250

جھوٹے گواہوں کے خلاف کاروائی کا آغاز

Spread the love

سپریم کورٹ نے جھوٹے گواہوں کے خلاف کارزوائی کا آغاز کر تے ہوئے فیصل آباد کے ایک گائوں میں اے ایس آئی مظہر حسین کے قتل کیس میں جھوٹی گواہی دینے والے ساہیوال کے رہائشی محمد ارشد کو بائیس فروری کو طلب کر لیا جبکہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ریمارکس دیے ہیں کہ جس طرح وہ رضاکارانہ طور پر گواہ بنا اور جھوٹی گواہی دی اسی طرح رضاکارانہ طور پر اسے جیل بھی جانا چاہیے،

عدالت نے سی پی او فیصل آباد کو محمد ارشد کی سپریم کورٹ حاضری یقینی بنانے کا حکم دیدیا ۔ بدھ کو چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے یہ احکامات اپنی سربراہی میں تین رکنی بنچ کی فیصل آباد کے ایک گاوں میں اے ایس آئی مظہر حسین کے قتل سے متعلق کیس میں عمر قید کے ملزم زورآور کی ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل کی سماعت کے موقع پر دیئے .جیف جسٹس نے کہا اسی گواہ کی کونی پر خراش آئی اور اسی زخم کو فائیر آرم انجری کہ دیا گیا۔عدالت کی جانب سے کہا گیا کہ گواہ محمد ارشد نے ٹرائل کے سامنے جھوٹا بیان دیا،اس کے خلاف جھوٹی گواہی پر کیوں نہ کارروائی کی جائے، اسی کیس سے جھوٹے گواہوں کے خلاف کاروائی کا آغاز کر رہے ہیں .

Leave a Reply