pakistan vs india

دشمنی میں سب جائز، پاکستان کیخلاف بھارت کی انوکھی جارحیت

Spread peace & love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

نئی دہلی (جے ٹی این آن لائن نیوز) دشمنی میں سب جائز

بھارت نے آزاد کشمیر، گلگت بلتستان کو اپنے موسمی نقشہ جات میں مقبوضہ

کشمیر کا حصہ ظاہر کردیا، اور بھارتی موسمیاتی پیش گوئیوں میں گلگت بلتستان

اور مظفر آباد کو شامل کرلیا گیا۔

پاکستان نے بھارت کے اس اقدام کو عالمی قوانین کی خلاف ورزی قرار دیتے

ہوئے مسترد کردیا۔

یہ بھی پڑھیں : سی پیک حقیقت، سردیوں میں پاک بھارت جنگ، امریکی محقق

وزارت خارجہ کی ترجمان عائشہ فاروقی نے دارالحکومت اسلام آباد میں ہفتہ وار

بریفنگ کے دوران کہا ہندوستان کا یہ اقدام بھی قانونی طور پر کالعدم ، حقیقت کے

برخلاف اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں کی خلاف ورزی

ہے-

ہندوستان کے غیر ذمہ دارانہ سلوک سے متعلق ہمارے دعوے کا مزید ایک اور

ثبوت ہے۔ ہندوستان کے کسی بھی غیر قانونی اور یکطرفہ اقدامات سے جموں و

کشمیر کی ‘متنازع’ حیثیت کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا-

——————————————————————————
دوستو : ہماری کاوش پسند آئے تو شیئر کریں، فالو کریں اپڈیٹ رہیں
——————————————————————————

عالمی میڈیا کے مطابق بھارتی محکمہ موسمیات ( آئی ایم ڈی ) نے، اس ضمن میں

نئے انداز میں موسمی صورتحال جاری کرنا شروع کی ہیں- جس میں گلگت

بلتستان، مظفرآباد کو شمال، مغربی ذیلی ڈویژن کا حصہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

گلگت بلتستان اور مظفر آباد وہ علاقے ہیں جو اس وقت پاکستان کے زیر انتظام

ہیں۔ بھارت کا کہنا ہے کہ پورا جموں و کشمیرہمارا ہے۔

بھارت کے محکمہ موسمیات ( آئی ایم ڈی ) نے بتایا کہ اس نے اپنی قومی موسمی

خبروں میں اس خطے کا ذکر کرنا شروع کیا ہے۔

شمال مغربی موسمیاتی ڈویژن نو ذیلی ڈویژنوں پر مشتمل ہے-

کشمیر، ہماچل پردیش، اتراکھنڈ، دہلی، چندی گڑھ، ہریانہ، پنجاب، مشرقی و مغربی

اتر پردیش، مشرقی اور مغربی راجستھان۔

ڈائریکٹر جنرل ایم موہپترا کا اس ضمن میں مزید کہنا تھا، ہم بھارت کی سرزمین

کے تحت آنیوالے ہر خطے کیلئے موسم کی پیشگوئی کا اشتراک کریں گے۔

پہلے لداخ ریاست جموں و کشمیر ریاست کا حصہ تھے، لیکن اب صورتحال

مختلف ہے، کیونکہ یہ ایک علیحدہ مرکزی علاقہ ہے لہٰذا جب ہم لداخ کا ذکر

کرتے ہیں تو ہم نے گلگت بلتستان اور مظفر آباد کا بھی ذکر کرنے کا فیصلہ کیا ۔

دشمنی میں سب جائز

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply