طالبان کے ناقابل قبول تشدد کا ذمہ دار جو بائیڈن ہے، ڈونلڈ ٹرمپ

طالبان کے ناقابل قبول تشدد کا ذمہ دار جو بائیڈن ہے، ڈونلڈ ٹرمپ

Spread the love

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن انٹرنیشنل نیوز) جو بائیڈن ڈونلڈ ٹرمپ

امریکہ کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے جانشین صدر جوبائیڈن پرافغانستان

میں طالبان کی تشدد آمیز کارروائیوں میں اضافے کا الزام عائد کیا اور کہا ہے کہ

انھوں نے جنگ زدہ ملک سے فوج کے انخلاء کی کوئی شرط نہیں رکھی تھی۔

=-= دنیا بھر سے مزید تازہ ترین خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے دعویٰ کیا کہ وہ اگر اب بھی امریکہ کے

صدر ہوتے تو افغانستان سے فوج کا انخلا بالکل مختلف انداز میں اور زیادہ کامیاب

ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ اگر اس وقت میں صدر ہوتا تو دنیا دیکھتی کہ افغانستان سے

ہمارا انخلا شرائط پر مبنی ہوتا اور طالبان اس بات کو کسی دوسرے سے زیادہ بہتر

سمجھتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ میں نے طالبان کے سرکردہ لیڈروں سے بات چیت

کی تھی اور اس میں انھوں نے یہ تاثردیا تھا کہ اگر وہ ایسا کریں گے جو کچھ وہ

اس وقت ملک میں کررہے ہیں تو اس کو قبول نہیں کیا جائے گا۔

=-،-= افغانستان پر بزور طاقت قبضہ کرنیوالے تسلیم نہیں، نیڈ پرائس

امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کہا ہے کہ طالبان کو امریکہ کا

پیغام وہی ہے جو قطر مذاکرات میں شریک تمام ملکوں کا پیغام ہے کہ ہم کسی

ایسی قوت کو تسلیم نہیں کریں گے جو افغانستان پر طاقت کے زور سے قبضہ کرنا

چاہتی ہو۔ ترجمان نیڈ پرائس نے میڈیا بریفنگ میں کہا کہ امریکی شہری واپس

بلانے کا مطلب یہ نہیں کہ ہم افغان عوام کو تنہا چھوڑ دیں گے، امریکہ نے

افغانستان میں ہر شعبے میں سرمایہ کاری کی ہے۔ نیڈ پرائس کا کہنا تھا کہ صدر

بائیڈن نے افغان فوج کے لیے 3 ارب 30 کروڑ ڈالر کی رقم رکھی ہے، افغانستان

میں امریکی سفارتخانہ کام کرتا رہے گا۔

جو بائیڈن ڈونلڈ ٹرمپ ، جو بائیڈن ڈونلڈ ٹرمپ ، جو بائیڈن ڈونلڈ ٹرمپ

=-= قارئین= کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

Leave a Reply