حسن نواز کے دفتر پر کوئی حملہ نہیں ہوا، ویڈیو بھی مشکوک، سکارٹ لینڈ یارڈ

حسن نواز کے دفتر پر کوئی حملہ نہیں ہوا، ویڈیو بھی مشکوک، سکارٹ لینڈ یارڈ

Spread the love

لندن (جے ٹی این آن لائن انٹرنیشنل نیوز) حسن نواز دفتر حملہ

برطانیہ کی پولیس سکاٹ لینڈ یارڈ نے قائد مسلم لیگ (ن) میاں نواز شریف کے

صاحبزادے حسن نواز کے لندن میں دفتر میں نامعلوم افراد کے مبینہ حملے کو

جھوٹ قرار دیدیا- سکاٹ لینڈ یارڈ پولیس نے دفتر پر حملے کی تردید کرتے ہوئے

ابتدائی رپورٹ بھی جاری کردی۔

=-= ایسی ہی مزید معلومات پر مبنی خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

لندن پولیس کے مطابق مذکورہ واقعہ جمعرات کو پیش آیا جبکہ (ن) لیگ نے

گزشتہ روز جمعہ کو اس کی اطلاع دی۔ لندن پولیس نے کہا حسن نواز کے دفتر

آنیوالے چاروں افراد غیر مسلح تھے، جائے وقوعہ پر حملہ ہوا اور نہ ہی کوئی

تشدد کا واقعہ پیش آیا۔ واقعے کی چوبیس گھنٹے بعد ویڈیوز سامنے لانے سے

سوال اٹھ گئے ہیں کہ کیا آیا ویڈیو ایڈیٹ کر کے میڈیا کو جاری کی گئی کیونکہ

ویڈیوز میں لیگی رہنما مبینہ حملہ آوروں کو اطمینان سے جانے کا مشورہ دے

رہے ہیں۔ ویڈیوز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مبینہ حملہ آوروں کے ہاتھوں میں کسی

قسم کے اسلحہ کی بجائے کاغذات تھے۔ مبینہ حملہ آور بھی جلدی میں نہیں تھے،

گفتگو کر کے اپنی گاڑی میں واپس چلے گئے جبکہ لیگی رہنماؤں نے مقامی

پولیس کو بھی خصوصی طور پر دیے گئے ہنگامی نمبر پر بروقت کال کر کے

واقعے کی اطلاع نہیں دی تھی۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

خیال رہے گذشتہ روز بتایا گیا کہ قائد مسلم لیگ (ن) اورسابق وزیراعظم نواز

شریف کے صاحبزادے حسن نواز کے لندن دفتر میں نامعلوم افراد نے داخل ہونے

کی کوشش کی، اس موقع پر اسحاق ڈار اور عابد شیر علی بھی دفتر میں موجود

تھے، حسن نواز کے دفتر آنے والے افراد نے نوازشریف گارڈز کیساتھ بحث و

تکرار بھی کی۔ نوازشریف کے گارڈز نے پولیس بلائی تو چاروں افراد وہاں سے

چلے گئے۔ ن لیگی رہنماؤں عابد شیر علی، راشد نصراللہ اور ناصر بٹ نے اپنے

تاثرات کا اظہار کیا کہ انہوں نے ان افراد کیساتھ کافی بحث بھی کی۔ وہاں موجود

مسلم لیگ ن کے رہنماؤں نے کہا کہ نواز شریف کی موجودگی میں ان غنڈہ افراد

نے دفتر کے اندر گھسنے اور حملہ کرنے کی کوشش کی۔

حسن نواز دفتر حملہ

Leave a Reply