0

روس کا امریکہ کو منہ توڑ جواب ، میزائل معاہدہ ختم کرنے کا اعلان

Spread the love

روس کے صدر ولادیمیر پیوٹن نے بھی امریکا کے فیصلے کے فوری بعد ردعمل دیتے ہوئے دہائیوں پہلے سرد جنگ کے دوران کیے گئے میزائل معاہدے کو معطل کرنے کا اعلان کر دیا۔

ولادیمیر پیوٹن نے امریکا کی جانب سے دی گئی ڈیڈ لائن کے حوالے سے کہا ہمارے امریکی شراکت داروں نے اعلان کیا ہے وہ معاہدے کو معطل کررہے ہیں اور ہم بھی اپنی طرف سے معطل کرنے کا اعلان کرتے ہیں،پیوٹن نے وزیرخارجہ سرگئی لاروف اور سرگئی شوئیگو سے ملاقات کے دوران کہا روس بھی امریکا کےساتھ اسلحے کی تخفیف کےلئے مزید مذاکرات کی کو شش نہیں کرے گا۔ہم اس وقت تک انتظار کریں گے جب تک ہمارے حصہ دار کے رویے میں اہم موضوع پر ہمارے ساتھ مساوی اور معنی خیز مذاکرات کےلئے پختگی نہیں آتی۔

یاد رہے سابق امریکی صدر رونالڈ ریگن کی مداخلت پر سوویت یونین کے آخری رہنما میخائیل گوباچوف نے1987 میں روسی میزائل کے مسائل پر انٹرمیڈیٹ رینج نیوکلیئر فورس کا معا ہد ہ کیا تھا لیکن دونوں ممالک کی جانب سے ایک دوسرے پر طویل عرصے سے معاہدے کی خلاف ورزی کے الزامات عائد کیے جاتے رہے ہیں۔دوسری طرف یورپ امریکہ اور روس کی جانب سے میزائل معاہدے کے خاتمے پر جہاں خوف کا شکار ہے وہیں اس نے دونوں ممالک کو معاہدہ برقرار رکھنے اور مکمل پاسداری کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ یورپی ممالک کو خدشہ ہے اس سے دنیا میں ہتھیاروں کی ایک نئی دوڑ شروع ہو سکتی ہے ۔

Leave a Reply