رائل پام کا معاہدہ غیر قانونی قرار، سپریم کورٹ نے فیصلہ محفوظ کر لیا

Spread the love

اسلام آ با د (کورٹ رپورٹر)سپریم کورٹ نے ریلوے گالف کلب اراضی کیس میں

رائل پام معاہدے کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا، گالف

کلب کے وکیل بیرسٹر سید علی ظفر نے کہا کہ درخواست میں جو الزامات لگائے

گئے ہیں وہ نیب کے ریفرنس میں بھی موجود ہیں اور نیب کے ریفرنس دائر کرنے

کے بعد سپریم کورٹ میں کارروائی احتساب عدالت کی کارروائی کو متاثر کرے

گی۔جسٹس عظمت سعید شیخ نے سوال کیا کیا نیب میں ریفرنس دائر ہونے کے بعد

سپریم کورٹ میں کارروائی مناسب ہوگی؟ سپریم کورٹ نے کوئی فیصلہ دیا تو اس

کا اثر ریفرنس پر پڑے گا؟۔دوران سماعت جسٹس اعجاز الحسن نے کہا کہ معاہدے

کو درست قرار دیا تو ملزم رہا ہو جائیں گے اور اگر معاہدے کو غلط قرار دیا تو

احتساب عدالت میں ملزمان کے لیے مشکلات ہوں گی۔اسحاق خاکوانی کے وکیل

نے اپنے دلائل جاری رکھتے ہوئے کہا کہ پرویز مشرف کے دور میں ریلوے کی

قیمتی زمین کوڑیوں کے مول دی گئی تھی۔درخواست گزار کے وکیل نے مزید کہا

کہ پارلیمنٹ میں بیٹھے لوگ عوام کی نمائندگی نہیں کرتے اور کسی رکن پارلیمنٹ

کو عوام کی پرواہ نہیں، عدالت کو آرٹیکل 184/3 کا اختیار استعمال کرنا ہوگا۔وزیر

ریلوے شیخ رشید احمد نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ریلوے دیوالیہ ہونے کے قریب

ہے، معاہدہ 103 ایکڑ اراضی کا تھا قبضہ 143 ایکڑ پر کر لیا گیا, یہ برصغیر کا

سب سے بڑا فراڈ ہے،شیخ رشید نے کہا کہ ملک کی حالت بدلنی ہے تو کرپٹ

بیوروکریسی کو بھی بدلنا ہوگا، نیب میں جرنیلوں کا ٹرائل کرنے کی ہمت نہیں۔

انہوں نے عدالت میں انکشاف کیا قطر اس جگہ پر ملین ڈالرز خرچ کرنے کو تیار

ہے۔بعد ازاں عدالت نے ریلوے پام کا معاہدہ غیر قانونی قرار دیتے ہوئے کیس کا

فیصلہ محفوظ کرلیا، جو بعد میں سنایا جائے گا۔

Leave a Reply