369

خوفناک زلزلے سے پورا ملک ہل گیا،آزاد کشمیر میں تباہی،19افراد جاں بحق،300سے زائد زخمی

Spread the love

اسلام آباد،میر پور (سٹاف رپورٹر ، بیورو رپورٹس)آزاد کشمیر ،وفاقی

دارالحکومت اسلام آباد، پنجاب اور خیبرپختونخوا سمیت ملک بھر میں شدید زلزلے

کے جھٹکوں کے نتیجے میں خواتین اور بچوں سمیت 20افراد جاں بحق اور

300سے زائد زخمی ہوگئے ،زخمیوں میں بعض کی حالت نازک ہے جس کے

باعث ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے،وفاقی دارالحکومت اسلام آباد ،آزاد کشمیر

اور جہلم کے ہسپتالوں میں ایمر جنسی نافذ کرد ی گئی، سینکڑوںمکانات گر گئے

،سڑکیںگئیں جس کے باعث آمدورفت معطل ہوگئی ،زخمیوں کو .سپتالوں تک

پہنچانے میں دشواری کا سامنارہا،زلزلے کے باعث بجلی اور مواصلات کا نظام

درہم برہم ، گاڑیاں الٹ کر تباہ ،گھروں کی کھڑکیاں اور شیشے ٹوٹ گئے ، زلزلے

کی شدت 5.8ریکارڈ کی گئی ، جس کا دورانیہ 8 سے 10 سیکنڈ تک تھا،گہرائی

10 کلو میٹر تھی،زلزلے کا مرکز جہلم کے شمال میں 5کلو میٹر تھا ، زلزلے کے

جھٹکوں کے باعث مختلف شہروں میں لوگ کلمہ طیبہ اور درود شریف کا ورد

کرتے ہوئے گھروں ،عمارتوں اور دفاترسے باہر نکل آئے اور کئی گھنٹے کھلے

آسمان تلے گزارے ، آفٹر شاکس کا سلسلہ بھی جاری رہا جس کے باعث لوگوںمیں

خوف وہراس پھیل گیا جبکہ پاک فوج کے جوانوں ،این ڈی ایم اے اور پی ڈی ایم

اے اور دیگر ریسکیواداروں نے اپنا کام شروع کردیا تاہم بجلی کا نظام درہم برہم

،سڑکوں کے ٹوٹنے کی وجہ سے امدادی کاموں میں مشکلات کا سامنا رہا ۔ منگل

کے روز تقریباً سہ پہر چار بجکر ایک منٹ پر آزاد کشمیر ،وفاقی دارالحکومت

اسلام آباد، پنجاب اور خیبرپختونخوا سمیت ملک کے مختلف شہروں میں زلزلے

کے شدید جھٹکے محسوس کئے گئے ۔زلزلہ پیما مرکز کے مطابق ریکٹر اسکیل پر

زلزلے کی شدت میں5.8 ریکارڈ کی گئی ہے، جس کی گہرائی زیرِ زمین 10 کلو

میٹر تھی۔زلزلہ پیما مرکزکے مطابق زلزلے کا مرکز جہلم کا شمالی علاقہ تھا۔

اطلاعات کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد ، جڑواں شہر راولپنڈی کے

علاوہ پنجاب کے علاقوں خوشاب، سرگودھا، فیصل آباد، گوجرانوالہ، میانوالی،

منڈی بہاؤالدین، ملتان، اوکاڑہ، قصور، خانیوال، گجرات، کامونکی، مریدکے،

شیخوپورہ، ننکانہ صاحب، ساہیوال، پتوکی، چونیاں، پاکپتن، دیپالپور، حجرہ شاہ

مقیم، نارنگ منڈی اور سیالکوٹ میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے ہیں ۔

اطلاعات کے مطابق آزاد کشمیر کے ضلع میر پور ، بھمبر اور سماہنی سمیت
کئی علاقوں زلزلے تباہی مچا دی ، میر پور میں سیکڑوں مکانات گر گئے ،

