ریکارڈ201اموات

کورونا،ایک دن میں ریکارڈ201اموات

Spread the love

ریکارڈ201اموات

لاہور ،اسلام آباد (جے ٹی این آن لائن نیوز) نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے

تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق ملک بھر میں کورونا وائرس سے 201 افراد

جاں بحق ہوگئے، جس کے بعد اموات کی تعداد 17 ہزار 530 ہوگئی۔ پاکستان

میں کورونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 8 لاکھ 10 ہزار 231 ہوگئی۔گذشتہ 24

گھنٹوں کے دوران 5 ہزار 292 نئے کیسز رپورٹ ہوئے، پنجاب میں 2 لاکھ 96

ہزار 144، سندھ میں 2 لاکھ 80 ہزار 356، خیبر پختونخوا میں ایک لاکھ 15

ہزار 596، بلوچستان میں 21 ہزار 945، گلگت بلتستان میں 5 ہزار 280، اسلام

آباد میں 74 ہزار 131 جبکہ آزاد کشمیر میں 16 ہزار 779 کیسز رپورٹ

ہوئے۔ملک بھر میں اب تک ایک کروڑ 16 لاکھ 82 ہزار 14 افراد کے ٹیسٹ کئے

گئے، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 46 ہزار 678 نئے ٹیسٹ کئے گئے، اب تک 7

لاکھ 4 ہزار 494 مریض صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ 5 ہزار 214 مریضوں کی

حالت تشویشناک ہے۔دریں اثنا اپیکس کمیٹی پنجاب نے لاہور سمیت پنجاب کے کئی

شہروں میں مکمل لاک ڈاو¿ن کی تجویز دے دی۔ اجلاس میں 8 فیصد سے

زائد شرح والے شہروں میں بھی پابندیاں سخت کرنے پر اتفاق کیا گیا۔وزیراعلیٰ

پنجاب کی زیر صدارت صوبائی ایپکس کمیٹی کا اہم اجلاس ہوا جس میں کورونا

کی تیسری لہر سے نمٹنے کیلئے کئے جانے والے اقدامات کا جائزہ لیا گیا۔

شرکائ نے کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز، شرح اموات، کورونا ایس او پیز

پر موثر عملدرآمد نہ ہونے پر تحفظات کا اظہار کیا۔ اجلاس میں جاں بحق افراد

کے لواحقین سے دلی ہمدردی اور افسوس کا اظہار کیا گیا جبکہ کورونا

مریضوں کے علاج معالجے کیلئے شاندار خدمات پر ہیلتھ پروفیشنلز کو خراج

تحسین پیش کیا۔اجلاس میں کورونا ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد یقینی

بنانے کا فیصلہ کیا گیا۔ لاہور اور بڑے شہروں میں ہسپتالوں کو صرف کورونا

کیلئے مختص کرنے کی تجویز کا جائزہ لیا گیا۔ آکسیجن کی سپلائی کو تسلسل

کے ساتھ برقرار رکھنے کیلئے ہر ضروری اقدام اٹھانے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ عوام کی زندگیوں کی حفاظت کیلئے کئے جانے

والے اقدامات کی خلاف ورزی برداشت نہیں کی جائے گی۔عسکری قیادت کی

جانب سے سول حکومت کو بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرائی گی اور فیصلوں

پر عملدرآمد کیلئے مشترکہ کاوشیں بروئے کار لانے پر اتفاق کیا۔ مارکیٹوں اور

بازاروں کی بندش کے اوقات پر انتظامی اقدامات کے ذریعے موثر عملدرآمد کرایا

جائے گا۔کراچی کے ضلع وسطی کے چار ٹاونز کے رہائشی یونٹس میں کورونا

کیسز میں اضافہ کے پیش نظر 11 مئی تک مائیکرو سمارٹ لاک ڈاو¿ن نافذ کر

دیا گیا۔ڈپٹی کمشنر ضلع وسطی کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے

کہ ضلع وسطی کے چار ٹاونز گلبرگ، نارتھ کراچی، لیاقت آباد اور نارتھ ناظم آباد

کے مختلف علاقوں اور رہائشی یونٹس میں مائیکرو سمارٹ لاک ڈاون لگایا گیا

ہے۔ لاک ڈاون ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر کی جانب سے ہاٹ سپاٹ ایریاز کی نشاندہی

پر لگایا گیا۔ لاک ڈاو±ن کے دوران متاثرہ علاقے میں غیر ضروری نقل و

حرکت پر پابندی ہوگی جبکہ علاقے میں تمام کاروباری و صنعتی سرگرمیاں

معطل رہیں گی۔ متاثرہ علاقوں میں آنے اور جانے والے تمام افراد کو ماسک پہننا

لازمی ہوگا۔دوسری جانب کراچی کے مختلف علاقوں میں ایس او پیز کی خلاف

ورزی پر ضلعی انتظامیہ متحرک ہوگئی۔ کریم آباد مینا بازار کی 1350،

الیکٹرونک مارکیٹ کی 63 دکانیں سیل کی گئی۔ ضلع وسطی میں ہی نارتھ ناظم آباد

میں شاپنگ مال کی 1210 دکانیں کو سیل کیاگیا۔ ضلع جنوبی میں ایس او پیز کی

خلاف ورزی پر 167 دکانیں سمیت 4 ریسٹورنٹس سیل کر دیئے گئے۔ بھاری

جرمانے عائد کیے گئے۔خیبر پختونخوا میں کورونا کے بڑھتے کیسز کو دیکھتے

ہوئے ہائی رسک اضلاع میں مکمل لاک ڈاون کے نفاذ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخوا میں کورونا کے پھیلا کو روکنے کے لیے جن 8

