ذوالفقارعلی بھٹو کی آج 40 ویں برسی،جیالے گڑھی خدا بخش پہنچ گئے

Spread the love

گڑھی خدا بخش(سٹاف رپورٹر) پاکستان کے سابق وزیراعظم اور پیپلز پارٹی کے

بانی ذوالفقارعلی بھٹو کی آج 40 ویں برسی منائی جائیگی، 4 اپریل 1979 کے

ایک عدالتی فیصلے کے نتیجے میں انہیں تختہ دارپر چڑھادیا گیا تھا۔ اس عدالتی

فیصلے کو ملکی تاریخ کے چند متنازعہ فیصلوں میں شمارکئے جانے سمیت آج

بھی اسے درست تسلیم نہیں کیا جاتا۔ پیپلز پارٹی دیگر جماعتوں اور صحافت سے

وابستہ افراد اسے عدالتی قتل قرار دیتے ہیں۔ ذوالفقار علی بھٹو کی 40 ویں برسی

کے موقع پرآج سندھ حکومت کی جانب سے صوبے بھر میں عام تعطیل ہے اور

صوبائی حکومت کے ماتحت خودمختار و نیم خود مختار ادارے، کارپوریشنز اور

لوکل کونسلز کے دفاتر بند رہیں گے۔ شہید بھٹوکی برسی کے موقع پر گڑھی خدا

بخش میں تعزیتی جلسہ منعقد کیا جائے گا جس میں پورے ملک سے جیالے

شرکت کیلئے پہنچ چکے ہیں ، جلسہ عام سے پارٹی کے شریک چیئرمین آصف

علی زرداری اور چیئرمین بلاول بھٹو زرداری خطاب کریں گے۔ اس موقع پر

پولیس نے گڑھی خدا بخش اور نو ڈیرو کیلئے فول پروف سکیورٹی پلان تشکیل

دیے رکھا ہے جس کے تحت 26ایس ایس پیز،6 ہزار300 پولیس اہلکار،ٹریفک

کی روانی یقینی بنانے کیلئے 6 ایس پی اور 700 ٹریفک اہلکاروں سمیت سپیشل

برانچ کے 700 اہلکار بھی اپنے فرائض انجام دیں گے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے

چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے قائداعظم محمد علی جناح کے بعد ملکی

تعمیر و قوم سازی کے عمل میں قائدِ عوام شہید ذوالفقار علی بھٹو کا کردار وسیع

و بے مثال ہے، یہی وجہ ہے ان کی شہادت کو 40 برس گزرنے کے باوجود وہ

نہ فقط عوام کی دلوں میں زندہ و محترم ہیں، بلکہ ان پر ہونیوالے ظلم و جبر

کیخلاف عوامی غم و غصہ آج بھی ایسا ہی ہے جیسے یہ ابھی چند لمحے پہلے

پیش آنیوالا سانحہ ہو۔ آج کا دن ہمیں یاد دلاتا ہے قائد عوام کا خونِ ناحق آج بھی

انصاف کا طالب ہے، بارہا یادہانی اورگزارشات کے باوجود انصاف ہونے کی امید

دم توڑ رہی ہے، انہوں نے کہا آئین و قانون کی عدم پاسداری ملک کے تمام بڑے

مسائل کی ماں اور نظرئیہ ضرورت ان کی نانی ہے۔ موجودہ صورتحال ہر پاکستا

نی سے تقاضا کرتی ہے کہ ملک میں پارلیمان بالادستی اور دستور و قانون کی

پاسداری کو یقینی بنانے کیلئے آگے بڑھے یہ ہی فکرِ بھٹو ہے۔ دریں اثناء پیپلز

پارٹی کے شریک چیئر مین اور سابق صدر آصف زر داری نے اپنے خصوصی

پیغام میں واضح کیا کہ استحصالی قوتوں کیخلاف جنگ جاری رہے گی ،قائد عوام

شہید نے ملک کو آزاد،باوقار اور خود مختار ملک کی تعمیر کی تھی، جب قومی

معاملات سے پارلیمان کو بے خبر رکھا جائے تو سمجھا جائے کہ کچھ ہی نہیں

سب غلط کیا جا رہا ہے، قائد عوام نے ہمیں ڈرنا سکھایا نہ جھکنا، دنیا کی کوئی

طاقت ہماری سوچ پر پہرے بٹھا سکتی ہے نہ زباں بندی کر سکتی ہے۔ شہید

ذوالفقارعلی بھٹو ایک شخص کا نام نہیں بلکہ ایک نظریہ اور جدوجہد کا نام ہے۔

ہم شہید ذوالفقار علی بھٹوکے پیروکار ہیں ، ہم تجدید عہد کرتے ہیں قائد عوام کے

مشن کے تکمیل کیلئے کسی قربانی سے گریز نہیں کریں گے۔

Leave a Reply