زلزے کے جھٹکے اتنے شدید تھے کہ سڑکیں پھٹ گئیں اور زمین پر کھڑی الٹ

گئیں،گھروں کی کھڑیاں اور شیشے بھی ٹوٹ گئے ۔ا میرپور میں زلزلے سے

عمارت گرگئی جس کے نتیجے میں وہاں موجود 50 افراد ملبے تلے دب گئے۔

متعددافراد کو زخمی حالت میں ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے ۔اس کے علاوہ

خیبرپختونخوا میں پشاور، چارسدہ، سوات، خیبر، ایبٹ آباد، باجوڑ، نوشہرہ،

مانسہرہ،بٹ گرام، تورغر، شانگلہ، بونیر، دیر،اپر دیر، لوئر،چترال، مالاکنڈ اور

کوہستان میں بھی زلزلے کی جھٹکے محسوس کیے گئے ۔ چیف میٹرولوجسٹ

محمد ریاض نے بتایا کہ زلزلے سے پنجاب اور خیبرپختونخوا کے کچھ علاقے

متاثر ہوئے جبکہ اس سے سب سے زیادہ نقصان میرپور آزاد کشمیر میں ہوا۔ڈی

آئی جی گلفراز خان نے بتایا کہ زلزلے میں جاں بحق افراد کی تعداد 20ہوگئی اور

300 سے زائد افراد زخمی ہیں، ہسپتال ذرائع کے مطابق جاں بحق افراد میں 2

بچوں سمیت 5 افراد شامل ہیں جن میں 17 سالہ سمیر، حمید اللہ، نسیم بی بی، 10

سالہ بچی اور ایک 60 سالہ شخص وغیرہ شامل ہیں ۔ہسپتال ذرائع کے مطابق

زخمیوں میں بعض کی حالت نازک ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافے کا

خدشہ ہے۔تاہم چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل نے پریس

کانفرنس کے دوران بتایا کہ فی الحال زلزلے سے جاں بحق افراد کی تعداد 10 ہے

جبکہ 100 کے قریب افراد زخمی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ زلزلے سے جاں بحق

ہونیوالوں کے بارے میں ایک اطلاع یہ ملی کہ تعداد 17 ، دوسری اطلاعات کے

مطابق 15 افراد جاں بحق ہوئے ہیں جبکہ میں فی الحال دس افراد کے جاں بحق

ہونے کی تصدیق کرسکتا ہوں۔ میرپور کے علاقے جاتلاں سے موصول ہونے والی

ویڈیوز اور تصاویر میں شدید تباہی کے مناظر کو دیکھا گیا جبکہ ڈپٹی کمشنر میر

پور آزاد کشمیر نے بتایا کہ ایک مسجد کے مینار بھی شہید ہوگئے جس سے کئی

افراد زخمی ہوگئے، جنہیں طبی امداد کیلئے مقامی ہسپتال میں منتقل کردیا گیا ۔

دوسری جانب ڈ پٹی کمشنر جہلم محمد سیف نے بتایا کہ جہلم کی تحصیل دینا میں

چک رانجھا کے مقام پر گھروں کو نقصان پہنچا ہے جس سے ایک خاتون جاں

بحق اور 22 افراد معمولی زخمی ہوئے۔ زلزلے کے بعد اپر جہلم نہر پر بھی ٹوٹ

گئی اور پندرہ سے زائد دیہات میں نہر کا پانی داخل ہوگیاہے، ان دیہاتوں میں

سیلابی پانی کے باعث بھی تباہی کاخدشہ ہے۔ڈائریکٹر سٹیٹ ڈیزاسٹر مینجمنٹ نے

کہاہے کہ اس نقصان سے بچنے کیلئے نہر کا پانی بند کردیا گیاہے اوراس وقت

تک نہر کوبند رکھا جائے گاجب تک اس بات کا یقین نہیں ہوجاتا کہ پانی سے

آبادیوں کوکوئی نقصان نہیں ہوگا۔ادھر زلزلہ پیما مرکز کے ڈپٹی ڈائریکٹر نجیب

احمد نے کہاکہ لوگوں کو احتیاط کرنی چاہیے کیونکہ زلزلے کے آفٹرشاکس بھی

آسکتے ہیں۔ادھر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پاک فوج کو فوری طورپر

