سانحہ موٹروے، درندوں کی شناخت ہو گئی

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

سانحہ موٹروے

لاہور(جے ٹی این آن لائن نیوز) موٹروے پر خاتون سے بداخلاقی کیس میں بڑی

پیشرفت ہوئی ہے ، دونوں ملزمان کی شناخت ہو گئی،پولیس ڈی این اے ٹیسٹ کی

مدد سے ملزمان کا سراغ لگانے میں کامیاب ہوئی، ملزمان کی گرفتاری کیلئے

ٹیمیں تشکیل دیدی گئیں،جلد ملزمان کو گرفتار کر لیا جائیگا ۔ د و سر ی طرف

موٹروے پر بداخلاقی کا نشانہ بننے والی خاتون نے پولیس کو بیان ریکارڈ کرانے

سے معذرت کرلی ہے۔ تفصیلات کے مطابق گجر پورہ کے قریب موٹروے پر

خاتون کیساتھ بداخلاقی میں ملوث دونوں ملزمان کے ڈی این اے ٹیسٹ میچ ہو گئے

ہیں،دونوں ملزموں کی شناخت عابد اور و قا ر کے ناموں سے ہو گئی ہے جنہوںنے

چند روز قبل خاتون کو رات کی تاریکی میں بچوں کے سامنے بداخلاقی کا نشانہ

بنایا جس کے ملک بھر میں غم و غصے کی شدید لہر نے جنم لیا تھا ۔ گذ شتہ روز

پولیس نے گاڑی سے ڈی این اے سیمپل حاصل کئے جن کو لیبارٹری میں بھیجا گیا

، لیبارٹری سے حاصل ہونیوالی رپورٹ کے مطابق ملزموںکی شناخت عابدعلی

جس کا تعلق فورٹ عباس ضلع بہاولنگر کے گائوں260 جبکہ دوسرے ملزم کا نام

وقار الحسن ہے جو شیخوپورہ کا رہائشی ہے۔پولیس نے دونوں ملزمان کی گرفتاری

کیلئے ٹیمیں تشکیل دیدی ہیں جبکہ ملزمان تک رسا ئی کیلئے ملزمان کے خاکے

بھی جاری کر دئیے گئے ہیں۔دونوں ملزمان عادی مجرم ہیں۔ملزم عابد اس سے

پہلے ایک خاتون اور اس کی بیٹی کیساتھ بداخلاقی میں بھی ملوث پایا گیا تھاجبکہ

دونوں ملزمان ڈکیتیوں کی متعدد وارداتوں میں بھی جیل جا چکے ہیں۔پولیس کا کہنا

ہے جلد ملزمان کو گرفتار کر لیا جائے گا۔دونوں ملزموں کے ڈی این اے بھی میچ

کر گئے ہیں ۔کر یمنل ڈیٹا بیس میں عابد علی 2013ء سے موجود ہے ۔ ادھر پولیس

نے متاثرہ خا تو ن سے بیان ریکارڈ کرانے کیلئے رابطہ کیا تاہم خاتون کے اہلخانہ

نے فی الوقت بیان ریکارڈ کرانے سے معذرت کرلی۔ خاتون کے اہلخانہ کا کہنا ہے

کہ خاتون کی حالت ایسی نہیں کہ وہ بیان ریکارڈ کراسکیں، خاتون کے اہلخانہ کے

یہ بھی پڑھیں: موٹر وے پر مسلح ڈاکوئوں نے گاڑیوں کو لوٹ لیا

انکار کے بعد پولیس تاحال متاثرہ خاتون کا بیان حاصل نہیں کرسکی۔ فوکل پرسن

ایس ایس پی ذیشان اصغر کا کہنا ہے خاتون کی حا لت کو سمجھ سکتے ہیں، متاثرہ

خاتون کا بیان اس وقت قلمبند کریں گے جب ان کیلئے ممکن ہو گا۔2013 ماہ جون

میں ملزم عابد اپنے 4 ساتھیوں کے ہمراہ محمد شکور نامی دیہاتی کے گھر گھس

گیا تھا اور اسلحہ کے زور پر اہل خانہ کو یرغمال بنا کر رسیوں سے باندھ دیا تھا،

اس وقت کی ایف آئی آر کے مطابق ملزمان نے گھر میں موجود ماں بیٹی کو

اجتماعی بداخلاقی کا نشانہ بنایا اور فرار ہو گئے ، اہل علاقہ نے ملزمان کو علاقہ

بدر کرنے پر مجبور کر دیا تھا،جس کے بعد وہ اہل خانہ کے ہمراہ چھانگامانگا میں

رہنے لگا۔

سانحہ موٹروے

قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply