حکومت گیس نرخوں میں 235 فیصد تک اضافہ کیلئے تیار، پیپلز پارٹی کی مخالفت

Spread the love

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) حکومت نے عوام پر گیس بم گرانے کی تیاری کر لی، آ

ئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی(اوگرا) نے گیس کے نرخوں میں 235 فیصد تک

اضافے کی سفارش کر دی، گیس صارفین پر اضافی 175 ارب روپے کا بوجھ

پڑے گا،جبکہ پاکستا ن پیپلزنے گیس کی قیمتوں میں ممکنہ اضافے کو مسترد کر

دیا ۔تفصیلات کے مطابق اوگرا کی سفارش کے مطابق اگر قیمتوں میں اضافہ کیا

گیا تو گھریلو صارفین کیلئے ماہانہ 50 کیوبک میٹر استعمال پر 248، 100 کیوبک

میٹر تک استعمال پر 242 جبکہ 200 کیوبک میٹر تک گیس استعمال پر 289 رو

پے فی ایم ایم بی ٹی یو اضافہ ہوگا۔ ماہانہ 300 تا 400 کیوبک میٹر استعمال

کرنیوالے صارفین کو 326 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو اضافی دینا ہونگے۔ ماہانہ

400 کیوبک میٹر سے زائد گیس استعمال کرنیوالے امیر صارفین کیلئے 354

روپے فی ایم ایم بی ٹی یو کمی جبکہ خصوصی کمرشل صارفین کیلئے گیس 235

فیصد تک مہنگی ہونے سے ٹیرف میں 518 روپے تک فی ایم ایم بی ٹی یو اضافے

کی سفارش کی گئی ہے جس کے تحت انہیں 30 فیصد اضافے کیساتھ ٹیرف میں

303 روپے تک فی ایم ایم بی ٹی یو اضافی رقم دنیا ہو گی ۔ روٹی تنور کے

خصوصی کمرشل صار فین کیلئے 235 فیصد مہنگی جبکہ زیرو ریٹڈ صنعتی،

کیپٹو صارفین، سیمنٹ فیکٹریز، پاور اسٹیشنز، سی این جی سیکٹر، آئی پی پیز

کیلئے گیس نرخوں میں 30 فیصد اضافے کی تجویز دی گئی ہے، جس کے بعد سی

این جی اسٹیشنز کیلئے ٹیرف میں 303 روپے تک فی ایم ایم بی ٹی یو اضافہ ہو گا۔

سیمنٹ فیکٹریز کیلئے 301 روپے، پاور سٹیشنز کیلئے 194 روپے تک فی ایم ایم

بی ٹی یو بڑھ جائیگی۔کیپٹو پاور پلانٹس کیلئے 241 روپے، آئی پی پیز کیلئے 194

روپے تک فی ایم ایم بی ٹی یو اضافہ ہو جائیگا، گیس نرخ بڑھنے سے سوئی نادرن

گیس صارفین پر 100 ارب جبکہ سوئی سد ر ن گیس صارفین پر 75 ارب روپے

کا اضافی بوجھ پڑے گا۔دریں اثناء پیپلز پارٹی نے گیس کی قیمتوں میں اضافے کو

مسترد کر دیا۔ شیری رحمان نے کہا ہے تحریک انصاف اپنے اقداما ت سے احتجاج

کو ہوا دے رہی ہے، فیصلے سے عوام پر 175 ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے

گا۔پاکستان پیپلزپارٹی کی رہنما و سینیٹر کا اپنے بیان میں کہنا تھا اوگرا نے گیس

کی قیمتوں میں 45 فیصد اضافے کی سفارش کی ہے، مہنگائی کا رمضان پیکیج

دے کر کہتے ہیں گھبرانا نہیں ۔

Leave a Reply