میر پور میں زلزلے سے متاثرہ علاقوں میں امدادی کمک پہنچانے کی ہدایت کی

ہے۔آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف کی ہدایت پر سول انتظامیہ کی مدد کے

لیے آرمی کے دستے اور میڈیکل اسٹاف میرپور پہنچ گیا ہے جس نے رات بھر

امدادی کاموں میں حصہ لیا ۔آئی ایس پی آر نے بتایا کہ آرمی ایوی ایشن ہیلی

کاپٹرز نے میرپور میں نقصانات کا فضائی جائزہ مکمل کرلیا، جڑی کس اور

چاتلاں کے علاقوں میں فضائی جائزہ لیا گیا۔دریں اثناء این ڈی ایم اے اور پی ڈی

ایم اے اور دیگر ریسکیواداروں نے اپنا کام شروع کردیا ہے اور نقصانات کے

حوالے سے معلومات اکٹھی کی جارہی ہیں۔چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹنٹ جنرل

محمد افضل کے مطابق زلزے کا مرکز جہلم اور میرپور کا علاقہ تھا، انہوں نے

بتایا کہ جن علاقوں میں زیادہ نقصان ہوا ہے وہ دور دراز کے علاقے نہیں وہاں

امدادی کارروائیاں شروع کر دی گئی ہیں۔وزیراطلاعات آزاد کشمیر مشتاق منہاس

کا کہنا ہے کہ زلزلے کے بعد آزاد کشمیر میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے اور

وزیراعظم آزاد کشمیر فاروق حید رنے اپنا دورہ ملتوی کردیا ہے اور وہ خود

امدادی کارروائیوں کی نگرانی کرتے رہے ۔دریں اثناء لاہور میں شدید ترین زلزلہ

کے جھٹکوں کے بعد فضائی آپریشن عارضی طور پر معطل کر دیا گیا ہے۔ادھر

این ڈی ایم اے کے مطابق آئندہ چوبیس گھنٹوں میں آفٹر شاکس آنے کاخدشہ ہے

جس کے باعث لوگوں کو محتاط رہنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔وزیراعلیٰ پنجاب

سردار عثمان بزدار کی ہدایت پر میر پور آزاد کشمیر کے زلزلہ متاثرین کی مدد

کیلئے ریسکیو ٹیمیں روانہ کر دی گئی ہیں۔ڈی جی ریسکیو پنجاب ڈاکٹر رضوان

نصیر کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر راولپنڈی، جہلم اور گجرات سے میرپور آزاد

کشمیر کیلئے ریسکیو ٹیمیں روانہ کی گئی ہیں۔ڈاکٹر رضوان نصیر نے کہا کہ

مشکل کی اس گھڑی میں ریسکیو پنجاب متاثرین کی ہر ممکن مدد کرے گا۔ پنجاب

بھر میں ریسکیو 1122 کی بیک اپ ٹیموں کو ہائی الرٹ کر دیا گیا ہے۔دوسری

طرف آزاد جموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے میرپور آزادکشمیر اور

ملحقہ علاقوں میں زلزلے سے ہونے والے جانی ومالی نقصان پر گہرے رنج و غم

کا اظہار کرتے ہوئے اس قدرتی آفت سے متاثر ہونے والے خاندانوں سے دلی

ہمدردی کا اظہار کیا ہے اور انہوں نے ضلع میر پور کی انتظامیہ اور ملحقہ

اضلاع کے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ متاثرین کی ریسکیو، ریلیف اور بحالی

