ideology of unity

سب کی بھلائی کیلئے ایک اور فرد واحد کی بھلائی کیلئے سب کا نظریہ

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لاہور(جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) سب کی بھلائی

چہرے کے ماسک اور جراثیم کش سامان تقسیم کرتے ہوئے، شمال مغربی چینی صوبے گانسو کی لان چو یونیورسٹی کے ایک پاکستانی کالج کونسلر، نبیل پرویز ہاسٹل کے ایک کمرے کے بعد دوسرے کمرے میں، بین الاقوامی طلباء کی جانچ پڑتال میں مصروف ہیں۔ بنیادی میڈیسن میں بیچلر اور ماسٹر ڈگری مکمل کرنے کے بعد، 31 سالہ پرویز یونیورسٹی کے سکول برائے بین الاقوامی ثقافتی تبادلہ، میں تقریبا ایک سال سے کام کررہے ہیں۔ وہ انتظامی عملے میں شامل پہلے غیر ملکی ہیں، جنہیں یونیورسٹی نے ملازمت فراہم کی ہے۔

——————————————————————————-
یہ بھی پڑھیں : ہوبے کا 39 شاہراہیں آمدورفت کیلئے بحال کرنے کا اعلان
——————————————————————————-
ایک آہنی دوست کی اینٹی وائرس کہانی

اپنی مادرِ علمی سے محبت کا اظہار کرتے ہوئے وہ گریجوئیشن کے بعد انٹرنیشنل سکول کی انتظامیہ میں شامل ہو گئے- حالانکہ یہ ان کی والدہ کی خواہش کے برعکس تھا، جو چاہتی تھیں، کہ ان کا بیٹا وطن واپس آئے۔ پرویز نے کہا کہ چین میں مقامی لوگوں کیساتھ زندگی گزارانا بہت آسان ہے، اور میں لان چو کی کھانے پینے کی عادات کے مطابق ڈھل گیا ہوں، کیونکہ شہر میں مجھ جیسے مسلمانوں کی ایک بڑی تعداد قیام پذیر ہے۔

چین غیر ملکیوں کیلئے مواقع سے بھرپور

ان کا مزید کہنا تھا کہ چین غیر ملکیوں کیلئے مواقع سے بھرا ہوا ہے۔ پرویز کی والدہ کو یقین دلایا گیا، اور آخر کار جب انہیں چین کی کرونا وائرس کیخلاف کوششوں، سے آگاہ کیا گیا، تو وہ پرویز کے موقف سے متفق ہو گئیں، اورانہوں نے اپنے بیٹے کی حوصلہ افزائی کی، کہ وہ سنجیدگی سے کام کرے۔

وائرس کیخلاف جنگ، لان چو میں ہی قیام کا فیصلہ

یونیورسٹی میں بہت سے بین الاقوامی طلباء اور غیر ملکی اساتذہ نے، نوول کرونا وائرس کیخلاف جنگ میں شامل ہونے کیلئے لان چو میں ہی قیام کا فیصلہ کیا۔ حال ہی میں یونیورسٹی میں انگریزی کے استاد کی حیثیت سے ملازمت اختیار کرنے وا لے، 54 سالہ امریکی انتھونی بھی ان میں سے ایک ہیں، جنہوں نے لان چو یونیورسٹی کے فرسٹ ایڈ ہسپتال کو، سانس لینے کے ماسک، ریسپی ریٹر اور میڈیکل دستانی عطیہ کیے۔ انڈونیشیا سے تعلق رکھنے والے طالبعلم ہندرا کورنیا وان نے بھی وطن میں موجود دوستوں کی مدد سے ہسپتال کو چہرے کے ماسک عطیہ کیے۔

چینی حکومت اور معاشرہ عالمی برادری کی مدد میں آگے

پرویز ان کے اچھے کاموں سے دل کی گہرائیوں سے متاثرہوئے ہیں، اور کہتے ہیں کہ انہیں مزید کوششوں کی امید ہے۔ چین میں اس وبا کے خاتمے کے بعد، چینی حکومت اور معاشرہ نوول کرونا وائرس، روکنے کے لئے چین کے آہنی دوست پاکستان، سمیت عالمی برادری کی مختلف شکلوں میں مدد کررہے ہیں۔پاکستان کو طبی سامان عطیہ کیا گیا، اور ماہرین کی ایک ٹیم مارچ کے آخر میں امدادی مشن پر پاکستان بھیجی گئی، جس نے ویڈیو کانفرنسوں کے ذریعے اپنے تجربات شیئر کیے، اور اپنے پاکستانی ہم منصبون کو عملی، اور مخصوص تجاویز پیش کیں۔

قارئین : کاوش اچھی لگے تو شیئر کریں ، اپڈیٹ رہنے کیلئے کریں فالو

سب کی بھلائی کیلئے ایک، اور فرد واحد کی بھلائی کیلئے سب کے نظریہ، کے تحت پرویز کا کہنا ہے کہ وہ اپنے طلباء کی ضروریات پورا کرتے، انکی حوصلہ افزائی اور نفسیاتی مشاورت فراہم کرتے رہیں گے ۔

سب کی بھلائی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply