Millions of Muslims are Performing Hajj at Bait Ullah Macca

حج، بیت اللہ میں اللھم لبیک کی صدائیں، وقوف عرفہ کی ادائیگی

Spread the love

مکہ مکرمہ (جے ٹی این آن لائن خصوصی رپورٹ) حج

سعودی عرب میں فریضہ حج کی ادائیگی کیلئے دنیا بھر سے آئے 20 لاکھ سے

زائد عازمین مکہ مکرمہ سے 8 ذوالحج کو منیٰ اور آج 9 ذوالحج کی صبح کو

میدان عرفات کی طرف روانہ ہو کر وہاں جمع ہیں جہاں وہ حج کا رکن اعظم

وقوف عرفہ ادا کررہے ہیں، قبل ازیں بعد نماز فجر غلاف کعبہ تبدیل کیا گیا،اس

موقع پر روح پرور نظارے دیکھنے کو ملے بیت اللہ میں اللھم لبیک کی صدائیں

گونج رہی ہیں۔ ہر سال وقوف عرفہ کے دن پرانا غلاف اتار کر خانہ کعبہ پر نیا

غلاف چڑھایا جاتا ہے۔ رواں برس سعودی عرب کی تاریخ میں پہلی بار فرزندان

اسلام مسلسل تین روز تک 3 خطبے سنیں گے۔ ان میں پہلا خطبہ جمعہ کا سنا گیا،

پڑھیں: پاکستان کے عازمین حج کیلئے سال 2019 کی پالیسی

دوسرا آج ہفتے کو حج کا خطبہ سنیں گے اور تیسرا خطبہ کل بروز اتوار کو نماز

عید الاضحٰی کا سنا جائیگا۔ وقوف عرفہ کے دوران مسجد نمرہ میں خطبہ حج دیا

جائے ہوگا جس کے بعد نماز ظہر اور عصر ایک ساتھ ادا کی جائے گی۔ بعدازاں

عازمین حج غروب آفتاب کیساتھ ہی مزدلفہ روانہ ہوں گے جہاں وہ نمازِ مغرب اور

عشاء ایک ساتھ ادا کریں گے، عازمین رات بھر کھلے آسمان تلے قیام کریں گے

اور رمی کیلئے کنکریاں چنیں گے۔ کل بروز اتوار دس ذی الحج کو طلوع آفتاب

کے بعد حجاج کرام مزدلفہ سے رمی کیلئے جمرات جائیں گے پھر قربانی کے بعد

سر منڈوا کر احرام کھول دیں گے اور طواف زیارت کریں گے۔

حجاج کیلئے جدید مفت طبی سہولیات کا انتظام، روبو ٹ ڈاکٹرز کی خدمات میسر

Robot Doctors Preforming their Duty at Mecca Mukarma

دنیا بھر سے 20 لاکھ عازمین جہاں فریضہ حج ادا کررہے ہیں وہیں اس موقع پر

سعودی عرب کی حکومت نے عازمین حج کیلئے پہلی بار جدید ترین فور جی

ٹیکنالوجی کی مفت طبی سہولیات متعارف کرائی ہیں، منیٰ کے 16 مختلف ہسپتالوں

میں ایسے جدید روبوٹ رکھے ہیں جو کسی بھی ایمرجنسی کے وقت میں مریضوں

کا بر وقت علاج کرنے رہے ہیں، یہ روبوٹس ڈاکٹر دارالحکومت ریاض اور جدہ

کے ماہرین ڈاکٹرز سے انٹرنیٹ ٹیکنالوجی کے ذریعے منسلک ہیں اور ان کی

ہدایات و اشاروں کے مطابق ہی مریضوں کا علاج کررہے ہیں، یہ روبوٹ دل کے

امراض سمیت کینسر جیسے امراض کے مریضوں کا بر وقت علاج کرنے سمیت

ہر طرح کے مریضوں کو بر وقت طبی امداد دینے کے اہل ہیں،علاوہ ازیں سعودی

وزارت صحت نے پہلی بار عازمین حج کا علاج کرنیوالے تمام ڈاکٹرز کو ایک

ایسا آلہ بھی دیا ہے جو گوگل ٹرانسلیٹ کی طرح دوسری زبانوں کو ترجمہ کرنے

کی صلاحیت رکھتا ہے جو ڈا کٹرز اور مریضوں کے درمیان رابطے کا کردار ادا

کرتا ہے اور اس آلے کی مدد سے ڈاکٹرز مختلف زبانیں بولنے والے عازمین سے

آسانی سے رابطہ کر سکتے ہیں-

Leave a Reply