سانس والی نالیاں بند 0

سیمی فائنل میچ سے قبل خوراک اورسانس والی نالیاں بند ہوچکی تھیں، محمد رضوان

Spread the love

سانس والی نالیاں بند

ڈھاکہ (جے ٹی این آن لائن نیوز) قومی ٹیم کے نوجوان وکٹ کیپر بلے باز محمد رضوان نے انکشاف

کیا ہے آسٹریلیا کے خلاف سیمی فائنل میچ سے قبل خوراک اور سانس والی نالیاں بند ہوچکی تھیں اور

ڈاکٹر نے کہا تھا 20 منٹ تاخیر ہو جاتی تو دونوں نالیاں پھٹ جاتیں۔پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے

جاری ویڈیو میں محمد رضوان نے کہا کہ جہاں تک ریکارڈ کی بات ہے تو مجھے اپنی ذات سے بڑھ

کر اس بات کی زیادہ خوشی ہے کہ یہ ریکارڈ ہمارے پاکستان کے لیے ہیں اور اس ریکارڈ میں رچرڈ

پائی بس، انضمام الحق اور شاہد اسلم میرے حصے دار ہیں۔انہوں نے کہا کہ رچرڈ پائی بس نے ٹی20

میں ذہنی طور پر میری مدد کی، انزی بھائی (انضمام الحق) نے بیٹنگ کے حوالے سے کچھ آئیڈیاز

دیے تھے جبکہ تیسرے فرد شاہد اسلم ہیں جنہوں نے پورا سال میری مدد کی، اس ریکارڈ میں وہ

بھی حصے دار ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ٹی20 کرکٹ کھیلنا ایک چیلنج تھا کیونکہ یہ بات کی جاتی تھی کہ

میں چھوٹے فارمیٹ کا کھلاڑی نہیں ہے، ان سب باتوں کا مقابلہ کرنے کے لیے چیلنج لینا پڑتا ہے اور

سب سے اہم بات یہ ہے کہ ٹیم مینجمنٹ نے مجھے اوپننگ پر بھیجنے کا فیصلہ کیا جو میرے لیے

موزوں رہا۔وکٹ کیپر بلے باز نے کہا کہ میں اپنی حالت کے بارے میں بتانا نہیں چاہ رہا تھا، عجیب

سی حالت تھی، جب ہسپتال گئے تو میری سانس بالکل رکی ہوئی تھی اور ڈاکٹرز نے کہا کہ میری

دونوں خوراک اور سانس والی نالیاں بند ہوچکی تھیں۔انہوں نے کہا کہ ڈاکٹرز نے مجھے اس بارے

میں نہیں بتایا تھا، میں نے ان سے کئی مرتبہ پوچھا لیکن وہ ٹالتے رہے البتہ ایک نرس نے پوچھنے

پر بتایا کہ اگر آپ 20 منٹ لیٹ ہو جاتے تو آپ کی دونوں نالیاں پھٹ جاتیں، آپ کو اب دو راتیں یہاں

رہنا پڑے گا۔ان کا کہنا تھا کہ میرے ای سی جی سمیت کئی ٹیسٹ کیے اور میں وہ سب اس لیے

بخوشی کروا رہا تھا کیونکہ مجھے یقین تھا کہ میں ان کی بدولت ٹھیک ہو جاؤں گا اور ڈاکٹر صاحب

نے مجھ سے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ رضوان آپ پاکستان کے لیے سیمی فائنل کھیلیں جس سے

مجھے ہمت ملی۔

سانس والی نالیاں بند

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply