دھاندلی الزامات بے بنیاد ، شکست تسلیم کریں، فواد چوہدری

Spread the love

دھاندلی الزامات بے بنیاد

اسلام آباد(جے ٹی این آن لائن نیوز) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے آزاد جموں و

کشمیر کے انتخابات میں اپوزیشن کی جانب سے دھاندلی کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے

آزادکشمیر میں وزیراعظم ن لیگ کا الیکشن کمشنر بھی ن لیگ نے لگایا ،ایسے میں دھاندلی کون

کرسکتا ہے؟ن لیگ کو اپنی بری شکست کو تسلیم کرلینا چاہیے،کشمیر میں پاکستان تحریک انصاف

کی کامیابی وزیراعظم کی پالیسیوں پر عوام کے اعتماد کا مظہر ہے، سکیورٹی کے سب سے کم

اخراجات وفاقی کابینہ ، عدلیہ پر سکیورٹی کی مد میں سب سے زیادہ اخراجات ہو رہے ہیں،

وزیراعظم نے سکیورٹی کے حوالے سے ایک نیا نظام وضع کرنے کا حکم دیا ہے،جسکے لئے

تھریٹ کمیٹیاں بنائی جائیں گی،جو انفرادی خطرات کا جائزہ لیں گی اور اس کے مطابق سکیورٹی کا

بندوبست کیا جائے گا،نیب قانون سے متعلق بھی اپوزیشن کے ساتھ نتیجہ خیز مذاکرات چاہتے ہیں

،اگر رضاکارانہ طور پر کوروناویکسین لگانے کی شرح میں اضافہ نہ ہوا تو ویکسین نہ لگوانے

والوں کی موبائل سم بندکرنے کا آپشن کھلا ہے۔منگل کواسلام آباد میں کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا کو

بریفنگ میں وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا آزاد کشمیر کے وزیراعظم ہاؤس

میں پریس کانفرنس ہورہی تھی اور وزیراعظم رو رو کر کہہ رہے تھے کہ اب میں ہار گیا ہوں تو

الیکشن میں دھاندلی ہوئی ہے، آپ کی اپنی حکومت، آپ کا اپنا لگایا ہوا الیکشن کمیشن اور اس کے بعد

آپ الیکشن ہار جائیں تو پھر آپ کہیں کہ دھاندلی ہوئی تو اس کا کیا حل ہے۔آزادکشمیر میں وزیراعظم

ن لیگ کا الیکشن کمشنر بھی ن لیگ نے لگایا ،ایسے میں دھاندلی کون کرسکتا ہے؟ن لیگ کو اپنی

بری شکست کو تسلیم کرلینا چاہیئے،اسی لیے وزیراعظم ٹیکنالوجی کی طرف بڑھنے کی بات کرتے

ہیں، جب سارا عملہ آپ کا لگایا ہوا ہو پھر بھی آپ کو یقین نہیں ہے اور آپ کہہ رہے ہوں کہ دھاندلی

ہورہی ہے تو پھر واحد حل یہی ہے کہ ٹیکنالوجی کی طرف بڑھتے ہیں۔کابینہ اجلاس کے بارے میں

انہوں نے کہا کہ کابینہ نے وزیراعظم کو آزاد کشمیر میں کامیابی پر مبارک باد دی، وفاقی کابینہ اور

وزیراعظم نے علی امین گنڈا پور، مراد سعید، علی محمد اور شہریار آفریدی سمیت دیگر لوگ، جنہوں

نے اس مہم میں حصہ لیا اس کی تعریف کی۔انہوں نے کہا کہ وفاقی کابینہ سمجھتی ہے کہ کشمیر میں

پاکستان تحریک انصاف کی کامیابی وزیراعظم کی پالیسیوں پر عوام کے اعتماد کا مظہر ہے،

وزیراعظم نے آزادکشمیر الیکشن میں جاں بحق ہونے والے پی ٹی آئی کے دو کارکنوں کی ہلاکت کی

فوری تحقیقات اور ملزمان کی گرفتاری کا حکم دیا ہے،کابینہ اجلاس میں الیکشن ڈیوٹی کے دوران

شہید 4 فوجی جوانوں اور 2 پی ٹی آئی ورکرز کیلئے فاتحہ خوانی کی گئی۔انہوں نے کہا کہ ہم نے

فراہم کی جانے والی سیکیورٹی پر بات کی تھی اور اس حوالے سے کابینہ کو تفصیلی بریفنگ دی

گئی، دلچسپ بات یہ ہے کہ سیکیورٹی کے سب سے کم اخراجات وفاقی کابینہ پر ہو رہے ہیں، عدلیہ

پر سیکیورٹی کی مد میں سب سے زیادہ اخراجات ہو رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وفاقی دارالحکومت

پولیس کی جانب سے صدر، وزیراعظم، گورنرز، وزرائے اعلی، وزرائے مملکت، مشیران اور

معاونین خصوصی کی سیکیورٹی پر 762پولیس اہلکار، 14رینجرز اور ایف سی اہلکار تعینات ہیں اور

ان پر 70کروڑ روپے کا خرچ ہو رہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں جج صاحبان کی سیکیورٹی

کے لیے 377پولیس اہلکار تعینات ہیں اور ان پر 28کروڑ 70لاکھ خرچ ہو رہا ہے، لاہور میں

11کروڑ 43لاکھ خرچ ہو رہا ہے، مجموعی طور پر عدلیہ کی سیکیورٹی پر تقریبا 140کروڑ روپے

خرچ ہورہا ہے، جس میں خیبرپختونخوا (کے پی)، سندھ اور بلوچستان شامل نہیں ہے تو ججوں کی

سیکیورٹی کا معاملہ شاید 160سے 170کروڑ روپے سے بھی اوپر چلا جائے گا۔

دھاندلی الزامات بے بنیاد

ستاروں کا مکمل احوال جاننے کیلئے وزٹ کریں ….. ( جتن آن لائن کُنڈلی )
قارئین : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر ، اپڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply