خیبرپختونخوا حکومت کا مستحق مریضوں کے علاج معالجہ کیلئے انقلابی اقدام

خیبرپختونخوا حکومت کا مستحق مریضوں کے علاج معالجہ کیلئے انقلابی اقدام

Spread the love

پشاور(بیوروچیف،عمران رشید خان) خیبرپختونخوا حکومت انقلابی اقدام

Journalist Imran Rasheed

خیبر پختونخوا حکومت نے گردوں، جگر، بون میرو ٹرانسپلانٹ اور تھیلیسیمیا

سمیت آٹھ بیماریوں کے مفت علاج کا اعلان کیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق مستحق

لوگوں کے مفت علاج کے لیے وزیر اعلی محمود خان نے انقلابی قدم اٹھا لیا،

صوبے میں کڈنی، لیور، بون میرو ٹرانسپلانٹ، تھیلیسیمیا سمیت 8 بیماریوں کا

مفت علاج ہوگا۔ یہ فیصلہ وزیراعلی خیبر پختونخوا محمود خان کی زیر صدارت

اجلاس میں کیا گیا، مذکورہ بیماریوں کا علاج صحت کارڈ پلس سکیم کے تحت ہو

یا اس کے لیے الگ پروگرام کا اجرا کیا جائے، اس امر پر بھی اجلاس میں غور

کیا گیا، وزیر اعلی نے دونوں آپشنز پر ہوم ورک کر کے تجاویز پیش کرنے کی

ہدایات بھی جاری کردیں۔ محمود خان نے عزم کا اظہار کیا کہ مستحق لوگوں کو

مہنگی بیماریوں کے علاج کی مفت سہولت فراہم کرنی ہے، حکومت کی ذمہ

داری ہے کہ کمزور طبقوں کا خصوصی خیال رکھے۔ اجلاس میں صحت کارڈ

سکیم کے علاوہ فوڈ کارڈ سکیم اور ایجوکیشن کارڈ سکیم سے متعلق بھی گفتگو

کی گئی-

=-،-= خیبر پختونخوا سے متعلق مزید خبریں (=-= پڑھیں =-=)

وزیراعلی نے کہا مجوزہ فوڈ کارڈ سکیم کے تحت مستحق خاندانوں کو ماہانہ مفت

راشن فراہم کیا جائے گا، جبکہ ایجوکیشن کارڈ سکیم کے تحت مستحق طلبہ کے

تعلیمی اخراجات حکومت ادا کرے گی۔ وزیر اعلی کے پی نے متعلقہ حکام کو 2

سے 3 ماہ میں مذکورہ سکیموں کے اجرا کو حتمی شکل دینے کی ہدایت کرتے

ہوئے کہا کہ ایجوکیشن کارڈ، فوڈ کارڈ اور کسان کارڈ سکیموں پر عملدرآمد یقینی

بنائیں گے۔ اجلاس میں ایڈیشنل چیف سیکرٹری شہاب علی شاہ، سیکرٹری صحت

امتیاز حسین شاہ، سیکرٹری ایلمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن یحییٰ اخوانزادہ،

سیکرٹری سوشل ویلفیئر ذوالفقار علی شاہ، سیکرٹری اندسٹریز ہمایون خان، ڈی

جی ہیلتھ کے علاوہ دیگرمتعلقہ حکام نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔ وزیراعلیٰ

کو ان بیماریوں کے مفت علاج معالجے کے طریقہ کار پر بریفینگ دیتے ہوئے

بتایا گیا کہ مذکورہ بیماریوں کے مفت علاج معالجے کو صحت کارڈ پلس سکیم

میں شامل کیا جا سکتا ہے یا اس کیلئے الگ پروگرام کا اجرا بھی ممکن ہے۔

=–= صحت سے متعلق مزید خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

اجلاس میں اپنی گفتگو میں وزیراعلیٰ نے کہا کہ طریقہ کار جو بھی ہو مقصد

صوبے کے مستحق لوگوں کو ان مہنگی بیماریوں کے علاج معالجے کی مفت

سہولیات فراہم کرنا ہے اوراس مقصد کیلئے تمام ممکن اقدامات اُٹھائے جائینگے۔

شرکائے اجلاس کو صوبے کے مستحق خاندانوں کو مفت راشن کی فراہمی کیلئے

مجوزہ فوڈ کارڈ سکیم اور مستحق طلبہ کی مفت تعلیم کیلئے ایجوکیشن کارڈ کے

حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ فوڈ کارڈ سکیم کے تحت صوبے کے

مستحق خاندانوں کو ماہانہ بنیاد پر مفت راشن فراہم کیا جائیگا جو بنیادی اشیائے

خورو نوش پر مشتمل ایک پیکج ہو گا۔ اس سکیم پر عملدرآمد کیلئے ابتدائی طور

پر مختلف ماڈلز تیار کئے گئے ہیں جن میں سے ایک قابل عمل اور آسان ماڈل کا

انتخاب کیا جائیگا۔

=–= تعلیم سے متعلق مزید ایسی خبریں (=–= پڑھیں =–= )

ایجوکیشن کارڈ سکیم کے بارے میں بتایا گیا کہ اس سکیم کے تحت مستحق

خاندانوں کے طلبہ کے تعلیمی اخراجات کی مد میں صوبائی حکومت معاونت

فراہم کرے گی۔ تمام سرکاری سکولوں میں داخلہ فیس کی معافی، بورڈ امتحانات

کیلئے امتحانی فیس کی معافی، یونیفارم کی مفت فراہمی، اعلیٰ تعلیم کے شعبے

میں کتابوں کی مفت فراہمی، مستحق لوگوں کو سرکاری جامعات، کالجز اور

مدارس کی ٹیوشن فیس کی مد میں حکومت کی جانب سے معاونت سمیت دیگر

تجاویز پیش کی گئیں۔ وزیراعلیٰ نے ان مجوزہ سکیموں کو فلاحی ریاست کے

وژن کی جانب اہم پیشرفت اور صوبائی حکومت کا عوام دوست منصوبہ قرار

دیتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ صوبائی حکومت وزیراعظم عمران خان کے

فلاحی ریاست کے وژن کی تکمیل کیلئے نہ صرف پر عزم ہے بلکہ اس سمت

میں نتیجہ خیز اقدامات بھی اُٹھا رہی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت اپنے

وعدے کے مطابق ایجوکیشن، فوڈ اور کسان کارڈز پر عملدرآمد یقینی بنائیگی، یہ

حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے کمزور اور مستحق طبقوں کا خصوصی

خیال رکھے اور صوبائی حکومت اس سلسلے میں تمام تر دستیاب وسائل بروئے

کار لائے گی۔

خیبرپختونخوا حکومت انقلابی اقدام ، خیبرپختونخوا حکومت انقلابی اقدام

خیبرپختونخوا حکومت انقلابی اقدام ، خیبرپختونخوا حکومت انقلابی اقدام

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply