۔ وفاقی حکومت کی طرف سے جاری غیر جمہوری ہتھکنڈوں کو سندھ حکومت پر یلغار قرار دیتے ہوئے انکا مزید کہنا تھا ہم کسی دباو¿ میں نہیں آئیں گے اور عوام کے مسائل کو اجاگر کرتے رہیں گے اگر سندھ پر یلغار کی گئی تووفاقی حکومت بھی نہیں رہے گی۔اگرمحض تحقیقات کی بنیاد پر نام ای سی ایل میں شامل کئے جاتے ہیں تو وزیر اعظم عمران خان ، وزیراعلیٰ کے پی کے ، وزیر دفاع پرویز خٹک اور علیم خان ودیگر کے نام ای سی ایل میں کیوں نہیں شامل کئے گئے ۔

Leave a Reply