sachi kahaniya jtnonline1

حوا کی معصوم بیٹیاں، بے غیرت شوہر، درندہ صفت باپ اور چچے

Spread the love

کراچی، لاہور (جے ٹی این آن لائن سچی کہانیاں) حوا کی معصوم بیٹیاں

شہر قائد کراچی اور زندہ دلوں کے شہر لاہور میں انتہائی شرمناک واقعات پیش

آئے ہیں جنہیں جان کر پیروں تلے سے زمین نکل جائے گی، جی چاہیے گا ان

واقعات میں ملوث کرداروں کو زندہ درگور کر دیا جائے، انسانیت کی کو شرما

دینے والے دونوں واقعات کی تفصیلات کچھ یوں ہے کہ شہر قائد میں ایک شخص

نے اپنے دوستوں کو گھر بُلایا اور اپنی بیوی سے انہیں ” محظوظ ” کرنے کا کہا،

لیکن جیسے ہی بیوی نے انکار کیا تو بے غیرت اور سفاک شخص نے اپنے

دوستوں کے ساتھ مل کر پہلے بیوی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا اور بعد میں

قتل کر کے لاش کوڑے دان میں پھینک دی۔ جبکہ لاہور میں بدبخت باپ نے

سفاکیت اور درندگی کی انتہا کر دی۔ لاہور کے علاقہ شاہدرہ میں سرفراز الیاس

نامی شخص اپنی 6 سالہ معصوم سوتیلی بیٹی کو درندگی کا نشانہ بنانے سمیت

اپنے دوستوں کو بھی اس قبیح فعل میں شامل کرتا رہا،

=-،-= سچی کہانیوں کے عنوان کے تحت مزید (=-= سٹوریز =-=)

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقہ قائد آباد میں ایک شخص نے اپنے دو

دوستوں کے ہمراہ بیوی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا جس کے بعد چاقو کے

متعدد وار کیے پھر تیزاب بھی پھینکا، زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے 25 سالہ

لڑکی ابدی نیند جا سوئی۔ پولیس نے لاش کوڑے دان سے برآمد کی جس کے بعد

خاتون کے شوہر قلب عباس جو کہ شیر پاؤ کالونی کا رہائشی ہے، کو دو دوستوں

بختیار اور عبد الصمد کے ہمراہ قتل کے الزام میں گرفتار کر لیا۔ قائد آباد پولیس

اسٹیشن کے تفتیشی افسر ذاکر اللہ کے مطابق مقتولہ کا شوہر قلب عباس اُسے جنسی

تشدد کا نشانہ بناتا تھا اور جسم فروشی پر مجبور بھی کرتا تھا۔ قلب عباس نے

پولیس کو دئے اعترافی بیان میں کہا کہ مقتولہ کو سب سے پہلے ایک ٹیکسی

ڈرائیور امیر نے اغواء کیا اور اپنے گھر لے گیا۔ جس کے بعد امیر کی اہلیہ نے

اسے میری والدہ فاطمہ کو بیس ہزار روپے میں فروخت کر دیا۔

=-،-= ضرور پڑھیں، میاں بیوی خوش مگر دونوں کے سسرالی طلاق پر بضد

پولیس کے مطابق قلب عباس مقتولہ کو تشدد کا نشانہ بنانے کے ساتھ ساتھ ناجائز

رشتہ رکھنے اپنے دوستوں کی ناجائز خواہشات کو پورا کرنے پر مجبور کرتا تھا

جس کے پیش نظر قلب عباس کی والدہ نے مقتولہ سے اسکی شادی کروا دی۔ قلب

عباس کی سابقہ بیوی صغریٰ نے بھی اس سے انہی وجوہات کی بنا پر علیحدگی

اختیار کی تھی۔ تفتیشی افسر نے بتایا کہ 23 اور 24 جون کی درمیانی رات کو قلب

عباس اپنے دو دوستوں بختیار اور عبد الصمد کے ہمراہ آیا، تینوں نشے میں دھت

تھے، عباس نے مقتولہ کو دوستوں کو ” محظوظ ” کرنے اور ناجائز کام پر مجبور

کیا جس پر اُس نے انکار دیا۔ بیوی کے انکار پر طیش میں آ کر قلب عباس نے

پہلے اُس کے ہاتھ پاؤں باندھے، اجتماعی زیادتی کی اور تشدد کا نشانہ بنانے کے

بعد تیزاب پھینک کر قتل کیا اور لاش کو ویران جگہ پر پھینک کر فرار ہو گئے۔

=–= خواتین سے متعلق مزید خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

لاہور کے علاقہ شاہدرہ میں سرفراز الیاس نامی شخص اپنی 6 سالہ سوتیلی بیٹی کو

درندگی کا نشانہ بناتا رہتا تھا جبکہ اپنے دوستوں کو بھی اس قبیح فعل میں شامل

کرتا تھا۔ بچی کی والدہ کرن نے ایک دن اپنے خاوند سرفراز الیاس کو یہ گھناؤنا

فعل کرتے ہوئے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا جس پر کرن سرفراز سے لڑ کر میکے آ

گئی۔ ملزم سرفراز الیاس نے رنگے ہاتھوں پکڑے جانے پر اپنے ساتھیوں عتیق

اور ساجد کے ہمراہ اپنے سسرال دھاوا بول دیا اور اپنی بیوی کرن کو شدید تشدد کا

نشانہ بنایا جبکہ اسے فائرنگ کر کے شدید زخمی کر دیا اور دوستوں کے ہمراہ

موقع سے فرار ہو گیا۔ پولیس نے تینوں ملزمان کو گرفتار کر لیا۔

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

یاد رہے ملک بھر میں کم سن بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے واقعات میں

ہوشربا اضافہ ہوتا جا رہا ہے ۔ 50 فیصد سے زائد کیسز میں اس گھناؤنے فعل میں

رشتہ دار ہی ملوث نکلے تاہم اب بچیاں باپ اور بھائیوں کے ساتھ بھی محفوظ نہیں

رہیں۔ کچھ روز قبل سندھ کے علاقہ ہالا پرانا گاؤں کی کمسن بچی ثنا ملک ظالم

وحشی درندے باپ اور چچاﺅں کے ہاتھوں زیادتی کا شکار ہوئی تھی۔ ملزمان نے

پولیس کے سامنے اپنے گھناؤنے جرم کا اعتراف بھی کر لیا تھا۔ ہالا پرانا گاؤں

میں بس بخت باپ نے کم سن بچی ثناء ملک کو زیادتی کا نشانہ بنایا جس کے

میڈیکل نمونے لے کر حیدرآباد لیباریٹری بھیج دیئے گئے، کم سن بچی ثناء کے

ماموں غلام رسول کی مدعیت میں باپ اور چچاؤں کیخلاف پرانا ہالا تھانہ میں

مقدمہ درج کیا گیا جس پر ہالہ پولیس نے ملزمان غلام قادر اور بھائیوں رشید ملک

اور بہادر ملک کو گرفتار کر لیا۔

حوا کی معصوم بیٹیاں ، حوا کی معصوم بیٹیاں ، حوا کی معصوم بیٹیاں ، حوا کی معصوم بیٹیاں ، حوا کی معصوم بیٹیاں ،حوا کی معصوم بیٹیاں

Leave a Reply