سانحہ ساہیوال پر جوڈیشل کمیشن کی ضرورت نہیں

Spread the love

وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے سانحہ ساہیوال پر جوڈیشل کمیشن کے فوری قیام کا مطالبہ مسترد کردیا ۔تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا سانحہ ساہیوال پر جوڈیشل کمیشن کی فوری طور پر ضرورت نہیں ہے، تحقیقات شفاف انداز میں آگے بڑھ رہی ہے۔ اہلکاروں کےخلاف کارروائی کرچکے ہیں، 2افسران کےخلاف معطلی کے بعد انضباطی کارروائی ہورہی ہے، جے آئی ٹی کی تحقیقات میں مسئلہ ہوا تو پھر جوڈیشل کمیشن کے معاملے کو دیکھیں گے۔ واقعے میں ملوث ہر شخص کے خلاف کارروائی ہورہی ہے، سانحہ ساہیوال سے متعلق 2روز میں دوبارہ بریفنگ لوں گا، لواحقین کو 2کروڑ روپے کی رقم دیں گے۔
قبل ازیں لاہور میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے انہوں نے لاہور سمیت بڑے شہروں کے داخلی و خارجی راستوں پر ٹریفک کی صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے پلان مرتب کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے متعلقہ محکموں اور اداروں کو جامع منصوبہ بندی کرکے حتمی سفارشات پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا لاہور اور دیگر بڑے شہروں کے داخلی و خارجی راستوں پر ٹریفک رواں دواں رکھنے کیلئے موثر اقدامات کئے جائیں۔ موثر ٹریفک مینجمنٹ اور ٹریفک ری انجینئرنگ کے ذریعے داخلی و خارجی راستوں پر ٹریفک کے نظام کو بہتر بنانا ہوگا۔موثر ٹریفک مینجمنٹ سے شہروں میں آنے اور جانے والے لوگوں کو سہولت ملے گی۔ ٹریفک مینجمنٹ کا بہترین نظام مہذب معاشرے کی پہچان ہوتا ہے لہٰذاداخلی و خارجی راستوں پر ٹریفک نظام بہتر بنانے کیلئے عملی اقدامات کےے جائےں اوراس ضمن مےںجامع پلاننگ کر کے عملدر آمد کےا جائے تاکہ لاہور سمےت بڑے شہروں مےں آنے اورجانےوالے شہرےوں کو سہولت مل سکے۔ ٹریفک مینجمنٹ کی بہتری سے شہریوں کو ٹریفک کے مسائل سے نجات دلانا متعلقہ ادارو ںکی ذمہ داری ہے۔داخلی و خارجی راستوں پر عوام کی سہولت کیلئے ایسے اقدامات اٹھائے جائیں جن سے آمد و رفت میں شہریوں کو آسانی ہو۔ متعلقہ اداروں اور محکموں کو آبادی بڑھنے کے ساتھ ٹریفک مینجمنٹ کے نئے چیلنجز پر پورا اترناہوگا۔

Leave a Reply