دشمن کو اطمینان دلانا، مطالبات ماننا مصالحت نہیں

Spread the love

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے پاکستان کیلئے یہ انتہائی اہم ہے وہ افغان امن عمل کا حصہ بنے، امریکی فوج کے انخلاء کے بعد کی صورتحال کیلئے ہمیں منصوبہ سازی کرنی چاہیے،

کسی بھی تنازع کا حل مصالحت ہے، گز شتہ روز وا شنگٹن میں صحافیوں سے گفتگو میں انکا مزید کہنا تھا اسے مصالحت نہیں کہتے آپ دشمن کو اطمینان دلائیں اور مطالبات مان لیں،

مصالحت تب ہوتی ہے جب تمام فریق غلطی کا احساس کریں اور ذمہ داری قبول کریں۔ غلطیوں پر نادم ہونے کے بعد سمجھوتے پر پہنچیں تو اسے مصا لحت کہتے ہیں، اگر آپ ایک فریق کومطمئن کریں، مطالبات مانیں، مفاہمت کریں تو یہ پاکستان اور خطے کیلئے تباہ کن ہو گا۔

قبل ازیں پاک امریکا تعلقات اور افغانستان کی صورتحال پر یو ایس انسٹیٹیوٹ آف پیس میں خطاب میں چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کا کہنا تھا دہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاکستان نے بے شمار قربانیاں دیں ،پاکستان کا امن افغانستان سے جڑا ہوا ہے۔

Leave a Reply