135

دہشتگرد مولانا فضل الرحمن سمیت سیاسی قائدین کو نشانہ بنا سکتے ہیں، نیکٹا

اسلام آباد (جتن آن لائن سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک) دہشتگرد،نیکٹا

جمعیت علماء اسلام کی احتجاجی تحریک اور دھرنے سے متعلق الرٹ جاری کردیا گیا، نیکٹا کے جاری الرٹ کے مطابق دہشتگرد جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سمیت سیاسی جماعتوں کے قائدین کو نشانہ بنا سکتے ہیں-

یہ بھی پڑھیں: نیکٹا نے مدارس کی جیو ٹیگنگ اور رجسٹریشن رپورٹ مکمل کر لی

وفاقی وزارت داخلہ نے چاروں صوبوں کے چیف سیکرٹریز کو سیاسی قائدین کی سکیورٹی میں مذید اضافہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔ وفاقی وزارت داخلہ کی جانب جے یوآئی آزادی مارچ کے حوالے سے الرٹ کا مراسلہ بھی صوبوں کے چیف سیکرٹریز کو جاری کردیا گیا-

آزادی مارچ سے اندورنی سکیورٹی کو منفی اثرات لاحق

مراسلے کے مطابق جے یو آئی (ف) کے مارچ سے اندرونی سکیورٹی کو منفی اثرات لاحق ہیں- آزادی مارچ کے اعلان سے عدم استحکام کی صورتحال پیدا ہو رہی ہے- عدم استحکام کی صورتحال کے باعث ملک دشمن فائدہ اٹھا سکتے ہیں- دہشت گرد تنظیمیں عوامی اجتماعات پر حملہ کرسکتی ہیں-

دہشت گردی کیلئے ایک ملین ڈالرز تقسیم

کالعدم ٹی ٹی پی آزادی مارچ کو نشانہ بنا سکتی ہے۔ مراسلے کے مطابق کالعدم ٹی ٹی پی آزادی مارچ میں شامل ہو کر تخریب کاری کرسکتی ہے، دشمن ایجنسیوں نے ایک ملین ڈالرز دہشت گردوں میں تقسیم کیے ہیں- رقم فضل الرحمٰن اور دیگر قائدین کو نشانہ بنانے کیلئے تقسیم کی گئی ہے-

مولانا سمیت تمام سیاسی قائدین کی سکیورٹی میں اضافہ

سلیپر سیلز مقامی تعاون سے تخریب کاری کرسکتے ہیں- مولانا فضل الرحمٰن اور دیگر قائدین کو سکیورٹی میں مزید اضافہ کرنے کی بھی ہدایت کی گئی ہے۔

آزادی مارچ کا آغاز شہرقائد کراچی سے ہوگا

یاد رہے جمعیت علما اسلام (ف) کا آزادی مارچ 27 اکتوبر کو شہر قائد سے شروع ہوگا- سکھر،ملتان اور لاہور میں تین پڑاؤ کرنے کے بعد 30 اکتوبر کو اسلام آباد کیلئے روانہ ہوگا- حکومت مخالف مارچ لاہور سے براستہ جی روڈ اسلام آباد پہنچے گا-

دہشتگرد،نیکٹا

Leave a Reply