ابیٹ آباد، دیرینہ تنازعات حل میں ڈی آر سی کو عوامی اعتماد حاصل

ابیٹ آباد، دیرینہ تنازعات حل میں ڈی آر سی کو عوامی اعتماد حاصل

Spread the love

ایبٹ آباد (سردار یاسر احمد) دیرینہ تنازعات ایبٹ آباد

Journalist Sardar Yaser Ahmad

شہریوں کے باہمی تنازعات کو بلا معاوضہ اور افہام و تفہیم سے بروقت حل کر

کے کسی بھی ناخوشگوار کو واقعہ رونما ہونے سے قبل روکنے میں ڈی آر سی

کا کلیدی کردار رہا، مختلف مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد اور باشعور

عوام کی جانب سے ڈسپیوٹ ریزولیوشن کونسل کے مصالحتی اقدامات عوامی

مفاد قیام امن اور انسانیت کے تحفظ کے لئے ایک قیمتی اثاثہ قرار دیا ہے-

ڈی آر سی نے 4 کڑور روپے حقداروں کے حوالے کئے

ایبٹ آباد شہر میں قائم ڈی آر سیز جن میں ایبٹ آباد، حویلیاں، گلیات کی سرکل

ڈی آر سیز کے ساتھ ساتھ لور، شیروان، بکوٹ میں ڈی آر سیز بخوبی اپنے

فرائض سرانجام دے رہی ہیں، جن کی کارکردگی حوصلہ افزاء ہے، ڈی آر سیز

کے ذریعے رواں سال کے نو مہینوں کے دوران مجموعی طور پر 1562 کیسز

موصول ہوئے جس میں 415 کو پرامن طور پر حل کرلیا گیا ہے، جبکہ پیچیدہ

ہونے کی وجہ سے 432 تنازعات عدالت کے حوالے کیے گئے- فائل کیسز کی

تعداد 374 ہے ان کی کل تعدار 1221 ہے، جبکہ 341 پر ابھی فیصلہ کیا جانا

ہے، اسی طرح مختلف نوعیت کے لین دین کے کیسیز میں 4 کروڑ 12 لاکھ کی

خطیر رقم خوش اصلوبی سے متعلقہ حقداروں کے حوالے کی گئی-

قتل و اراضی تنازعات کا حل ڈی آر سی و پولیس کی کامیابی، ڈی پی او
ابیٹ آباد، ضلعی پولیس سربراہ ظہور بابر آفریدی

ڈی پی او ایبٹ آباد ظہور بابر آفریدی نے کہا ہے کہ ڈی آر سی کی وجہ سے

عوام کو بیشتر مسائل کے حل کے لیے عدالتوں کے چکر اور وکلاء کی بھاری

فیس سے چھٹکارہ مل گیا ہے۔ بہت سے مسائل پر پر امن انداز میں ان کی دہلیز

پر حل ہو رہے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ چھوٹے تنازعات کے علاوہ قتل اور

جائیدار کے بڑے تنازعات کے کیسز میں بھی فریقین کے درمیان باہمی رضا

مندی پر فیصلے سنائے ہیں، جو کہ ڈی آر سی اور ایبٹ آباد پولیس کی ایک بڑی

کامیابی ہے-

دیرینہ تنازعات ایبٹ آباد ، دیرینہ تنازعات ایبٹ آباد ، دیرینہ تنازعات ایبٹ آباد

=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)
=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply