سری لنکا میں نیلم پتھروں کا بڑا ذخیرہ دریافت، ہیروں کی چور خاتون کو سزاء

سری لنکا میں نیلم پتھروں کا بڑا ذخیرہ دریافت، ہیروں کی چور خاتون کو سزاء

Spread the love

کولمبو، لندن (جے ٹی این آن لائن دلچسپ و عجیب نیوز) سری لنکا میں نیلم

سری لنکا میں ایک گھرمیں کنویں کی کھدائی کے دوران جا بجا نیلم پتھروں سے

جڑا ایک بہت بڑا پتھرملا ہے جس کی ابتدائی مالیت دس کروڑ ڈالر یا 15 ارب

روپے بتائی جا رہی ہے۔ دوسری طرف برطانیہ کے سب سے بڑے سٹور سے

عملے کی موجودگی میں 2016ء میں ان کی ناک کے نیچے سے 4 ملین پاونڈز

کے ہیرے چرانے والی خاتون کو جرم ثابت ہونے پر اب 2021ء میں ساڑھے پانچ

سال قید کی سزا سنا دی گئی ہے، لیکن ہیرے کہاں ہیں وہ اب تک معلوم نہیں ہو

سکا-

=–= ایسی ہی مزید دلچسپ و عجیب خبریں =–= پڑھیں =–=

تفصیلات کے مطابق سری لنکا میں ایک گھر سے دریافت ہونیوالے پتھر کے

حوالے سے مجاز اداروں کا کہنا ہے شاید یہ دنیا کا سب سے بڑا ذخیرہ ہے جہاں

اعلی معیار کے نیلم اتنی بڑی تعداد میں ایک ہی جگہ جمع ہیں۔ بیضوی پتھر کا کل

وزن 500 کلوگرام سے زائد ہے جس پر لگ بھگ 25 لاکھ قیراط کے قیمتی پتھر

جڑے ہیں۔ مقامی افراد کے مطابق یہ پتھر رتنا پورا کے علاقے میں ایک مکان کے

عقب میں کنویں کی کھدائی کے دوران برآمد ہوا ہے۔

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

سری لنکا میں نیلم پتھروں کا بڑا ذخیرہ دریافت
یہ علاقہ پہلے ہی نیلم کے ذخائر کی وجہ سے عالمی شہرت رکھتا ہے۔ جوہری

ماہرین نے اسے قسمت والا نیلم کا نام دیا ہے جس پر لگے جواہر کی رنگت ہلکی

نیلی ہے۔ گھر اور پتھر کے مالک گمج نے بتایا کہ پہلے کنواں کھودنے والے نے

مجھے بتایا کہ اسے کچھ نایاب نیلم ملے ہیں جنہیں اسٹار سیفائر بھی کہا جاتا ہے۔

گمج کی تیسری نسل جواہرات کے کاروبار سے منسلک ہے۔ پتھر اور مٹی کے اس

ڈھیر کو صاف کر کے نیلم نکالنے میں ایک سال کا عرصہ لگا۔ صفائی کے دوران

متواتر پتھر گرتے رہے اور سب بہت بلند معیار کے تھے، تاہم ان کی تصدیق اور

سرٹفکیشن کا عمل اب بھی باقی ہے۔ جہاں سے یہ ذخیرہ ملا ہے اس کا نام رتنا

پورا ہے جس کے معنی جواہرات کے شہر کے ہیں۔ سری لنکا نے گزشتہ برس

ہیرے جواہرات کی فروخت اور تراش خراش سے نصف ارب ڈالر کمائے، تاہم

دیگر ماہرین نے کہا ہے کہ انہوں نے نیلم کا اتنا بڑا ذخیرہ پہلے کبھی نہیں دیکھا،

اگرچہ اب بین الاقوامی ماہرین اس کا جائزہ لیں گے لیکن توقع ہے کہ یہ ذخیرہ

سری لنکا کی معیشت میں بہتری کی وجہ بنے گا۔

=-،-= روس کی امیر ترین خاتون اینا کا کردار ہوا بے نقاب

برطانیہ کے سب سے بڑے سٹور سے عملے کی موجودگی میں ان کی ناک کے

نیچے سے ایک خاتون 4 ملین پاونڈز کے ہیرے چرا کے غائب ہو گئی۔ کئی سالوں

کی تلاش کے بعد 2016ء میں ہوئی اس چوری کی ملزمہ کو اب 2021ء میں

ساڑھے پانچ سال قید کی سزا سنا دی گئی ہے، لیکن ہیرے کہاں ہیں وہ اب تک

معلوم نہیں ہو سکا۔ 2016ء کی ایک شام روس کی امیر ترین خاتون اینا کے کردار

میں وسطی لندن کے 1978ء سے بنے ہیروں کے سٹور میں آئیں۔ اور دیکھتے ہی

دیکھتے ہیروں کے بیگ سے اپنے بیگ کو تبدیل کر کے عملے کو گڈ بائے کہہ

کر روانہ ہو گئیں۔ چوری ہوئے ہیروں میں سات قیمتی پتھر تھے جن میں ایک کی

قیمت 2.2 ملین پاونڈ تھی۔ چوری کے بعد سٹور نے سی سی ٹی وی فوٹیج بھی

جاری کی، جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کیسے بڑے آرام سے عملے کی خاتون

کے سامنے اینا نے ہیروں سے بھرا بیگ سیکنڈز میں تبدیل کیا۔

=-= پڑھیں، جنوبی افریقہ میں دنیا کا تیسرا بڑا ہیرا دریافت، صدر مسیسی کو پیش

پولیس کے مطابق خاتون چور دو بہنوں کا گینگ تھا، جو رومانیہ میں پیدا ہوئیں،

اور پھر فرانس گئیں جہاں سٹورز سے کپڑے چرانے کا آغاز کیا اور ایسے وہ

بینکوں اور پھر ہیروں کی چوری کی مہارت تک پہنچیں۔ پولیس نے جس بہن کو

گرفتار کیا اس کی شناخت لولو لاکاٹوس سے ہوئی جس کا کہنا تھا کہ اینا وہ نہیں

اس کی بہن تھی جو 2019ء میں بائیک حادثے میں جان کی بازی ہار گئی تھی۔

لیکن کئی ثبوتوں کے بعد سیکورٹی اہلکاروں نے اس بات کی تصدیق کی کہ 60

سالہ لولو لاکاٹوس ہی اینا تھی جس نے 95 کروڑ مالیت کے ہیرے چوری کیے۔

سری لنکا میں نیلم ، سری لنکا میں نیلم ، سری لنکا میں نیلم ، سری لنکا میں نیلم

Leave a Reply