جوہری معاہدہ، امریکہ ایران مذاکرات کا چھٹا دور مکمل، اختلافات برقرار

جوہری معاہدہ، امریکہ ایران مذاکرات کا چھٹا دور مکمل، اختلافات برقرار

Spread the love

واشنگٹن (جے ٹی این آن لائن انٹرنیشنل نیوز) جوہری معاہدہ امریکہ ایران

ایران کے ساتھ جوہری معاہدے میں واپسی کے لئے امریکہ کے مذاکرات کا چھٹا

دور مکمل ہو گیا، تاہم ابھی تک متعدد سنجیدہ اختلافات دور نہیں ہو سکے۔ امریکی

وزارت خارجہ کے سینئر حکام نے میڈیا کو ٹیلی فونک کانفرنس کے ذریعے اس

پر بیک گراﺅنڈ بریفنگ فراہم کی۔ انہوں نے اس تاثر کی تردید کی کہ معاہدہ پہلے

ہی طے پا چکا ہے، اب صرف اس کا اعلان کرنا باقی ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ

اگر معاہدہ طے پا چکا ہے تو پھر مذاکرات کے یہ دور کرنے کی کیا ضرورت ہے۔

=-= دنیا بھر سے مزید اہم خبریں ( =–= پڑھیں =–= )

امریکی حکام نے بتایا جلد ہی مذاکرات کا ساتواں دور ہو سکتا ہے۔ پہلے کی طرح

امریکہ کے اس چھٹے دور میں بھی جو 12 جون کو شروع ہوا، ویانا میں ایران

کے ساتھ بالواسطہ مذاکرات ہوئے۔ جوہری معاہدے کے دیگر شرکاء ایران، روس،

چین، فرانس، برطانیہ، جرمنی اور یورپی یونین جس ہوٹل میں بات چیت کر رہے

ہیں اس کے بلمقابل ایک اور عمارت میں امریکی وفد موجود ہے کیونکہ ایران نے

امریکہ کے ساتھ براہ راست بات چیت سے انکار کر رکھا ہے۔ یورپی یونین کے

فارن پالیسی حکام انرک مورا ان مذاکرات کے چیف کوآرڈی نیٹر کے ذریعے شٹل

ڈپلو میسی جاری ہے۔ امریکی حکام نے بتایا ایران میں ہوئے نئے صدارتی الیکشن

کے بارے میں ہماری رائے یہ ہے کہ یہ عوام کے صحیح جذبا ت کی ترجمانی

نہیں کرتے۔

=-= قارئین کاوش پسند آئے تو اپ ڈیٹ رہنے کیلئے فالو کریں

امریکی حکام کے مطابق منتخب صدر کے پس منظر سے بھی ہم آگاہ ہیں جن کا

امریکی مخالف موقف بہت شدید ہے۔ اس کے باو جو د ہم ڈپلومیسی کا راستہ ہی

اختیار کرینگے اور مذاکرات کے ذریعے معاہدے میں شرکت کیلئے تیار ہیں۔ انہوں

نے واضح کیا ہمارے لئے یہ معاہدہ اس لئے بھی اہم ہے کہ اس ڈپلومیسی کے

ذریعے سے ہم ایران کو جوہری طاقت بننے سے روک سکتے ہیں۔

جوہری معاہدہ امریکہ ایران

Leave a Reply