میں مدد کریں۔ جبکہ وزیراعظم عمران خان نے پاکستان میں زلزلے سے ہونے

والے نقصانات اور انسانی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا

ہے۔وزیراعظم عمران خان کو نیویارک میں پاکستان میں زلزلے کی اطلاع دی گئی

اور اس سے ہونے والے نقصان سے آگاہ کیا گیا۔ انہوں نے حکام کو ہدایت جاری

کی ہے کہ فوری طور پر متاثرین کو ہر ممکن امداد فراہم کی جائے۔وزیراعظم نے

زلزلے سے انسانی جانوں کے ضیاع اور دیگر نقصانات پر افسوس اور گہرے دکھ

کا بھی اظہار کیا۔صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے بھی زلزے کی وجہ سے

ہونے والے جانی اور مالی نقصان پر گہرے دکھ اور غم کا اظہار کرتے ہوئے جاں

بحق ہونے والوں کے بلندی درجات کے لیے دعا کی ہے۔ صدر مملکت نے متاثرہ

خاندانوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے

دعا کی ہے۔چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے آزاد کشمیر کے وزیراعظم

راجہ فاروق حیدرخان کو ٹیلی فون کیا اور آزاد کشمیر کے مختلف علاقوں میں

زلزلے کے باعث ہونے والے نقصانات سے متعلق تبادلہ خیال کیا ۔ چیئرمین سینیٹ

نے وزیراعظم آزاد کشمیر کو ہر قسم کی معاونت فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی۔

چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ متعلقہ ادارے فوری طور پر متاثرہ افراد کو ہر قسم کی

امداد کی فراہمی کیلئے اقدامات کریں ۔ بلاول بھٹو زرداری اور میاں شہباز شریف

سمیت ملک کی دیگر سیاسی شخصیات نے زلزلے سے ہونے والے جانی اور مالی

نقصان پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔پی پی پی چیئرمین بلاول بھٹو

زرداری نے کہا کہ حکومت آزاد کشمیر، پنجاب اور خیبر پختونخوا سمیت تمام

زلزلہ متاثرہ علاقوں میں فوری طور ریسکیو آپریشن شروع کرے جبکہ این ڈی ایم

اے سمیت تمام متعلقہ ادارے موثر امدادی کارروائیوں کو یقینی بنائیں۔ انہوں نے

ہدایت جاری کی کہ پارٹی عہدیدار اور کارکن زلزلہ متاثرین کی ہر ممکن امداد

کریں اور امدادی سرگرمیوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔جمعیت علمائے اسلام

(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے زلزلے سے جاں بحق ہونیوالوں کے

لواحقین سے اظہار تعزیت اور زخمیوں کی صحت یابی کے لیے دعا کی۔ انہوں نے

کارکنان کو امدادی سرگرمیوں میں حصہ لینے کی ہدایت کی اور کہا کہ افواج

پاکستان کی طرف سے امدادی سرگرمیاں شروع کرنے کو سراہتے ہیں۔پاکستان

مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے بھی زلزلے سے

ہونے والے نقصانات پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت اور اس

کے ہنگامی ادارے لوگوں کی فوری امداد کے لیے اقدامات کو یقینی بنائیں۔ ریسکیو

اور ریلیف کی جامع حکمت عملی مرتب کی جائے۔ان کا کہنا تھا کہ آزاد کشمیر

سے آنے والی اطلاعات پر گہری تشویش ہے۔ ہماری قومی زندگی میں یہ ایک

مشکل مرحلہ ہے۔ آج پھر اسی ایثار، اخوت اور بھائی چارے کا مظاہرہ کرنا ہے

جس کا بے مثال مظاہرہ پوری قوم نے اس سے قبل کر چکی ہے۔

Leave a Reply