اضلاع میں لاک ڈاون لگایا جارہا ہے ان میں پشاور، لوئر دیر، مردان، نوشہرہ،

ملاکنڈ، چارسدہ اور صوابی شامل ہیں جبکہ مردان میں پہلے لاک ڈاون لگایا جا

چکا ہے۔ ان اضلاع میں کورونا وائرس کے مثبت مریضوں کی تعداد میں اضافہ

ہورہا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ این سی او سی نے لاک ڈاون کی سفارشات تیار

کرلی ہیں، لاک ڈاون 2 مئی سے لگنے کا امکان ہے تاہم اس کا حتمی فیصلہ

وزیراعظم کی زیر صدارت اجلاس میں ہوگا۔ لاہور کے تمام سرکاری اسپتالوں

کے وینٹی لیٹرز 96 فیصد بھر گئے ہیں 4 فیصد وینٹی لیٹرز موجود ہیں مگر وہ

وی وی آئی پیز کے لئے خالی رکھے گئے ہیں ضرورت مند مریضوں کو نہیں

دیئے جا رہے ، جس کے باعث آکسیجن بیڈز پر درجنوں تشویشناک مریض وینٹی

لیٹرز کے منتظر ہیں۔ لاہور کے تمام سرکاری اسپتالوں کے وینٹی لیٹرز 96 فیصد

استعمال میں ہیں ، جس کے باعث شہر میں کورونا کے لئے مختص کئے گئے 8

سرکاری اسپتالوں میں وینٹی لیٹرز کا حصول مشکل ہو گیا ہے۔میو اسپتال کے 84

وینٹی لیٹر پر 81 تشویشناک مریض زیرعلاج ہیں اور سروسز اسپتال میں کورونا

کے مختص 32 وینٹی لیٹرز پر بھی مریض موجود ہیں جبکہ گورنمنٹ نواز

شریف اسپتال یکی گیٹ کو دیئے گئے 10 وینٹی لیٹرز اورپی کے ایل کے لئے

مختص کئے گئے 8 وینٹی لیٹرز بھی تا حال زیر استعمال ہیں۔کوٹ خواجہ سعید

اسپتال میں مختص کئے گئے تینوں وینٹیلیٹرز پر مریض موجود ہیں جبکہ جنرل

اسپتال میں 30 وینںٹی لیٹر پر 25 مریض اور جناح اسپتال کے 40 وینٹی لیٹرز پر 33

مریض زیر علاج ہیں۔اسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ گنگارام اسپتال کے 20

وینٹی لیٹرز پر کورونا سے متاثرہ 15 خواتین زیر علاج ہیں، مجموعی طور پر

تمام سرکاری اسپتالوں میں سوا کروڑ کی آبادی والے شہر میں 18 وینٹیلیٹر

خالی ہیں ، جس کی وجہ سے آکسیجن بیڈز پر درجنوں تشویشناک مریض وینٹی

لیٹرز کے منتظر ہیں۔کورونا وائرس کے جان لیوا حملون کے باعث لاہور میں

مزید 49 افراد موت کی آغوش میں چلے گئے، 24 گھنٹوں کے دوران 1257

نئے مریض رپورٹ ہوئے ۔جبکہ اعداد و شمار کے مطابق پنجاب بھر میں کورونا

سے مزید 127 اموات ریکارڈ کی گئیں ہیں، 2 ہزار 676 نئے کیس سامنے آ

گئے۔ موذی وائرس سے پنجاب میں ہلاکتوں کی تعداد 8 ہزار 224 ہو گئی۔

محکمہ صحت کا بتانا ہے کہ لاہور میں 1257، ننکانہ 2، قصور 24، شیخوپورہ 35

، راولپنڈی 108، جہلم 14، اٹک 2، چکوال 20، مظفرگڑھ 17، حافظ آباد 26 اور

گوجرانوالہ 13 میں کیسز رپورٹ ہوئے ۔دوسری طرف وفاقی وزیر اطلاعات

فواد چودھری نے کہا ہے کہ ملک میں کورونا کیسز کم نہ ہوئے تو مزید سخت

اقدامات کرنا پڑیں گے، صورت حال میں بہتری کیلئے تیاری جاری ہے۔ فواد

چودھری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ بھارت

میں کورونا کی بگڑتی صورتحال کے پیش نظر انڈیا سے آمدو رفت پر مکمل

پابندی عائد ہے، یہ پابندی اپریل کے تیسے ہفتے سے لاگو ہے اور اس پر مکمل

عمدرآمد ہو رہا ہے۔

ریکارڈ201اموات

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply